51

اورماڑہ ،شمالی وزیرستان , کیپٹن سمیت 21 جوان وطن پر قربان

Spread the love

21 جوان وطن قربان

راولپنڈی(صرف اردو آن لائن نیوز)بلوچستان کے علاقے اورماڑہ کے قریب دہشت

گردوں اور سیکیورٹی فورسز کے درمیان جھڑپ کے نتیجے میں ایف سی

بلوچستان کے سات جوان جبکہ سات سیکیورٹی گارڈز شہید ہوگئے ،جھڑپ کے

دوران دہشتگردوں کو بھی بڑے پیمانے پر جانی نقصان ہوا ۔ پاک فوج کے شعبہ

تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق جمعرات کو سیکیورٹی فورسز اور بڑی

تعداد میں دہشت گردوں کے درمیان ارماڑہ کے قریب کوسٹل ہائی وے پر اس وقت

مقابلہ ہوا جب او جی ڈی سی ایل کا ایک قافلہ جا رہا تھا اور سیکیورٹی فورسز اس

کی حفاظت کر رہی تھی ۔ اس دوران دہشت گردوں نے قافلے پر حملہ کردیا تاہم

سیکیورٹی فورسز نے اس کا مؤثر جواب دیا اور او جی ڈی سی ایل کے عملے کا

تحفظ یقینی بناتے ہوئے انہیں وہاں سے محفوظ مقام پر منتقل کردیا ۔آئی ایس پی آر

کے مطابق جھڑپ کے دوران دہشت گردوں کا بڑے پیمانے پر جانی نقصان ہوا تاہم

اس دوران ایف سی بلوچستان کے سات بہادر فوجی جام شہادت نوش کر گئے جبکہ

سات سیکیورٹی گارڈز نے بھی اپنی جانیں قربان کرتے ہوئے جام شہادت نوش کیا ۔

شہداء میں لیہ سے تعلق رکھنے والے صوبیدار عابد حسین ، سبی سے تعلق رکھنے

والے نائیک محمد انور، ڈی جی خان سے تعلق رکھنے والے لانس نائیک افتخار

احمد، چکوال کے سپاہی محمد نوید، پشین کے لانس نائیک عبداللطیف،میانوالی کے

سپاہی محمد وارث، لکی مروت کے سپاہی عمران خان ،لکی مروت ہی کے حوالدار

ریٹائرڈ سمندر خان ، لکی مروت ہی کے محمد فواد اﷲ ،ڈی آئی خان کے عطاء اﷲ

،ٹانک کے وارث خان ،کوہاٹ کے عبدالنافع ،کوہاٹ ہی کے شاکر اﷲ اور بنوں

سے تعلق رکھنے والے عابد حسین شامل ہیں ۔سیکیورٹی فورسز نے علاقے کا

مکمل گھیراؤ کر کے سرچ آپریشن شروع کردیا ۔آئی ایس پی آر کے مطابق دشمن

عناصر کے اس قسم کے بزدلانہ اقدامات کا مقصد امن واستحکام اور بلوچستان میں

اقتصادی ترقی کے عمل کو سبوتاژ کرنا ہے تاہم انہیں ان کے مذموم عزائم میں

کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا ۔ مزید برآں ایسی کارروائیاں ہماری فورسز کو

متزلزل نہیں کرسکتیں کیونکہ وہ مادر وطن کے دفاع کیلئے پرعزم ہیں اور اپنی

جانیں تک قربان کردینے کو تیار ہیں ۔ قبل ازیں صوبہ خیبرپختونخوا کے علاقے

شمالی وزیرستان میں بارودی سرنگ کا دھماکہ ہوا ہے جس کے نتیجے میں پاک

فوج کے ایک افسر اور پانچ جوانوں نے جام شہادت نوش کیا ۔ پاک فوج کے شعبہ

تعلقات عامہ(آئی ایس پی آر)کے حوالے سے بتایا ہے کہ بارودی سرنگ کے

دھماکے میں شہید ہونے والوں میں کیپٹن عمر فاروق، نائب صوبیدار ریاض احمد،

نائب صوبیدار شکیل آزاد، حوالدار یونس خان، نائیک محمد ندیم اور لانس نائیک

عصمت اﷲ شامل ہیں۔آئی ایس پی آر کے مطابق بارودی سرنگ کا دھماکہ شمالی

وزیرستان کے علاقے رزمک میں ہوا ۔وزیراعظم عمران خان نے دہشتگردوں کے

حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے شہید ہونے والے سیکورٹی اہلکاروں اور گارڈز

کے خاندانوں کے ساتھ اظہار ہمدردی کیا ہے۔ انہوں نے شہدا کی خدمات کو خراج

تحسین پیش کیا اور ان کے درجات کی بلندی کیلئے دعا کی۔وزیر داخلہ اعجاز احمد

شاہ نے حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ دہشتگردی کا یہ

واقعہ دشمن عناصر کا بزدلانہ عمل ہے۔ شرپسند عناصر کو ان کے ناپاک عزائم

میں ہرگز کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ حملے میں ملوث افراد کے خلاف فوری

کارروائی کرتے ہوئے انھیں کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔

دہشت گرد حملے

21 جوان وطن قربان

صدارتی امیدوار جو بائیڈن نے ٹی وی مباحثے میں ٹرمپ کو ’مسخرہ‘ کہہ دیا

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں