rana sana fsd 38

دہشت گردی کیس رانا ثنا اور کیپٹن صفدر کی ضمانت میں توسیع

Spread the love

لاہور (صرف اردو آن لائن نیوز)انسداد دہشت گردی لاہور کے جج ارشد حسین بھٹہ نے پاکستان مسلم لیگ (ن)کی نائب صدر مریم نواز شریف کی نیب آفس لاہور آمد کے موقع پر ہنگامہ آرائی کے مقدمہ میں پاکستان مسلم لیگ (ن)پنجاب کے صدر رانا ثناء اللہ خان، کیپٹن (ر)محمد صفدر سمیت دیگر ملزمان کی عبوری ضمانت میں 20اکتوبر تک تو سیع کردی۔

دوران سماعت رانا ثناء اللہ خان، کیپٹن (ر)محمد صفدر،اراکین پنجاب اسمبلی ملک سیف الملوک کھوکھر اور مرزا محمد جاوید سمیت دیگر ملزمان عدالت میں پیش ہوئے۔

دوران سماعت پراسیکیوشن کی جانب سے دلائل کا آغاز کیا گیا اور عدالت کو بتایا گیا کہ تمام ملزمان تفتیش میں قصور وار پائے گئے ہیں۔جبکہ رانا ثناء اللہ اور دیگر کے وکیل فرہاد علی شاہ ایڈووکیٹ نے کہا کہ ملزمان کے خلاف جو الزمات لگائے گئے ہیں یہ جھوٹے اور بے بنیاد ہیں۔

معیاری اور نایاب اردو کتب پڑھنے اور داونلوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں

اس موقع پر انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج ارشد حسین بھٹہ نے کہا کہ آپ اپنے دلائل کا آغاز کریں عدالت آئین اور قانون کے مطابق فیصلہ کرے گی۔ اس موقع پر درخواست گزار کے وکلاء نے کہا کہ انہیں مزید مہلت دی جائے ۔

اس پر عدالت نے رانا ثناء اللہ، کیپٹن ریٹائرڈ محمد صفدر سمیت 30 ملزمان کی عبوری ضمانت میں 20اکتوبر تک توسیع کرتے ہوئے فریقین کے وکلاء کو آئند سماعت پربحث کرنے کا حکم دے دیا۔

بھارت، شوہر نے ڈیڑھ سال بیوی کو ٹوائلٹ میں بند رکھا

لاہور کی انسدادِ دہشت گردی کی عدالت میں پیشی کے موقع پر مسلم لیگ نون کے رہنما کیپٹن ریٹائرڈ محمد صفدر نے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ رانا ثنا اللہ پر سیاسی بنیادوں پر منشیات کا مقدمہ بنایا گیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ نیب آفس کے باہر ہماری گاڑی پر حملہ کیا گیا، قومی احتساب بیورو (نیب)کے چیئرمین کی ایما پر ہم پر یہ حملہ ہوا۔کیپٹن ریٹائرڈ محمد صفدر کا یہ بھی کہنا ہے کہ مجھ پر حیات آباد پشاور میں جھوٹا مقدمہ درج کیا گیا۔

رانا ثنا کیپٹن صفدر

اپنا تبصرہ بھیجیں