سپریم کورٹ رپورٹس مسترد 72

سندھ حکومت مکمل ناکام ،صوبے کو کون ٹھیک کریگا؟، چیف جسٹس

Spread the love

سندھ حکومت مکمل ناکام

کراچی ( صرف اردو آن لائن نیوز ) چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس گلزار احمد نے سندھ حکومت پر

برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ مکمل تباہی ہے اور سندھ حکومت مکمل ناکام ہوچکی ہے

جب کہ حکمران صرف انجوائے کررہے ہیں، عدالت میں بیان دیتے ہوئے اٹارنی جنرل نے کہا کہ

وفاق کراچی کو بچانے کیلئے مختلف قانونی اور آئینی آپشن سوچ رہا ہے۔سپریم کورٹ کراچی

رجسٹری میں نالوں پر تجاوزات کے خلاف آپریشن کے معاملے پر چیف جسٹس کی سربراہی میں

سماعت ہوئی جس سلسلے میں کمشنر کراچی اور ایڈووکیٹ جنرل سندھ عدالت میں پیش ہوئے۔کمشنر

کراچی نے تجاوزات کے معاملے پر رپورٹ عدالت میں پیش کی جس پر سپریم کورٹ نے عدم

اطمینان کا اظہار کیا۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ کراچی میں 38 بڑے نالے ہیں اور 514 چھوٹے

نالے ڈی ایم سیز کے پاس ہیں، تین بڑے نالوں کی صفائی پر این ڈی ایم اے کام کررہی ہے۔عدالت نے

رپورٹ پر سندھ حکومت اور لوکل گورنمنٹ پر اظہار برہمی کیا۔ چیف جسٹس پاکستان جسٹس گلزار

احمد نے ریمارکس دیے کہ سندھ حکومت نے عوام کے لیے کچھ نہیں کیا، سندھ حکومت کچھ کررہی

ہے اور نہ ہی لوکل باڈی، سارے شہر کے اندر گٹر کا پانی بھرا ہوا ہے، ہر جگہ گلیوں محلوں میں

گٹر کا پانی موجود ہیں، لوگ پتھر رکھ کر گٹر کے پانی پر چلتے ہیں، آپ کی حکومت کو کتنے سال

ہوگئے ہیں، کراچی سے کشمور تک کی صورتحال بدتر ہے، سندھ حکومت مکمل ناکام ہو چکی، آپ

لوگ بیٹھ کر مزے کر رہے ہیں۔چیف جسٹس نے ایڈووکیٹ جنرل سے استفسار کیا کہ کراچی میں

حکومت کی رٹ کہاں ہے، سندھ کو بہتر کون بنائے گا؟کراچی میں روڈ نہیں، بجلی نہیں، پانی نہیں

ہے، کیا دیگر ممالک میں بھی لوگ ان مسائل پر سپریم کورٹ جاتے ہیں، لوگ بیچارے مجبور ہوگئے

ہیں،نالوں پر گھر بنا رہے ہیں، یہاں پر مافیاز بیٹھے ہیں جن کا مقصد صرف کمائی ہے۔

یورو 5پٹرول کا پہلا جہاز پاکستان پہنچ گیا

سندھ حکومت مکمل ناکام

اپنا تبصرہ بھیجیں