petrol 124

وزیر اعظم کا پٹرول کی قلت پر اظہا برہمی ، کارروائی کا حکم

Spread the love

اسلام آباد(صرف اردو آن لائن نیوز) پٹرول کی قلت

وفاقی کابینہ کے منگل کو ہونے والے اجلاس میں ملک کے مختلف حصوں میں پٹرول کی

قلت کا سخت نوٹس لیاگیا ،وزراء نے ذمہ داروں کیخلاف فوری کارروائی کا مطالبہ کیا اس

پر وزیراعظم عمران خان نے بھی پٹرول بحران پر سخت برہمی کا اظہار کیا اور کہاکہ

ایک روپیہ قیمت بڑھائیں تو ہر چیز مہنگی ہوجاتی ہے اب 7روپے گزشتہ ماہ کم کئے

مہنگائی کم ہوئی نہ ہی پٹرول لوگوں کو سستے داموں دیا جارہا ہے جنہوں نے یہ مصنوعی

بحران پیدا کیا ان کیخلاف سخت کارروائی ہوگی ۔ وزراء نے پٹرول بحران پر وفاقی وزیر

برائے توانائی عمر ایوب سے سخت سوالات کئے اور کہا کہ بتایا جائے کہ یہ مصنوعی

بحران کون پیدا کررہا ہے کیونکہ وزارت پٹرولیم کی غفلت سے عوام رسوا اور خوار

ہورہے ہیں قیمتوں میں کمی میں فائدے کی بجائے عوام کو نقصان ہورہا ہے ۔ پٹرول پمپوں

کے باہر لوگوں کی طویل قطاریں ہیں اس سے حکومت کی بدنامی ہورہی ہے۔ وفاقی وزیر

مراد سعید نے کہا کہ متعلقہ وزارت اور وزیر کو بری الذمہ قرار نہیں دیا جاسکتا اجلاس

میں فیصلہ کیا گیاکہ اوگرا سمیت جوبھی ذمہ دارہوا اسے رعایت نہیں برتی جائے گی ۔

وزراء نے یہ بھی کہا کہ پٹرول کا وافر ذخیرہ موجود ہے مگر اس کے باوجود مصنوعی

قلت پیدا کی گئی وفاقی وزیر برائے ایوی ایشن غلام سرور خان نے کہا کہ کہا جارہا ہے کہ

ملک میں صرف سات روز کا پٹرول کا ذخیرہ ہے ۔ وفاقی وزیر برائے توانائی عمر ایوب

نے کہا کہ ملک میں سوا دو لاکھ میٹرک ٹن سے زائد پٹرول کا ذخیرہ موجود ہے عالمی

منڈی میں پٹرول کی قیمت بڑھی تو کچھ کمپنیوں نے خریداری روک دی جس پر ان کیخلاف

کارروائیاں کی جارہی ہیں اور جن آئل کمپنیوں نے سٹاک ختم کیا ان کے لائسنس منسوخ

سستا پٹرول نایاب، عوام مہنگائی کی چکی میں پس گئے

کئے جارہے ہیں اوگرا آئل کمپنیوں کیخلاف ایکشن لے رہا ہے معاون خصوصی ندیم بابر

نے کہا کہ ایک دو روز میں وافر مقدار میں پٹرول دستیاب ہوگا ۔ ذرائع کے مطابق اجلاس

میں شوگر انکوائری رپورٹ کے تناظر میں وزیراعظم کے اقدامات اور فیصلوں کی توثیق

کی گئی اور فرانزک رپورٹ کی روشنی میں کارروائی کی سفارشات کو منظور کرلیاگیا ۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ بلاامتیاز احتساب تحریک انصاف کے منشور کا حصہ ہے پی ٹی

آئی کو احتساب کے منشور پر عوام نے ووٹ دیا کسی کو بھی اختیارات کے ناجائز

اختیارات سے دولت بنانے کی اجازت نہیں دی جائے گی ۔ وزیراعظم نے کہا کہ بنیادی

اشیاء ضروریہ کی مناسب قیمتوں پر دستیابی اولین ترجیح ہے تحقیقاتی رپورٹ کی روشنی

میں عوام کی جیب پر ڈاکہ ڈالنے والوں کیخلاف کاررورائی کیلئے متعلقہ اداروں کو کیسز

بھجوادیئے ہیں سیاست کو کاروبار کیلئے استعمال کرنے والوں سے احتساب لیا جائیگا ۔

وزیراعظم نے کہا کہ پٹرول کی مصنوعی قلت کی یہ صورتحال ناقابل برداشت ہے اور اس

حوالے سے سخت فیصلے آئندہ چوبیس گھنٹوں میں کئے جائینگے اس موقع پر وفاقی وزراء

مراد سعید اور فیصل واڈا نے پرائیویٹ ہسپتال مافیا کیخلاف بھی ایکشن کا مطالبہ کیا اور

کہا کہ پرائیویٹ ہسپتال مافیا غریب عوام کو لوٹنے کی منصوبہ بندی کررہا ہے ۔ پرائیویٹ

ہسپتال مافیا کورونا کے چکر میں عوام کی جیبوں تک ہاتھ ڈال رہے ہیں لہذا ضروری ہے

کہ صوبائی حکومتوں کو انتظامی معاملات بہتر کرنے کی ہدایت کی جائے ۔

پٹرول کی قلت

اپنا تبصرہ بھیجیں