114

مقبوضہ کشمیر، مسلمانوں کی نسل کشی کا منصوبہ، ہزاروں تربیت یافتہ ہندو انتہا پسند وادی میں داخل

Spread the love

سری نگر(صرف اردو آن لائن نیوز ) مسلمانوں کی نسل کشی

بھارتی حکومت نے مقبوضہ کشمیر میں مسلمانوں کی بڑے پیمانے پر منظم نسل کشی کی تیاریاں

شروع کردیں،بھارتی حکومت نے مقبوضہ وادی میں ہندوؤں کو بسانے کی راہ ہموار کرنے کے لیے

30 ہزار سے زائد ہندو انتہا پسندوں کو کشمیر بھیج دیا۔کشمیر میڈیا سروس کی رپورٹ کے مطابق

بھارت سے آئے ہوئے انتہا پسند منصوبے کے تحت مسلم آبادی پر حملے کریں گے اور فسادات کے

نام پر کشمیری مسلمانوں کی نسل کشی بھی کی جائے گی۔ رپورٹ کے مطابق بھارت سے آئے ہوئے

ہزاروں انتہا پسند تربیت یافتہ ہیں، انہوں نے مختلف علاقوں میں ٹھکانے بھی بنا لیے ہیں۔ کمشیر میڈیا

سروس کے مطابق بھارتی فوج روزانہ کی بنیاد پر بسوں اور طیاروں کے ذریعے راشٹریہ سویم

سیوک سنگھ (آر ایس ایس)، وشوا ہندو پریشد ،شیو سینا اور ہندو واہنی کے تربیت یافتہ دہشت گردوں

کو مقبوضہ وادی میں منتقل کررہی ہے، یہ افراد اسلحے کے استعمال اور قتل عام کے لیے تربیت

یافتہ ہیں۔ دوسری جانب مشعال ملک کا کہنا تھا کہ بھارت مقبوضہ وادی میں کشمیریوں کی نسل کشی

بی جے پی وزیر کی بھارت میں مسلمانوں کی نسل کشی کی دھمکی

کررہا ہے، مقبوضہ کشمیر میں مظالم بڑھتے جارہے ہیںِ، مودی مقبوضہ کشمیر میں آرایس ایس کے

لوگوں کیلئے2 لاکھ گھربنارہا ہے۔ اْن کا کہنا تھا کہ ’بھارتی فوج کیکوروناکیدوران مزیدمظالم بڑھے

ہیں، حریت رہنماؤں کو بند کیا ہوا ہے جبکہ بزرگ رہنما سید علی گیلانی صاحب کو بھی نظر بند کیا

ہوا ہے‘۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر کے اکثریتی علاقوں میں

کرونا وائرس کی روک تھام کے نام پر لاک ڈاؤن کررکھا ہے جس کی وجہ سے لاکھوں کی تعداد میں

مظلوم کشمیری گھروں میں غیر اعلانیہ نظر بند ہیں۔

جبکہ بزرگ رہنما سید علی گیلانی صاحب کو بھی نظر بند کیا

ہوا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں