47

کورونا وائرس ائیرلائن صنعت کی بقاء کیلئے خطرہ بن گئی

Spread the love

پیرس(صرف اردو آن لائن نیوز) ائیرلائن صنعت خطرہ

انٹرنیشنل ایئر ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن (آئی اے ٹی اے) کا کہنا ہے کہ کورونا

وائرس کی عالمی وبا کے باعث رواں سال ایئرلائن آمدنی میں 60 فیصد تک کمی

ہوگی جو صنعت کی بقا کے لیے خطرہ ہے۔رپورٹ کے مطابق آئی اے ٹی اے کا

کہنا تھا کہ کووڈـ19 کا بحران ایئر ٹرانسپورٹ کی صنعت کی بقا کے لیے خطرہ

ہے جبکہ ممکن ہے کہ سال 2020 تاریخ کا بدترین سال ہو۔ایسوسی ایشن کا کہنا

تھا کہ اگرچہ ایئر لائنز ایک دن کی لاگت میں ایک ارب ڈالر تک کمی کر رہی ہیں،

بیڑوں کو گراؤنڈ کر رہی ہیں اور ملازمتوں میں کمی کررہی ہیں تاہم انہیں اب بھی

غیر معمولی اور بھاری نقصانات کا سامنا ہے۔پیرس میں ہونے والی اپنے سالانہ

کانگریس میں 290 ایئرلائنز کو گروپس کرنے والی ایسوسی ایشن کا کہنا تھا کہ

2019 کے مقابلے میں رواں سال تقریباً 328 ارب ڈالر کا ریونیو متوقع ہے۔آئی

اے ٹی اے نے مزید کہا کہ صنعت کو 118 ارب 50 کروڑ ڈالر کے خالص

نقصانات پہنچنے کا امکان ہوگا جو جون میں کی گئی 84 ارب 30 کروڑ ڈالر کی

پیش گوئی سے بھی زیادہ بدتر ہے۔مزید یہ کہ آئندہ سال صورتحال بہتر ہوگی لیکن

ہم ایئرلائنز کو مشترکہ طور پر 38 ارب 70 کروڑ ڈالر کے نقصان کا سامنا ہوتا

دیکھ رہے ہیں جو اس کے گزشتہ تخمینے 15 ارب 80 کروڑ ڈالر سے بدتر ہے۔

ادھر آئی اے ٹی اے کے ڈائریکٹر جنرل الیکسزینڈر دی جونیک کا ایک بیان میں

کہنا تھا کہ یہ بحران تباہ کن اور ناقابل تسخیر ہے۔ان کا کہنا تھا کہ سرحدوں کو

قرنطینہ کے اقدامات کے بغیر دوبارہ کھولنا چاہیے تاکہ مسافر طیارے سے دوبارہ

جاسکیں۔انہوں نے کہا کہ کمپنیوں کو کم از کم 2021 کی چوتھی سہ ماہی تک

اپنے ذخائر پر انحصار کرنا ہوگا۔واضح رہے کہ آئی اے ٹی اے کئی ماہ حکومتوں

پر روانگی سے قبل وائرس کی ٹیسٹنگ کو متعارف کرانے کے لیے دباؤ ڈال رہی

ہے تاکہ آمد پر 14 دن کے قرنطینہ کے عمل سے دور رہا جائے، ان کا کہنا تھا کہ

یہ تبدیلیایئرلائنز کو حفاظت پر سمجھوتہ کیے بغیر اپنا کاروبار دوبارہ شروع کرنے

کی اجازت دے گی۔

ائیرلائن صنعت خطرہ

صدارتی امیدوار جو بائیڈن نے ٹی وی مباحثے میں ٹرمپ کو ’مسخرہ‘ کہہ دیا

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں