42

گلگت بلتستان کی عوام کو حق روزگار بھی دلائیں گے،بلاول بھٹو زر داری

Spread the love

استور(صرف اردو آن لائن نیوز) حق روزگار بلاول بھٹو

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ گلگت بلتستان کی عوام کو حق

حاکمیت، حق ملکیت کے بعد حق روزگار بھی دلائیں گے، عمران خان نے استور

راما کو عوام کی مرضی کے بغیر نیشنل پارک کا درجہ دیا جسے عوام سمیت پیپلز

پارٹی مسترد کرتی ہے، گلگت بلتستان انتخابات میں عوام پیپلز پارٹی کا ساتھ دیں

گے تو وفاق سے بھی عمران حکومت گھر جائیگی۔چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو

زرداری نے گلگت بلتستان انتخابات 2020 کے حوالے سے استور میں جلسے سے

خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میرا گلگت بلتستان میں تیسرا دورہ اور اسی جگہ استور

میں دوسرا جلسہ ہے. میں یہاں کی عوام کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے

تاریخی استقبال کیا،ہم گلگت بلتستان اور استور کی عوام کا بھٹو خاندان سے رشتہ

آگے بڑھانے کیلئے یہاں آئے ہیں،بھٹو شہید نے اپنے دور میں گلگت بلتستان سے

ایف سی آر، راجگری کا خاتمہ کیا اور گندم سبسڈی کا اعلان کیا جس کے ثمرات

آج بھی عوام کو مل رہے ہیں جس کے بعد بی بی شہید نے ایل ایف او پاس کر کے

یہاں کے عوام کو پہچان دی لوگوں کو روزگار اور ترقیاتی کام کئے، گلگت بلتستان

کو معاشی ترقی دی تاہم دیگر سیاسی جماعتوں سمیت مشرف کے دور میں گلگت

بلتستان میں کوئی کام نہیں ہوا،سابق صدر آصف علی زرداری اقتدار میں آئے تو

انہوں نے گلگت بلتستان کو نام اور پہچان دیا اپنی صوبائی اسمبلی بنائی. بینظیر

انکم سپورٹ پروگرام سے غریب لوگوں کو گلگت سے سندھ تک کارڈدئے۔بلاول

بھٹو زرداری نے کہا کہ آج کل پاکستان تاریخی مہنگائی، بے روزگاری اور غربت

کی طرف گامزن ہے پیپلز پارٹی ان تمام مسائل سے پورے ملک کو نکالے گی،

گلگت بلتستان میں صدر زرداری کے دور میں پچیس ہزار ملازمتیں دی گئیں

تھیں،ملک بھر سمیت گلگت بلتستان کے سرکاری ملازمین کی تنخواہیں بڑھائی

گئیں،ہم نے دیکھا گزشتہ سات سالوں میں کسی سرکاری ملازم کی تنخواہ میں

اضافہ نہیں ہوا،عمران خان کی حکومت ائی تو انہوں نے لوگوں سے روزگار بھی

چھین لیا، ہم نے گلگت بلتستان کی عوام کو ان انصافیوں سے بچانا ہے، عمران خان

اور دیگر جماعتوں کی طرح ہم اپکو لاوارث نہیں چھوڑیں گے،عمران خان امیروں

کو اندسٹریل کیلئے بجلی سستی کررہے ہیں مگر غریب عوام کا کوئی خیال نہیں کر

رہے ہیں، استور کے نوجوانوں نے اٹھارہ اکتوبر کو بینظیر بھٹو شہید کی جان

بچانے کیلئے اپنی جانیں دیں ہم استور کی عوام کو ترقی دیں گے، شونٹر ٹنل جو

آصف علی زرداری نے شروع کیا تھاا وہ اس وت تک ممکن نہیں ہوسکا،پیپلزپارٹی

استور سے آزاد کشمیر کیلئے شونٹر ٹنل تعمیر کریگی،استور راما ویلی کو عمران

خان نے عوام سے پوچھے بغیر نیشنل پارک کا اعلان کیا ہے جسے ہم مسترد

کرتے ہیں ہم گلگت بلتستان کی عوام کو حق حاکیمت اور حق ملکیت دلائیں گے

،گلگت بلتستان کی عوام کو اپنی زمینوں کے مالک بنائیں گے،گلگت بلتستان کی

عوام کو ہم حق حاکمیت، حق ملکیت کے بعد حق روزگار بھی دلائیں گے،گلگت

بلتستان کی عوام سے اپیل کر رہا ہوں آپ نے ہمیشہ بھٹو خاندان کا ساتھ دیا ہے اور

آج بلاول بھٹو زرداری کا ساتھ دیں تاکہ گلگت بلتستان کو ترقی کی نئی منازل کی

طرف لیجا سکیں،گلگت بلتستان میں بینظیر انکم سپورٹ پروگرام میں اضافہ کریں

گے، ہم سندھ کی طرح استور میں مفت ہسپتال قائم کریں گے،ہم نے سندھ میں

مزدور کارڈ کا اجراء کیا ہے اور اب گلگت بلتستان کی عوام کو بھی مزدور کارڈ

دیں گے،بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ یہ الیکشن صرف اقتدار اور حکومت بنانے

کیلئے نہیں بلکہ گلگت بلتستان کو حقوق دلانے کیلئے ہے آپ نے زولفقار علی

بھٹو، بینظیر بھٹو، آصف زرداری کو موقع دیا اب بلاول بھٹو کو موقع دیں، پندرہ

نومبر کو ڈاکٹر مظفر ریلے کو کامیاب دلائیں گے ،پیپلز پارٹی کو جیتائیں گے،آپ

ساتھ دیں گے تو وفاق سے بھی عمران حکومت گھر جائیگی، جلسے سے

سیکرٹری جنرل پیپلز پارٹی نئیر حسین بخاری کا نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ

مجھے چھبیس سال بعد یہ اعزاز مل رہا ہے کہ آج دوبارہ استور میں ہوں، موجودہ

حکمران بنارسی ٹھگ ہیں، گلگت بلتستان کو صوبہ آصف علی زرداری نے دیا تھا

اب آپ کونسا صوبہ دے رہے ہیں،جب تک قومی اسمبلی اور سینٹ میں اسمبلی سے

ترمیم نہیں کرتے کیسے ممکن ہوگا، اس خطے کی عوام کی خدمت شہید ذوالفقار

علی بھٹو، بینظیر بھٹو اور زاردری نے کی ہے۔ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اس

خطے کی عوام کا درد سمجھتا ہیں،بلاول بھٹو گلگت بلتستان کے ہر علاقے میں

گئے،گلگت بلتستان میں جیالا ہی وزیر اعلیٰ ہوگا،ووٹ عوام کا ہوگا ،آپ نے اپنے

نمائندے منتخب کرنا ہے،ہمارے جس امیدوار کو ٹکٹ نہیں ملا وہ آج بھی پارٹی

میں موجود ہیں۔مرکزی رہنما پیپلز پارٹی قمر زمان قائرہ نے خطاب کرتے ہوئے

کہا کہ پیپلز پارٹی ہمیشہ کی طرح آج بھی تاریخ رقم کر رہی ہے،بلاول بھٹو

زرداری گلگت بلتستان کے گاؤں گاؤں جا کر ان کے مسائل دیکھ رہے ہیں، گلگت

بلتستان میں حکومت بنی تو بلاول بھٹو کو یہ بتانے کی ضروت نہیں پڑیگی ،یہاں

کی سڑکیں خراب ہیں،بلاول بھٹو زرداری گلگت بلتستان میں اپنا تیسرا دورہ

کررہے ہیں،ذوالفقار علی بھٹو، اور بینظیر بھٹو کا جو گلگت بلتستان سے رشتہ تھا

اسے قائم رکھنے کیلئے بلاول آپ کے درمیان موجود ہے،جب تک بھٹو خاندان کا

یک بھی فرد زندہ ہے گلگت بلتستان سے یہ رشتہ قائم رہے گا،تحریک انصاف

والے کہتے ہیں کہ ہم نے سوچا ہے کہ آپ کو عبوری صوبہ بنائیں گے آپ اپنے

بزرگوں سے پوچھیں بھٹو سے پہلے یہاں کی آزادی برائے نام تھی،پیپلزپارٹی نے

گلگت بلتستان سے ایف سی آر کا خاتمہ کیا، پیپلز پارٹی نے گلگت بلتستان کی عوام

کو پاکستان کے دیگر شہریوں کی طرح حقوق فراہم کئے. بینظیر بھٹو سیاچن کی

پہاڑوں تک گئی تھی اور لوگوں کے مسائل حل کئے،پیپلزپارٹی نے گلگت بلتستان

کو شناخت دی اور آج بھی گلگت بلتستان کے حقوق کی جنگ لڑیں گے، گلگت

بلتستان کو آئینی حقوق بلاول بھٹو زرداری دیں گے،عمران خان کو کسی نے بٹن دبایا تو وہ صوبے کی بات کرنے لگے ہیں۔پیپلز پارٹی کے چیئرمین نے

2018 کے انتخابات میں اپنے منشور میں گلگت بلتستان کے آئینی حقوق شامل کیا.

گلگت بلتستان کو قومی اسمبلی میں ترمیم کر کے حقوق دیں گے، بلاول بھٹو آئے گا

روزگار لائیگا، گلگت بلتستان کو زیادہ وسائل دیں گے تاکہ یہاں کی عوام خوشحال

ہو،گلگت بلتستان کے عوام کے فیصلے یہاں کے عوامی نمائندے کریں گے،یہ کٹھ

پتلی تماشا دیکھنے والے اور موسمی پرندے آتے ہیں دانا چک کر چلے جاتے ہیں،

پیپلزپارٹی کا گلگت بلتستان سے خون کا رشتہ ہے،عوام نے گھر گھرجاکر اپنے

نمائندے مظفر علی ریلے اور عبدالحمید کو ووٹ اور سپورٹ کرنا ہے،پیپلز پارٹی

استور حلقہ دو کے امیدوار ڈاکٹر مظفر علی خان ریلے نے خطاب کرتے ہوئے کہا

کہ بلاول بھٹو کو استور آمد پر خوش آمدید کہتا ہوں اس سردی کے موسم میں

صاحب ثروت ہوتا ہے وہ یہاں نہیں رہتا ہے تاہم پیپلزپارٹی کے قائد ہو یا کارکن اس

دھرتی میں رہتا ہے،میں گولڈ اسمتھ کے داماد عمران کو کہتا ہوں میرے قائد کی

طرح اس سردی میں گلگت بلتستان آکر دیکھو،ہمارے جلسے کو ناکام کرنے کیلئے

اس کٹھ پتلی حکومت نے دو جلسے رکھے پھر بھی عوام کا سمندر یہاں موجود

ہے،بھٹو خاندان کے اس علاقے پر احسانات ہیں،گلگت بلتستان کی عوام یہاں پیپلز

پارٹی کی حکومت قائم کریں گے،گلگت بلتستان میں استور سے شونٹر ٹنل کی

تعمیر کو مطالبہ کرتا ہوں،پریشنگ اور ہرچو کو نیابت کا درجہ دیا جائے،سندھ کے

تعلیمی اداروں میں گلگت بلتستان کا کوٹہ بڑھایا جائے،میں استور فینہ اپنے گھر کا

نام آج سے تبدیل کر کے بلاول ہائوس رکھ رہا ہوں،جلسے میں چیئرمین پیپلزپارٹی

بلاول بھٹو زرداری اور قمر زمان قائرہ کو گلگت بلتستان کی روایتی ٹوپی اور

چوگہ پہنایا بھی پہنایا گیا۔

حق روزگار بلاول بھٹو حق روزگار بلاول بھٹو حق روزگار بلاول بھٹو

صدارتی امیدوار جو بائیڈن نے ٹی وی مباحثے میں ٹرمپ کو ’مسخرہ‘ کہہ دیا

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں