کراچی مارکیٹ 167

8 گھنٹے کاروبار کی اجازت

Spread the love

کراچی(نامہ نگار)(8 گھنٹے کاروبار کی اجازت)سندھ حکومت نے تاجر رہنماؤں کی مشاورت سے دکانیں اور بازار کھولنے کے لیے حکمت عملی مرتب کرلی، بازار اور دکانیں دن میں 8 گھنٹے کے لیے کھولنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔تفصیلات کے مطابق سندھ حکومت نے دکانیں اور بازار کھولنے کے لیے پلان طے کرلیا، پلان سندھ حکومت نے تاجر رہنماؤں کی مشاورت سے مرتب کیا۔ پلان پر عملدر آمد وزیر اعلیٰ سندھ کی اجازت سے مشروط ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ کراچی کے تجارتی مراکز اور دکانیں کھولنے کے لیے 13 شعبوں کا تعین کیا گیا ہے، کاروبار کی نوعیت کے لحاظ سے 13 سیکٹرز 3، 3 درجوں میں تقسیم کیے گئے ہیں۔

رائی گیٹ ایونیو، سکنک اورمائیکل کی گرل فرینڈ شیلے

ذرائع کے مطابق ہر درجے میں شامل شعبہ ہفتے میں 2 روز کھولا جائے گا، پہلے اور دوسرے درجے میں 4، 4 اور تیسرے میں 5 شعبے شامل ہیں، بازار اور دکانیں دن میں 8 گھنٹے کے لیے کھولی جائیں گی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ مرغی، گوشت کی دکانیں اور بیکریاں ہفتے میں 2 روز بند رکھنے کی تجویز دی گئی ہے۔ دودھ، سبزی، پھل کی دکانوں اور میڈیکل اسٹور کو پورا ہفتے کھولنے کی اجازت دی گئی ہے۔ذرائع کے مطابق بازار کی دکانیں کھولنے کے لیے ایس او پی بدھ تک تیار کر لیا جائے گا۔ سندھ حکومت عید شاپنگ کے لیے 15 رمضان کے بعد مزید نرمی کرے گی، عید شاپنگ کے لیے نرمی انتظامیہ سے تعاون اور ایس او پی پر عملدر آمد سے مشروط ہوگی۔ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ پبلک ٹرانسپورٹ کے لیے بھی جلد نرمی کا اعلان کیا جائے گا۔

میکسم گورکی کا شہرہ آفاق ناول ’’ماں‘‘ پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں

واضح رہے کہ کراچی میں تاجران نے 14 اپریل کے بعد دکانیں کھولنے کا عندیہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ اگر ان کو دکانیں کھولنے کی اجازت نہ دی گئی تو وہ تمام ملازمین کو نکال دیں گے یا اپنی دکانوں کی چابیاں وزیر اعلی کو پیش کر دیں گے گورنمنٹ انہیں تنخواہ دے تیسری صورت میں گورنمنٹ بیروز گار ہونے والوں کے لیے روزگار کا بندوبست کرے۔

یہ بھی یاد رہے کہ ملک کے وزیر اعظم عمران خان پہلے دن سے کہہ رہے ہیں کہ ہمارے پاس اتنے وسائل نہیں کہ ہم لوگوں کو ضروریات زندگی مہیا کر سکیں۔ ساتھ انہوں نے یہ بھی کہا کہ اگر کوئی راستہ نا نکالا گیا تو خدشہ ہے کہ کرونا سے زیادہ لوگ بھوک اور افلاس سے مر سکتے ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں