136

پاور سیکٹر سے متعلق انکوائری رپورٹ پبلک کرنے کی منظوری

Spread the love

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) وفاقی کابینہ نے پاور سیکٹر سے متعلق انکوائری رپورٹ پبلک کرنے کی منظوری دے دی۔وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں تعمیراتی شعبے کو سیلز ٹیکس کی چھوٹ دینے کی منظوری دی گئی، ذرائع کے مطابق کابینہ نے ریٹائرمنٹ کے بعد سرکاری رہائشگاہ سے متعلق پالیسی پر نظرثانی کی بھی منظوری دی،

رمضان میں کورونا پھیلا تو مساجد بند کر دینگے ، عمران خان

وقت سے پہلے ریٹائر ہونے والے ملازمین 6 ماہ سے زیادہ سرکاری رہائش استعمال نہیں کر سکیں گے۔کابینہ نے مسابقتی کمیشن کی تشکیل نو سے متعلق سفارشات کی بھی منظوری دے دی، وفاقی کابینہ نے اقلیتوں کے قومی کمیشن کی تشکیل نو کی بھی منظوری دی، کابینہ کمیٹی برائے قانون سازی اجلاس میں کیے گئے فیصلوں کی بھی توثیق کی۔کابینہ کے اجلاس کے بعد صحافیون کو بریفنگ دیتے ہوئے معاون خصوصی اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے پاور سیکٹر سے متعلق انکوائری کمیشن بنانے کا فیصلہ کیا ہے

انہوں نے کہا کہ کہیں بھی گٹھ جوڑ یا ملی بھگت کو برداشت نہیں کیا جائے گا، مسابقتی کمیشن کو مضبوط ادارہ بنایا جائے گا،اقلیتوں کے کمیشن میں اقلیتوں کو زیادہ نمائندگی دی جائے گی، تعمیراتی شعبے کے حوالے سے حکومت نے اہم اقدامات کیے ہیں، سعودی عرب کو 10لاکھ کلوروکین کی گولیاں دی جائیں گی،ترکی، اٹلی، امریکا اور دوسرے ملکوں کو بھی کلوروکین فراہم کی جائیگی،شفاف طرز حکومت تحریک انصاف کی اہم ترجیح ہے۔وفاقی کابینہ نے پاور سیکٹر اسکینڈل پر انکوائری کمیشن بنانے کی منظوری دے دی۔ کمیشن انکوائری ایکٹ 1952 کے تحت قائم کیا جائے گا جو انکوائری کمیٹی کی رپورٹ کی روشنی میں مزید تحقیقات کرے گا،

اور بجلی کے منصوبوں سے متعلق فرانزک آڈٹ کے بعد رپورٹ پیش کرے گا۔دوسری جانب وفاقی کابینہ میں پاور سیکٹر سے متعلق انکوائری رپورٹ پر بریفنگ کے دوران وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور خسرو بختیار، وزیراعظم عمران خان کے مشیربرائے تجارت عبدالرزاق داؤد اور معاون خصوصی ندیم بابر موجود نہ تھے۔ انہوں نے بتایا کہ کابینہ نے مسابقتی کمیشن کی تشکیل نو سے متعلق سفارشات کی منظوری دیدی، کمیشن کو جدید دور کے تقاضوں کے مطابق ری اسٹرکچر کیاجائے گا،

مسابقتی کمیشن ماضی میں مخصوص شخصیات کو تحفظ دیتا رہا، اس کیخلاف 27درخواستیں دائر ہوچکی ہیں، مسابقتی کمیشن کے اسٹیک ہولڈر نے ریاست کے27ارب روپے واپس کرنے ہیں۔معاون خصوصی نے بتایا کہ وفاقی کابینہ نے اقلیتوں کے قومی کمیشن کی تشکیل نو کی بھی منظوری دی ہے جس میں اقلیتوں کی اکثریت ہوگی اور اقلیتی برادری سے ہی چیئرمین منتخب ہوں گے۔ فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نیاس عزم کو دہرایا کہ عوام کو کسی کے ہاتھوں یرغمال نہیں ہونے دیں گے، کہیں بھی گٹھ جوڑ یا ملی بھگت کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔معاون خصوصی نے کہا کہ وفاقی کابینہ نے اوگرا آرڈیننس میں ترامیم کے فیصلے کی توثیق کی،وزیراعظم نے اس عزم کو دہرایا کہ عوام کو کسی کے ہاتھوں یرغمال نہیں ہونے دینگے،

وزیراعظم نے کہا کہ مسابقتی کمیشن کو مضبوط ادارہ بنایا جائے گا،مسابقتی کمیشن میں افراد یا اداروں کے مفادات کا تحفظ کرنیوالوں کو ہٹایا جائیگا،سرکاری ملازمین کی سرکاری رہائشگاہوں سے متعلق یکساں پالیسی کے حوالے سے فیصلہ ہوا،وفاقی کابینہ نے اقلیتوں کے بارے میں کمیشن کی تنظیم نو کی منظوری دی،کمیشن میں اقلیتوں کو زیادہ نمائندگی دی جائے گی،آئین پاکستان میں اقلیتوں کے حقوق کو مکمل تحفظ دیا گیا ہے،

ملکی ترقی میں اقلیتی برادری کا اہم کردار ہے۔ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ تعمیراتی شعبے کے حوالے سے حکومت نے اہم اقدامات کیے ہیں،تعمیراتی صنعت کے ساتھ 40سے زائد شعبے منسلک ہیں،اس شعبے کی بہتری سے معاشی سرگرمیاں بڑھیں گی،کابینہ کی توانائی کمیٹی کی سفارشات بھی اجلاس میں پیش کی گئیں،وزیر توانائی 2ہفتے میں ری سٹرکچرنگ اور اصلاحات کا منصوبہ پیش کرینگے،بجلی چوری اور لائن لاسز روکنے کیلئے ٹیکنالوجی کے استعمال کو فروغ دیا جائیگا۔انہوں نے کہا کہ سعودی عرب کو 10لاکھ کلوروکین کی گولیاں دی جائیں گی،ترکی، اٹلی، امریکا اور دوسرے ملکوں کو بھی کلوروکین فراہم کی جائیگی،شفاف طرز حکومت تحریک انصاف کی اہم ترجیح ہے۔

پاور سیکٹر

اپنا تبصرہ بھیجیں