37

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز نے 3 نوجوان شہید کر دیئے

Spread the love

سرینگر(صرف اردو آن لائن نیوز) (مقبوضہ کشمیر نوجوان شہید) مقبوضہ کشمیر میں جنوبی کشمیر میں شوپیاں کے علاقے کٹ پورہ میں حریت پسندوں اور بھارتی سرکاری فوج کے مابین منگل کی صبح شروع ہونے والے تصادم کے دوران3حریت پسند کشمیری شہید ہوگئے ہیں۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق فائرنگ کے تبادلے کی تصدیق کرنے والے ایک عہدیدار نے بتایا کہ بھارتی فوج کے 34 راشٹریہ رائفلز ، جموں کشمیر پولیس اور سی آر پی ایف کے 178 بی این نے مشترکہ طور پر شوپیاں کے علاقے کٹ پورہ میں محاصرہ کیا تھا۔

کلبھوشن یادو, پاکستان نے بھارت کو ایک اور قونصلر رسائی کی پیشکش کردی

انہوں نے بتایا کہ اس علاقے میں عسکریت پسندوں کی نقل و حرکت کے بارے میں فورسز کی جانب سے اطلاع ملنے کے بعد یہ محاصرہ کیا گیا تھا۔جہاں فائرنگ کے تبادلے کے دوران 3 حریت پسند شہید گئے ، جن کی شناخت تاحال نہیں ہو سکی ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ شہداء مقامی ہیں ، جنہوں نے سرکاری فوج کی پیشکش کے باوجود ہتھیار ڈالنے سے انکار کردیا۔

رپورٹس کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں جاری تحریک آزادی کشمیر میں سال2000سے ضلع شوپیاں میں 136واقعات میں 266افراد شہید ہوئے جن میں 56عام شہری شامل ہیں، ان واقعات میں 39سیکورٹی فورسز کے اہلکار ہلاک ہوئے۔اس ضلع میں38واقعات میں81افراد کو گرفتار کیا گیا۔

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

مقبوضہ کشمیر میں جاری تحریک آزادی کشمیر میں سال 1988سے اب تک مجموعی طور تقریبا41ہزار کشمیریوں کو شہید کیا گیا جن میں 25216حریت پسند اور 15147عام شہری شامل ہیں۔ان میں 1988سے 2000تک 12396حریت پسنداور 15152عام شہری شہید ہوئے۔1988سے اب تک مقبوضہ کشمیر میں6997سیکورٹی اہلکار ہلاک ہوئے۔

مقبوضہ جموں وکشمیر میں رواں سال 2020میں129واقعات میں246کشمیریوں کو شہید کر دیا گیا۔جن میں جنوری میں 22،فروری میں 12، مارچ میں 13، اپریل میں 33 ،مئی میں 16،جون میں 51، جولائی میں 24، اگست میں 20، ستمبر میں 20 ،اکتوبر میں 24اور نومبر میں 11کشمیریوں کو شہید کیا گیا۔جبکہ 50فورسز اہلکار ہلاک ہوئے۔ پولیس کے مطابق رواں سال اسلحہ برآمدگی کے156واقعات ریکارڈ کئے گئے۔ساوتھ ایشین وائر کے مطابق اس سال دھماکوں کے 34واقعات میں30شہریوںاور ایک سیکورٹی اہلکار کی اموات ہوئیں جبکہ22سیکورٹی اہلکارزخمی ہوئے۔سال 2020میں129مختلف واقعات میں 270افراد کو گرفتار کیا گیا۔

رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ 16جولائی 2016کو برہان وانی کی شہادت کے بعد بھارتی فوج نے پیلیٹ گنز سے عوام کو نشانہ بنانے کی حکمت عملی اختیار کی ۔ اس وقت سے اب تک چھروں سے زخمی افراد کی تعداد10120ہے جبکہ75کشمیری مکمل طور پر بصارت سے محروم ہوگئے۔ 198 ایک آنکھ کی بصارت سے محروم ہوئے، اور1000 کی بصارت ضایع ہونے کے قریب ہے،1800افراد کی بصارت کو جزوی نقصان پہنچا۔

ذرائع کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں اب تک کئی علاقون میں بھارتی افواج نے کشمیریوں کا قتل عام کیا۔مقبوضہ کشمیر کی تاریخ دل دہلانے والے خونین قتل عام کے واقعات سے بھری پڑی ہے۔ سوپور، ہندوارہ، کپواڑہ، گاوکدل ہو یا دیگر دل گداز واقعات ہوں، ہر جگہ بھارت کی قابض افواج نے انسانیت سوز مظالم ڈھائے ہیں۔ مقبوضہ کشمیر مین قتل عام کے تقریبا35واقعات میں 643افراد بہیمانہ طریقے سے شہید کئے گئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں