45

افغان صحافی کو قتل کی دھمکیاں ملی تھیں، ہیومین رائٹس واچ

Spread the love

جنیوا (صرف اردو آن لائن نیوز) افغان صحافی قتل

ہیومن رائٹس واچ نے کہاہے کہ افغانستان میں کار بم دھماکے میں مارے جانے

والے صحافی الیاس داعی کو طالبان کی جانب سے دھمکیاں ملی تھیں۔ ان کو

طالبان حملوں کی رپورٹنگ کرنے پر ہلاک کیا گیا۔ حالیہ مہینوں میں درجنوں افغان

صحافیوں کو بھی طالبان کی جانب سیدھمکیاں ملی ہیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق

ہیومن رائٹس واچ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ ہلاک افغان صحافی نے

ایچ آر ڈبلیو کو طالبان کی جانب سے جان سے مارنے کی دھمکیوں کے بارے میں

بتایا تھا۔مارے جانے والے صحافی نے کہا تھا کہ طالبان نے حملوں کی رپورٹنگ

روکنے کی وراننگ دی تھی، الیاس داعی نے مرنے سے ایک روز قبل اپنی جان

کو لاحق خطرے سے اپنے کولیگ کو بذریعہ ای میل آگاہ کیا تھا۔الیاس داعی

کیساتھی صحافیوں نے ہیومن رائٹس واچ کو بتایا کہ طالبان نے الیاس داعی کے

گھر کی تلاشی اور ان کی نقل وحرکت کے بارے میں معلومات لیں۔ایچ آر ڈبلیو کا

کہنا تھاکہ افغان صحافی کا قتل افغان میڈیا کو پیغام ہے کہ طالبان کی رپورٹنگ

کرنا ان کو خطرے میں ڈال دے گا۔ افغان صحافی کے قتل سے آزادی اظہار کے

تحفظ پر شدید شکوک و شبہات پیدا ہوتے ہیں۔

افغان صحافی قتل

صدارتی امیدوار جو بائیڈن نے ٹی وی مباحثے میں ٹرمپ کو ’مسخرہ‘ کہہ دیا

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں