58

کورونا وائرس مزید 48 زندگیاں نگل گیا

Spread the love

لاہور اسلام آباد ، کراچی (صرف اردو آن لائن نیوز) کورونا زندگیاں نگل گیا

کورونا وائرس سے 48 افراد جاں بحق ہو نے کے بعد اموات کی تعداد 7 ہزار

744 ہوگئی۔ پاکستان میں کورونا کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 3 لاکھ 79 ہزار

883 ہوگئی۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے تازہ ترین اعدادوشمار کے مطابق

گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 2 ہزار 954 نئے کیسز رپورٹ ہوئے، پنجاب میں

ایک لاکھ 15 ہزار 138، سندھ میں ایک لاکھ 64 ہزار 651، خیبر پختونخوا میں

44 ہزار 932، بلوچستان میں 16 ہزار 846، گلگت بلتستان میں 4 ہزار 558،

اسلام آباد میں 27 ہزار 555 جبکہ آزاد کشمیر میں 6 ہزار 203 کیسز رپورٹ

ہوئے۔ ملک بھر میں اب تک 52 لاکھ 56 ہزار 120 افراد کے ٹیسٹ کئے گئے،

گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 39 ہزار 165 نئے ٹیسٹ کئے گئے، اب تک 3 لاکھ

31 ہزار 760 مریض صحتیاب ہوچکے ہیں جبکہ ایک ہزار 751 مریضوں کی

حالت تشویشناک ہے۔ پاکستان میں کورونا سے ایک دن میں 48 افراد جاں بحق

ہوئے جس کے بعد وائرس سے مرنے والوں کی تعداد 7 ہزار 744 ہوگئی۔ پنجاب

میں 2 ہزار 879، سندھ میں 2 ہزار 845، خیبر پختونخوا میں ایک ہزار 330،

اسلام آباد میں 285، بلوچستان میں 163، گلگت بلتستان میں 95 اور آزاد کشمیر

میں 147 مریض جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔کرونا کیسز میں اضافے کے پیش نظر

سندھ حکومت نے صوبے کی تمام سبزی منڈیوں میں ماسک لازمی قرار دے دیا۔

حکومت سندھ نے عمر رسیدہ شہریوں کی سبزی منڈی میں داخلے پر پابندی لاگو

کر دی ہے۔ عمر رسیدہ شہریوں پر سبزی منڈیوں میں داخلے پر پابندی کا مقصد

انھیں کرونا وائرس سے محفوظ رکھنا ہے، کیوں کہ منڈیوں میں شہر بھر سے لوگ

آتے ہیں اور بیرون شہر سے یہاں بھی ترسیل ہوتی ہے۔ وزیر زراعت سندھ

اسماعیل راہو نے بیان جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ تمام سبزی منڈیوں میں بغیر

ماسک کے آمد پر پابندی ہوگی، اس سلسلے میں ڈائریکٹر مارکیٹ کمیٹی،

ایڈمنسٹریٹرز اور چیئرمینز کو ہدایات جاری کر دی گئی ہیں۔ انھوں نے ہدایت کی

کہ نیلام اور خرید و فروخت کے تمام مراحل میں ایس او پیز پر مکمل عمل کیا

جائے، عمر رسیدہ شہریوں کی سبزی منڈی میں داخلے پر پابندی ہوگی, سبزی

منڈی میں رش کم کرنے اور سماجی فاصلہ برقرار رکھنے کے لیے صرف ایک شخص کو داخلے کی اجازت ہوگیسندھ میں بزنس سینٹرز اور مارکیٹیں صبح

6 بجے سے شام 6 بجے تک کھلی رہیں گی جب کہ ہفتہ اور اتوار کو صرف

ضروری کاروبار کی اجازت ہوگی۔محکمہ داخلہ سندھ نے نیشنل کمانڈ آپریشن

سینٹر (این سی او سی)کی ہدایت پر کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز کے تناظر میں

ایس او پیز کے حوالے سے حکم نامہ جاری کیا ہے جس کے مطابق تمام اندرون

خانہ اجتماع، بزنس سینٹرز، سنیما، جیمخانہ اور کھیلوں کی سرگرمیاں بند کرنے کی ہدایت جاری کی ہے، بزنس سینٹرز اور مارکیٹیں صبح 6 بجے سے شام

6 بجے تک کھلی رہیں گی، ہفتہ اور اتوار کو صرف ضروری کاروبار کی اجازت ہوگی، ریسٹورنٹس میں کھلی جگہ پر کھانا کھانے کی اجازت ہوگی جبکہ رات

10 بجے تک کھانا گھر لیجانے اور ہوم ڈلیوری کی اجازت ہوگی۔محکمہ داخلہ

سندھ نے ہدایت جاری کی ہے کہ تمام سرکاری ، نجی دفاتر اور عوامی مقامات پر

فیس ماسک پہنے پر سختی سے عمل درآمد کرایا جائے ، بصورت دیگر جرمانہ

عائد کیا جائے ، وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی کورونا کی شدت کا احساس

دلانے کی کوشش کرتے ہوئے کہا ہے کہ عوام کے رویے سے نہیں لگ رہا کہ

انھیں کسی بات کی فکر ہے، کورونا کی دوسری لہر انتہائی خطرناک ثابت ہو

سکتی ہے۔اسلام ا?باد میں معاون خصوصی ڈاکٹر فیصل سلطان کے ہمراہ پریس

کانفرنس میں انہوں نے پاکستان میں وبائی مرض کورونا وائرس کی موجودہ

صورتحال اور مستقبل میں درپیش خطرے پر تفصیلی بات کی۔اسد عمر کا کہنا تھا

کہ حکومت کیلئے سکولز بند کرنے کا فیصلہ ا?سان نہیں تھا۔ 11 جنوری 2021ء

سے حالات دیکھ کر سکولز کھلنے کا امکان ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ریسٹورنٹس کو

بھی بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ دیگر ممالک میں بھی کورونا

کی دوسری لہر کی شدت زیادہ ہے تاہم لوگوں کے رویوں سے لگ رہا کہ انہیں

کورونا کی شدت کا احساس ہے۔ بدقسمتی سے ملک میں بڑے بڑے اجتماعات ہو

رہے ہیں۔اسد عمر کا کہنا تھا کہ ہم نے شروع میں لاک ڈاؤن کیا تو غریب لوگ

متاثر ہوئے تھے۔ ایسے حالات نہیں چاہتے جس سے روزگار اور زندگیوں کو

خطرہ ہو۔ حکومت نے احساس پروگرام کا دوسرا مرحلہ شروع کرنے کا فیصلہ کیا

ہے۔وفاقی وزیر نے بتایا کہ کورونا سے متعلق پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس کل بلایا

ہے۔ اجلاس میں سیاسی قائدین کو مدعو کیا گیا ہے۔ سیاستدانوں کو موجودہ

صورتحال میں سنجیدگی کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔کرونا وائرس کے بڑھتے خدشات

کے پیش نظر سرکاری محکموں میں 50 فیصد حاضری پر عملدرآمد شروع کر دیا

گیا صرف اہم محکموں کے سیکرٹریز کو دفتر آنے کی ہدایت کی گئی ہے عام

شہریوں سے ملاقات پر پابندی ہوگی۔ چیف سیکرٹری سمیت 6 افسران کیمپ آفس

میں بیٹھ کر کام کریں گے۔دوسری جانب ایل ڈی اے نے 50 فیصد سٹاف کو تین،

تین روز دفاتر بلانے کا فیصلہ کر لیا، اسی تناظر میں دفاتر کو 50 فیصد ملازمین

سے چلانے کی منصوبہ بندی کی گئی ہے۔کورونا کی دوسری لہر بے قابو ہو گئی،

لاہور میں 24 گھنٹوں کے دوران موذی وائرس سے مزید 8 افراد جاں بحق ہو

گئے۔تفصیلات کے مطابق چوبیس گھنٹوں میں 241 نئے مریض بھی سامنے آئے

ہیں، مزید برآں پنجاب میں 630 نئے کورونا کیسز رپورٹ ہوئے جس کے تعداد

ایک لاکھ 15 ہزار 138 تک پہنچ گئی۔ترجمان محکمہ صحت کے مطابق راولپنڈی

100 ،منڈی بہاؤا لدین 2 جہلم 4، ملتان 42 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔

کورونا زندگیاں نگل گیا,کورونا زندگیاں نگل گیا

صدارتی امیدوار جو بائیڈن نے ٹی وی مباحثے میں ٹرمپ کو ’مسخرہ‘ کہہ دیا

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں