41

ٹرمپ فارغ، جوبائیڈ ن کیلئے وائٹ ہاﺅس کے دروازے کھل گئے

Spread the love

واشنگٹن (صرف اردو آن لائن نیوز) ٹرمپ فارغ جوبائیڈ ن

بالآخر ڈیموکریٹک پارٹی کے صدارتی امیدوار سابق نائب صدر جوبائیڈن کیلئے وائٹ ہاﺅس کے دروازے کھل گئے اور ان کے امریکہ کے 46ویں صدر بننے کا

اعلان ہوگیا۔ ریاست پنسلوینیا اور نیواڈا کے پاپولر ووٹر زمیں اکثریت کنفرم ہونے کے بعد قانون کے مطابق ان ریاستوں کیلئے مخصوص بالترتیب تمام 20 اور

6 الیکٹورل ووٹ مل گئے اور ان کا سکور 290 بن گیا۔ 50 ریاستوں اور ڈی سی پر مشتمل الیٹکورل کالج کے کل مندوبین کی تعداد 538 ہے اور صدر بننے کیلئے

سادہ اکثریت سے زائد یعنی کم از کم 270 ووٹ درکار تھے۔ جوبائیڈن کے الیکٹورل ووٹ 290تک پہنچ چکے ہیںجو اب درکار ووٹوں سے 20 ووٹ بڑ

ھ گئے ہیں۔ جارجیا کی ریاست کے الیکٹورل ووٹ 16ہیں۔ وہاں بھی جوبائیڈن کو معمولی اکثریت حاصل ہے وہاں اکثریت فائنل ہونے کے بعد یہ ووٹ ملنے سے

جوبائیڈن کا کل الیکٹورل سکور306 ہوسکتا ہے صدر ٹرمپ کا سکور بدستور 214 ہے۔ صدر ٹرمپ نے اپنی متوقع شکست دیکھتے ہی نتائج پر اعتراضات

اٹھانے شروع کردیئے تھے اور کتنی رکوانے یا دوبارہ کروانے کے مطالبات کے ساتھ گنتی میں فراڈ کرنے کا بھی الزام لگایا تھا اس سلسلے میں عدالتوں تک بھی

رجوع کیا تھا لیکن عدالتوں نے ابتدائی طور پر ان کے الزامات کو مسترد کردیا تھا۔ صدر ابھی تک کوئی ٹھوس شہادت پیش نہیں کرسکے جس کے بارے میں وہ کہتے

ہیں کہ وہ انہیں صرف عدالت کے سامنے لے جائیں گے۔ جوبائیڈن کے صدر بننے کے اعلان ہونے کے فوراً بعد صدرٹرمپ نے ان نتائج کو تسلیم کرنے سے انکا

ر کردیا ۔ تاہم آئینی اور قانونی اعتبار سے مخالف امیدوار کا نتائج کو تسلیم کرنا ضروری نہیں ہے۔ جوبائیڈن کے صدر بننے کے اعلان کے ساتھ ہی بڑے بڑے

شہروں میں ان کے حامیوں نے سڑکوں پر نکل کر نعرے بازی شروع کردی۔ چند مقامات پر صدر ٹرمپ کے حامیوں نے احتجاجی مظاہرے بھی کئے ہیں۔

۔ 2020ءکے صدارتی انتخاب کئی لحاظ سے تاریخی ثابت ہوئے ہیں اور انہوں نے بہت سے نئے ریکارڈ قائم کئے ہیں۔ کرونا وبا کے باوجود ان انتخابات میں اتنا بڑ

ا ٹرن آﺅٹ پہلے دیکھنے میں نہیں آیا۔ غیرحاضر ووٹ بھی اس سے پہلے کسی الیکشن میں اتنی تعداد میں نہیں ڈالے گئے۔ ایک طویل عرصے کے بعد وائٹ ہاﺅس

میں موجود صدر کی دوبارہ جیت نہیں ہوسکی۔ ان کے ساتھ منتخب ہونے والی نائب صدر کملا ہیرس پہلی خاتون ہوں گی جو اس عہدے پر فائز ہوں گی۔ 56سالہکمل

ا ہیرس پہلی رنگراز نسل سے تعلق رکھنے والی نائب صدر بنیں گی۔ ان کے والد پروفیسر ڈونلڈ ہیرس افریقی امریکن تھے جنہوں نے ان کی انڈین ماں کو اس وقت

طلاق دے دی تھی جب وہ صرف سات برس کی تھی۔ ان کی والدہ کا تعلق انڈیا کی ریاست تامل ناڈو سے تھ جو 1958ءمیں امریکہ آکر آباد ہوئیں۔ جنہوں نے بعد می

ں ڈاکٹری کی تعلیم مکمل کی۔ صدرٹرمپ نے ورجینا میں اپنے گولف کورس سے اپنے پیغام میںشکست تسلیم کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا ہے کہ انتخابات اپنی

تکمیل سے ابھی بہت دور ہیں ان نتائج کو چیلنج کیا جائے گا جن کے فیصلےکے بعد حقیقی فاتح کون ہے پتہ چلے گا۔امریکا کے نو منتخب صدر جوبائیڈن نے اپنی

کامیابی پر امریکی عوام کا شکریہ ادا کیا ہے۔امریکی ریاست پنسلوانیا کا نتیجہ آنے کے بعد ڈیموکریٹک امیدوار جوبائیڈن نے مطلوبہ 270 سے زائد الیکٹورل ووٹس

حاصل کرلیے ہیں اور ان کے حریف ٹرمپ صدارتی دوڑ سے باہر ہوگئے ہیں جوبائیڈن نے ٹوئٹر پر امریکی عوام کے نام اپنے پیغام میں کہا کہ ‘میرے لیے ی

ہ اعزاز کی بات ہے کہ آپ لوگوں نے مجھے اس عظیم ملک کی قیادت کے لیے منتخب کیا ہے’۔جوبائیڈن کاکہنا ہے کہ’ آنے والے وقت میں ہمیں بہت سی مشکلات

اور چیلنجز درپیش ہیں لیکن میں سب سے وعدہ کرتا ہوں کہ میں تمام امریکیوں کا صدر بنوں گا چاہے آپ نے مجھے ووٹ دیا ہے یا نہیں’۔نومنتخب امریکی

صدرکاکہنا ہ ےکہ ‘امریکی شہریوں نے مجھ پر جو اعتماد کیا ہے میں اسے برقرار رکھوں گا’۔امریکی میڈیا کی جانب سے ڈیموکریٹک امیدوار جوبائیڈن کی جیت کے

اعلان کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ کا بیان سامنے آگیا۔موجودہ امریکی صدر و ری پبلکن امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ نے اعلان کیا ہے کہ الیکشن کے نتائج اگلے ہفتے عدالت می

ں چیلنج کریں گے۔ان کا کہنا ہے کہ ہم سب جانتےہیں بائیڈن کیوں اتنی جلدی فتح کا دعویٰ کر رہے ہیں، بائیڈن کے اس غلط دعوے میں ان کے میڈیا کے ساتھی بھی

مددگار ہیں۔ٹرمپ کا کہنا تھا کہ یہ لوگ سچ کو سامنے نہیں آنے دینا چاہتے،۔ ا

ٹرمپ فارغ جوبائیڈ ن

صدارتی امیدوار جو بائیڈن نے ٹی وی مباحثے میں ٹرمپ کو ’مسخرہ‘ کہہ دیا

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

ب

اپنا تبصرہ بھیجیں