35

یہودی کھانا ’’ کوشر‘‘ ابوظہبی کے تمام ہوٹلزکے مینیو میں لازم قرار

Spread the love

ابوظہبی(صرف اردو آن لائن ) یہودی کھانا کوشر

متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے درمیان امن معاہدہ طے پانے کے بعد امارات

میں بہت سی نئی سرگرمیاں شروع ہو گئی۔ دبئی میں پہلی بار کسی اسرائیلی ماڈل

نے فوٹو شوٹ کروایا تو اب اسرائیلی بینکوں کی برانچز بھی امارات میں کھولی جا

رہی ہیں، جبکہ اماراتی حکومت نے ابوظہبی کے ہوٹلوں کو سرکلر جاری کیا ہے

کہ وہ مینیو میں کوشر(یہودی کھا نا)بھی لازمی شامل کریں ،سرکلر کا مقصد

امارات میں یہو د یوں کی سیاحت کو فروغ دینا ، اسرائیل سے تعلقات مزید مضبوط

بنانا ہے۔مقامی اتھارٹیز کا کہنا ہے امارات اور اسرا ئیل کے درمیان خو شگو ار

تعلقات قائم ہونے کے بعد اسرائیل اور دنیا بھر سے یہودی سیاحوں کی بڑی تعداد

میں امارات خصوصا ابوظہبی آمد متوقع ہے،انہیںاپنے مذہبی طریقے کے مطابق

تیار کردہ کھانا(کوشر)فراہم کرنا ہوٹلز انتظامیہ پر لازمی قرار دیا گیا ہے۔ علاوہ

ازیں مقامی اافراد اور سیاحوں کو بھی یہودی کھانوں سے لطف اندوز ہونے کا

موقع میسر آئیگا۔ ابوظہبی ڈیپارٹمنٹ آف کلچر اینڈ ٹور ازم کی جانب سے ہوٹل

منیجرز کے نام جاری کردہ سرکلر میں مزید کہا گیا ہے وہ یہودی سیاحوں کی

سہولت کی خاطر کوشر پکوان اپنے مینیو کا حصہ بنا ئیں ۔ ہوٹل میں ٹھہرائے گئے

آسٹریلیا کا جلد کورونا ویکسین بنا کر مفت فراہم کرنے کا اعلان

یہودی مہما نوں کے روم سروس مینیو اور فوڈ اینڈ بیوریج آٹ لیٹس بھی اپنی

فہرست میں کوشر کو شامل کریں۔ ہوٹلز انتظامیہ بھی یہودی روایات کے مطابق

’’کوشر‘‘ پکوان تیار کروانے کیلئے کچن میں ایک الگ حصہ مخصوص کریں،

ایسے ملازمین رکھیں جو ’’کوشر‘‘ پکانے کا باقاعدہ سرٹیفکیٹ رکھتے ہو ں۔

یہودیوں کیلئے تیار کی گئی تمام مصنوعا ت پر’’ کوشر کا‘‘ لیبل ضرور لگائیں۔

واضح رہے اسرائیل اور امارات تاریخی امن سمجھوتے پر 15 ستمبر 2020 کو

وائٹ ہاس میں دستخط کریں گے۔

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے توشیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

یہودی کھانا کوشر

اپنا تبصرہ بھیجیں