36

ملک کی تباہی کے ذمہ دار عمران خان کو لانے والے ہیں، مریم نواز

Spread the love

مانسہرہ (صرف اردو آن لائن نیوز) ملک تباہی عمران خان

پاکستان مسلم لیگ (ن)کی نائب صدر مریم نوازشریف نے ایک بار پھر عمران خان

پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک کی تباہی کی ذمہ دار عمران خان کو لانے

والے ہیں ، جو انسان ایک یونین کونسل بھی چلانے کے قابل نہیں تھا اسے بائیس

کروڑ عوام کے ملک کی ذمہ دار دے دی گئی،جب تک جعلی حکومت ہے ملک

نہیں چل سکتا اور ووٹ کی چوری ہوتی رہے گی ،گلگت بلتستان میں جوڑتوڑ اور

تمام تر دھاندلی کے باوجود تم آٹھ سیٹیں جیت سکے ، کوئی تھوڑی سے شرم والا

ہوتا توتین دن گھر سے باہر ہی نہ نکلتا ، آٹھ سیٹوں کی مبارکباد بھی ہم عمران

کونہیں سلیکٹرز کو دیتے ہیں ،وہ وقت دور نہیں جب نوازشریف وطن واپس آئے

گااور چوتھی بار وزیر اعظم بنے گا ۔ بدھ کو یہاں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے

انہوںنے کہاکہ ہزارہ نوازشریف کا تھا نوازشریف کا ہے اور انشاء اللہ نوازشریف کا

ہی رہے گا ۔انہوںنے نوجوانوں کو خصوصی طورپر شاباش دیتے ہوئے کہاکہ میں

پاکستان میں جس جگہ بھی جاتی ہوں سب سے زیادہ تعداد نوجوانوں کی ہوتی ہے ،

بزرگوں کا جذبہ بھی دیکھنے کے قابل ہے ۔ انہوںنے کہاکہ مریم نوازشریف اور

نوازشریف کا ہزارہ کے ساتھ بہت پرانا رشتہ ہے ، ہزارہ نے بھی اس رشتہ کو

نبھایا اور نوازشریف نے بھی اس رشتہ کو نبھایا ہے ۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان کے

عوام سے نوازشریف نے جو وعدے اور رشتہ نبھائے آج وہ اسی کی سزا بھگت

رہے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ سزا نہ صرف پاکستان بھگت رہا ہے بلکہ نوازشریف اور

مسلم لیگ (ن)بھی بھگت رہی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ نوازشریف نے ہزارہ موٹر وے

کا وعدہ کیا تھا کیا اسے پورا کیا گیا؟ ۔ اس موقع پر انہوںنے کہاکہ کیپٹن صفدر کو

بھی کرونا ہوا ہے وہ صحت مند رہے ہیں دعا کریں اللہ تعالیٰ جلد صحت یابی عطا

فرمائے انہوںنے علاقے میں گیس اور بجلی پہنچائی ۔ انہوںنے کہاکہ بجلی اور گیس

پہنچی ہے کیا نوازشریف نے یہ وعدے نہیں نبھائے ۔ انہوں نے کہاکہ جس نے

پورے پاکستان میں اینٹ نہیں لگائی ، جو آپ کے ووٹ چوری کر کے لے گا وہ آج

نوازشریف کی ہزارہ موٹر وے پر بڑی چالاکی سے اپنی تختی لگا کر چلا گیا ۔

انہوںنے کہاکہ تختی لگانے والا سمجھتا ہے کہ عوام نہیں جانتے کہ یہ موٹر وے

کس نے بنائی ہے ،آپ ایک آواز میں بتا دیں ہزارہ موٹر وے آپ کو کس نے دی ؟

جس پر شرکاء نے جواب دیا نوازشریف نے بنائی ۔انہوںنے سوال کیا کہ نوازشریف

کا پاکستان اچھا تھا یا ووٹ چور کا پاکستان اچھا ہے ؟۔ انہوںنے عمران خان پر

تناقید کرتے ہوئے کہاکہ ڈھائی سال پہلے وعدے کئے تھے جن کے بارے میںپوچھو

تو کہتا ہے میرے پاس جادو کا بٹن نہیں ہے کہ جس کو دبا دوں تو نیا پاکستان بن

جائے ،کیا وہ نیا پاکستان ملا جس کے وعدے کئے گئے تھے ، کروڑ نوکریوں میں

سے ایک بھی نوکری ملی ، پچاس لاکھ گھروں میں سے ایک کمرہ بھی کسی ملا

،47روپے پٹرول ملا ؟انہوںنے کہاکہ جب تک جعلی حکومت ہمارے سروں پر سوار ہے ،یہ ملک نہیں چل سکتا ، جب تک جعلی حکومت ہے مہنگائی کم نہیں

ہوسکتی ، جب تک جعلی حکومت ہے غریب کا چولہا نہیں جل سکتا ،جب تک

جعلی حکومت ہے غریب کا گھر نہیں چل سکتا ، جب تک جعلی حکومت ہے

ہمارے غریب مریضوں کو سستی دوائی نہیں مل سکتی ہے ، جب تک جعلی

حکومت سروں پر سوار ہے آٹا چوری نہیں رکے گی ، جب تک جعلی حکومت ہے

چینی چوری نہیں رکے گی ، جب تک جعلی حکومت ہے ،عوام کے دلوں اور

گھروں پر مصیبتیں آتی رہیں گی اللہ نہ کرے ۔ انہوںنے کہاکہ جب تک جعلی

حکومت ہے آپ کا ووٹ چوری ہوتا رہے گا ۔ مریم نواز نے کہاکہ گلگت بلتستان

کے ایک کونے سے دوسرے کونے تک ایک ہی آواز آرہی تھی وہ شیر کی تھی ،

پوری دنیا نے دیکھا کس طرح گلگت بلتستان کے لوگ ایک کونے سے دوسرے

کونے تک نوازشریف کی حمایت میں باہر نکلے اور ہر جگہ شیر ہی شیر تھا

،گلگت بلتستان کا جب نتیجہ آیا تو پاکستان میں کوئی اسے ماننے کیلئے تیار ہی

نہیں ہے ۔انہوںنے کہاکہ عوام کہہ رہے ہیں وو ٹ پر ڈاکو نا منظور ہے ۔ انہوںنے

کہاکہ 2018ء میں آپ کا ووٹ چوری ہوا اور سلیکٹڈ کو جتوایا گیا ، دھاندلی کے

باوجود گلگت بلتستان میں جعلی کو نہیں جتوایا جاسکا اب یہ دھاندلی کر کے بھی

نہیں جیت سکتا ۔ انہوںنے کہاکہ مسلم لیگ (ن)کے امیدوار چورانے کے باوجود ،

الیکشن کے چورانے کے باوجود ، ساری ایجنسیز کے نمائندہ کئی ماہ تک گلگت

بلتستان کے اندر بٹھانے کے باوجود ا،توڑ جوڑ کے باوجود ، تمام تر دھاندلی کے

باوجود صرف آٹھ سیٹیں ملی ہیں ۔انہوںنے کہاکہ وہ سیٹیں بھی اس کی نہیں ہیں ،وہ

سیٹیں بھی مسلم لیگ (ن)کے توڑے ہوئے لوگوں کی مرہون منت ہیں ۔انہوںنے

کہاکہ آٹھ سیٹوں کی مبارکباد ہم عمران خان کونہیں دیتے ان کی مبارکباد بھی ہم

سلیکٹرز کو دیتے ہیں ۔انہوںنے کہاکہ گلگت بلتستان کے دور دور علاقوں میں جہاں

انٹر نیٹ نہیں فون کے سنگل نہیں تھے وہاں نوازشریف کا بیانیہ گونج رہا تھا ،تم

کہتے ہو نوازشریف کا بیانیہ کیا ہے ؟نوازشریف کے بیانیہ نے تمہاری سیاست کو

دفنا کر دیا ہے ، نوازشریف کے بیانیہ نے تمہیں کہیں کا نہیں چھوڑا ،یہ نوازشریف

کا بیانیہ ہی تھا جس کی وجہ سے فکس میچ کے باوجود تمہیں مینڈیٹ نہیں ملا

صرف بیساکھیاں ملی ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ ہم ہمیشہ سنتے تھے گلگت بلتستان میں

جب الیکشن ہوتا ہے تو لوگ حکومت وقت کو ووٹ دیتے تھے ۔انہوںنے کہاکہ جب

پیپلز پارٹی پاور میں تھی میرے خیال میں ان کو چودہ ملی تھیں جب مسلم لیگ

(ن)کی حکومت تھی تو گلگت بلتستان میں مسلم لیگ (ن) کو16سیٹیں ملی تھیں اور

حکومت بنانے کیلئے کسی بے ساکھی کی ضرورت نہیں ملی ۔ انہوںنے کہاکہ تمام

تر دھاندلی کے باوجود آپ کو صرف آٹھ سیٹیں ملی ہیں ایک اور کم ہوگئی ہے اور

سیٹیں سات ہوگئی ہیں، ایسی عبرتناک شکست توبہ توبہ ، اس ذلت سے منہ چھپا کر

گھر میں بیٹھ جانا اچھا ہوتا ، کوئی تھوڑی سی شرم اور حیاء والا ہوتا تو تین دن

اپنے گھر سے باہر نہ نکلتا ۔ انہوںنے کہاکہ ضروریات کے پیش نظر لوگ حکومت

وقت کیلئے ووٹ دیتے ہیں یہاں لوگوں نے اپنا فائدہ نہیں دیکھا ،لوگوں نے عزت

کوووٹ دیا اور جعلی حکومت کو ووٹ نہیں دیا ۔انہوںنے کہاکہ گلگت بلتستان میں

لوگ آپ کو ووٹ کیوں دیتے ؟ تم نے باقی پاکستان کو کیا دیا ہے جو تم گلگت

بلتستان ک ودیتے ۔مریم نواز شریف نے کہاکہ سوائے تکلیفوں ، سوائے تیس روپے

کی روٹی ، مہنگائی ، فاقوں کے دیا ہی کیا ہے جو گلگت بلتستان میں ووٹ مانگے

چلے گئے تھے ، جو آپ نے دودھ کی نہریں پاکستان میں بہا دیں تھیں وہ گلگت

بلتستان کے لوگوں کو دور دور نظر آرہی تھیں ۔ انہوںنے کہاکہ جب تم سے جواب

پوچھا جاتا ہے تو کہتے ہیں ادارے اور میں ایک پیج کے اوپر ہیں ، جو تمہیں لائے

اس ناکامی کی ذمہ دار تم سے زیادوہ ہیں ،جو تمہیں اقتدار میں لیکر آیا ہے آج لوگ

مہنگائی کے ذمہ دار بھی ان کو قرار دے رہے ہیں ، لوگ ووٹ چوری کا ذمہ دار

بھی ان کو قرار دے رہے ہیں ، پاکستان کی ترقی کی شرح زمین کے نیچے چلی

گئی ہے اس کے قصور وار بھی ان کو ذمہ دار قرار دے رہے ہیں ،تم کشمیر کو

بھارت کی جھولی میں پھینک آئے ہو اس کا کا ذمہ دار بھی تمہارے لانے والوں کو

قرار دے رہے ہیں ، لوگ تمہیں اس قابل بھی نہیں سمجھتے کہ ناکامی کا ذمہ دار

بھی تمہیں قرار دیں ۔انہوںنے کہاکہ جو انسان ایک یونین کونسل بھی چلانے کے

قابل نہیں تھا اسے بائیس کروڑ عوام کے ملک کی ذمہ دار دے دی گئی یہ کتنی

بڑی زیادتی ہے۔انہوںنے کہاکہ نوازشریف کو تکلیف ہے کیونکہ اس نے ملک کی

اینٹ اینٹ لگائی تھی ، محنت اور محبت سے ملک کو سنوارا تھا ، محنت سے ترقی

دے رہا تھا آج ملک الٹا چل رہا ہے تو نوازشریف کو تکلیف ہوتی ہے ۔ انہوںنے

کہاکہ نوازشریف کے بیانیہ کو نہ صرف نو جوانوں نے اپنالیا ہے بلکہ 22کروڑ

عوام نے اپنا لیا ہے اور سمجھ بھی لیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ وہ وقت دور نہیں جب

نوازشریف وطن واپس آئے گا بلکہ چوتھی بار وزیر اعظم بنے گا ۔ انہوںنے شرکاء

سے کہاکہ مجھ وعدہ کریں 22تاریخ کو پشاور کے جلسے میں ملاقات کریں گے،

آپ مجھ سے وعدہ کریں حکومت کو آخری دھکا لگانے کیلئے اسلام آباد جانا پڑا تو

آپ میرے ساتھ نکلوگے ؟ ۔

ملک تباہی عمران خان

صدارتی امیدوار جو بائیڈن نے ٹی وی مباحثے میں ٹرمپ کو ’مسخرہ‘ کہہ دیا

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں