41

مسئلہ فلسطین کے منصفانہ حل کیلئے مدد کو تیار ہیں، شاہ سلمان کی ٹرمپ کو یقین دہانی

Spread the love

مسئلہ فلسطین منصفانہ حل

واشنگٹن(صرف اردو آن لائن نیوز) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو سعودی فرمانروا شاہ سلمان نے یقین

دلایا ہے کہ وہ مسئلہ فلسطین کو حل کرنے میں پوری مدد دینے کو تیار ہے۔ وائٹ ہائوس ذرائع نے

اس رابطے کی تفصیل بیان کرتے ہوئے بتایا کہ یو اے ای اور اسرائیل کے درمیان سفارتی روابط قائم

کرنے کے فیصلے کے بعد صدر ٹرمپ کا سعودی شاہ سے یہ پہلا رابطہ ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ

توقع کے عین مطابق مشرق وسطیٰ کی صورتحال میں مثبت پیش رفت ہو رہی ہے اور خاص طور پر

زیادہ سے زیادہ عرب ممالک اسرائیل کے ساتھ تعاون کا رویہ اختیار کر رہے ہیں جس سے دوستانہ

تعلقات کے قیام کی راہ ہموار ہو رہی ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ شاہ سلمان نے امریکی صدر کو بتایا کہ

مشرق وسطیٰ کے ممالک سے اسرائیل کے تعلقات کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ فلسطین کا مسئلہ

ہے جسے انصاف کے تقاضوں کے مطابق حل کرنے کی ضرورت ہے۔ اس موقع پر صدر ٹرمپ نے

یو اے ای اور اسرائیل کے درمیان فضائی رابطے میں مدد کے لئے سعودی عرب کا اپنی فضائی

حدود کھولنے کے اقدام کو سراہا۔ صدر ٹرمپ کی کوششوں کے نتیجے میں یو اے ای اسرائیل کے

ساتھ سفارتی تعلقات اور دوستانہ روابط قائم کرنے پر رضا مند ہو گیا تھا۔ اس طرح وہ مصر اور اردن

کے بعد اسرائیل کے وجود کو تسلیم کرنے والا تیسرا ملک بن گیا ہے۔ امریکہ کے سرکاری ذرائع کو

امید ہے کہ بہت جلد سعودی عرب کی قیادت میں مزید عرب اور اسلامی ملک اسرائیل کے ساتھ

باقاعدہ روابط قائم کر لیں گے۔ ان ممالک کو رضا مند کرنے کے لئے امریکہ اسرائیل پر دبائو ڈال رہا

ہے کہ وہ فلسطینی اتھارٹی کے ساتھ دو قومی تصور پر مبنی نیا امن معاہدہ کرنے کے لئے پیش رفت

کرے۔ سعودی شاہ سلمان نے صدر ٹرمپ کو بتایا کہ عرب اور اسلامی ممالک اسرائیل کو اس شرط

پر تسلیم کرنے کو تیار ہو سکتے ہیں اگر وہ فلسطین کو ایک آزاد اور خودمختار ریاست دینے کو تیار

آسٹریلیا کا جلد کورونا ویکسین بنا کر مفت فراہم کرنے کا اعلان

ہو اور 1967ء کی جنگ میں قبضہ کئے جانے والے تمام علاقوں کو خالی کر کے واپس کردے۔ ابھی

تک یو اے اسی کے بعد کسی اور ملک نے اس کی طرح اسرائیل کو تسلیم نہیں کیا۔ تاہم وائٹ ہائوس

ذرائع کے مطابق صدر ٹرمپ کے داماد اور مشیر جیرڈ کشنر نے بتایا ہے کہ چند ماہ کے اندر ایک

اور عرب ملک اسرائیل کو تسلیم کرنے والا ہے تاہم انہوں نے اسی ملک کا نام نہیں بتایا۔ اس دوران

کشنر نے سعوید ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے ساتھ مل کر مسئلہ فلسطین پر امن بات چیت

شروع کرنے پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

مسئلہ فلسطین منصفانہ حل

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے توشیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں