112

بلاول کی صحافی مطیع اللہ جان کے گھر آمد ،اغواء اور تشدد کی مذمت

Spread the love

اسلام آباد (صرف اردو آن لائن نیوز)

پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری بارہ کہو کے علاقے میں صحافی مطیع اللہ جان

کی رہائش گاہ پہنچے اور صحافی مطیع اللہ جان سے ملاقات کرکے ان کے اغوا ء اور تشدد پر مذمت

کی۔چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے صحافی مطیع اللہ جان سے ملاقات کرکے ان سے اظہار یکجہتی

کا بھی اظہار کیا ۔ جمعہ کو ملاقات کے دور ان چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے صحافی مطیع اللہ

جان کے اغواء کاروں کو کیفرکردار تک پہنچانے کا بھی مطالبہ کیا ۔چیئرمین بلاول بھٹو زرداری

سے صحافی مطیع اللہ جان نے ان کے اغواء پر فوری آواز بلند کرنے کے حوالے سے اظہار تشکر

کیا ۔چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو صحافی مطیع اللہ جان نے سنسرشپ اور صحافیوں کی

بیروزگاری کے حوالے سے بھی آگاہ کیا۔چیئرمین بلاول بھٹو زرداری سے صحافی مطیع اللہ جان کے

علاوہ صحافی عمرچیمہ اور صحافی اعزاز سید نے بھی ملاقات کی۔چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کے

ہمراہ فرحت اللہ بابر اور سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر نے بھی صحافی مطیع اللہ جان سے ملاقات کی۔

اغوا ہونے والے صحافی مطیع اللہ جان 12 گھنٹے بعد گھر پہنچ گئے

بلاول بھٹو زر داری نے کہاکہ جو صحافی حکومت پر تنقید کرے، است نوکری سے نکلوادینا افسوس

ناک ہے، اب تو یہ فاشسٹ حکومت ویب چینلز پر حکومتی نااہلیوں کو بے نقاب کرنے والے صحافیوں

کو بھی برداشت نہیں کررہی، پی ٹی آئی حکومت اتنی کمزور ہے کہ کسی بھی صحافی کے ایک

تنقیدی ٹویٹ سے بوکھلا جاتی ہے، مجھے اندازہ ہے کہ اس وقت کورٹ بیٹ رپورٹرز زیادہ حکومتی

دباؤ کا شکار ہیں۔ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہاکہ پاکستان پیپلزپارٹی ہر دور میں میڈیا کی

آزادی کے لئے لڑی ہے۔چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہاکہ پاکستان کے میڈیا ورکرز کو ہم کسی

حالت میں تنہا نہیں چھوڑیں گے۔

چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہاکہ پاکستان پیپلزپارٹی ہر دور میں میڈیا کی

آزادی کے لئے لڑی ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں