mic pompio 172

پومپیو کے الزامات پر چین کا سخت ردعمل

Spread the love


بیجنگ (صرف اردو ڈاٹ کام آن لائن نیوز) (پومپیو الزامات چین ردعمل)ایک باقاعدہ پریس کانفرنس میں ،چین کی وزارت خارجہ کی

ترجمان ہوا چھون اینگ نے بڑی تعداد میں حقائق اور اعداد و شمار کے ساتھ مائیک پومپیو کے الزامات کا

جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس وقت اعلی سطح کی بایو سیفٹی کی حامل پی فور لیبارٹریز میں صرف دو چین

میں موجود ہیں۔جبکہ امریکہ میں اس طرح کی تیرہ لیبارٹریز موجود ہیں یا زیر تعمیر ہیں۔دوسری طرف امریکہ

میں 1495 پی تھری سطح کی حیاتیاتی لیبارٹریز ہیں۔ان میں یوکرین ، قازقستان اور دیگر سابقہ سوویت علاقوں

اور دنیا بھر میں امریکہ کی حیاتیاتی لیبارٹریز شامل نہیں ہیں۔ امریکی آڈٹ آفس کی 2009 کی ایک رپورٹ

کے مطابق ، امریکی پی تھری حیاتیاتی لیبارٹریز میں گزشتہ 10 سالوں کے دوران 400 حادثات پیش آئے ہیں۔

حیاتیاتی لیبارٹریوں کی حفاظت امریکی ریگولیٹرز کے نزدیک سب سے بڑا خطرہ ے۔اس کی ایک حالیہ مثال

کورونا، فاقہ کش مزدور اور فلاحی اداے

یہ ہے کہ امریکی فوج کے سب سے بڑے حیاتیاتی اور کیمیائی ہتھیاروں کے تحقیقی و ترقیاتی مرکز میری لینڈ

میں واقع فورٹ ڈیٹرک بائیوولوجیکل بیس کو گزشتہ سال جولائی میں بند کیا گیا۔ اس کے بعد ، قریبی علاقے

میں ایک ناقابل تصدیق “ای سگریٹ بیماری” پھیل گئی۔ہوا چھون اینگ نے اس بات کی نشاندہی کی کہ مزکورہ

واقعات کے بارے میں امریکہ میں اور بین الاقوامی سطح پر بہت سارے شکوک و شبہات پائے جاتے ہیں ،

لوگوں نے امریکی حکومت سے فورٹ ڈیٹرک بایولوجیکل بیس کو بند کرنے کی اصل وجہ بتانے اور بندش اور

نوول کورونا وائرس کے درمیان تعلق کی تحقیق کا مطالبہ کیا ہے۔کیا امریکہ فورٹ ڈیٹرک بایولوجیکل بیس اور

پوری دنیا میں قائم اپنی حیاتیاتی لیبارٹریز کو بین الاقوامی آزادانہ تحقیقات کے لئے کھول سکتا ہی کیا امریکہ

اپنے ملک میں انسداد وبا کی سرگرمیوں اور وبا کے ماخذ کی تحقیق کے لئے ڈبلیو ایچ او اور دوسری متعلقہ

بین الاقوامی تنظیموں کو دعوت دی سکتا ہی کیا امریکہ شفافیت کی مثال قائم کر سکتا ہے۔

پومپیو الزامات چین ردعمل پومپیو الزامات چین ردعمل

فیس بک پر ہمیں فالو اور لائیک کرنے کے لیے یہاں کلک کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں