پرانا لاہور شعیب رضا 217

پرانا لاہور: ترجمہ: پروفیسر شعیب رضا

Spread the love

نام کتاب: پرانا لاہور

مصنف: کرنل ایچ آر گولڈنگ

ترجمہ: پروفیسر شعیب رضا

تبصرہ: سید فیضان نقوی، (المعروف لاہور کا کھوجی) چیئرمین لاہور شناسی فاونڈیشن لاہور

دور حاضر میں لاہور ایک مسلسل قابل بحث موضوع بن کر رہ گیا جس پر جتنی بھی بات کی جائے کم ۔کیونکہ اس خطے کی گذشتہ تاریخ میں اتنے کردار ، ادوار کی اتنی نشانیاں اور واقعات ہیںجس پر جتنی بھی تحقیق کی جائے وہ کبھی مکمل نہیں ہوتی ایک جانب سے شروع کی جائے تو اس میں سے ہی مزید موضوعات نکل آتے ہیں۔ لاہور یات اب تاریخ کا باقاعدہشعبہ بن چکا ہے۔ جس پر محققین طبع آزمائی میں مصروف ہیں جن کی ایک طویل فہرست ہے۔ ویسے تو لاہور کے موضوع پر سو سے زائد کتابیں لکھی جا چکی ہیں جو بھی فقط لاہور کے بارے میں ایک کتاب پڑھ لے اس کو لاہور کی تاریخ کا ایک ایسا چسکا لگ جاتا ہے وہ لاہور کی تاریخ پر باقی کتابوں کا مطالعہ کرنے کی کوشش کرتا ہے۔

یہ بھی پرھیں: سیر لاہور: سردار منشی گلاب سنگھ

لاہور کی تاریخ پر اردو زبان میں خاصا کام نظر آتا ہے لیکن اس کے ساتھ ساتھ انگریز دور میں یہاں کے مقیم انگریز افسران نے بھی اس شہر کی محبت سے مجبور ہو کر قلم اٹھایا۔ اور انگریزی میں کئی کتابیں تحریر کی ہیں جن کو سند کا درجہ حاصل ہے۔ کہنے کو تو ہمارے ملک پاکستان کی قومی زبان اُردو ہے لیکن اس کے نفاذ میں سیاسی مصلحتیں اور ذریعہ تعلیم میں تفریق ہونے کے باعث ہماری عوام کی اکثریت انگریزی زبان کو سمجھنے سے قاصر ہے۔ آج ضرورت اس امر کی ہے کہ انگریزی زبان میں لکھی کتابوں کو اردو زبان میں مقامی لوگوں اور محققین کے استفادے کی خاطر ترجمہ کر کے شائع کیا جائے۔ زیر نظر کتاب کرنل ایچ آر گولڈنگ کی کتاب اولڈ لاہور کا ترجمہ میرے مربی و محسن جناب پروفیسر شعیب رضا صاحب نے مکمل کیا ہے ۔لاہو ر کے بارے میں تحقیق کرتے ہوئے اس بات کی اشد ضرورت رہتی تھی کہ لاہور میں برطانوی دور کی عمارات کے بارے میں کوئی مفصل کتاب ہو۔ اولڈ لاہور نامی کتاب انگریزی میں مستند دستاویز ہے جس میں برطانوی عہد کی عمارات اور مقامات کے بارے میں بہت اچھی تفصیلات درج ہیں۔

جب یہ کتاب میرے مطالعے میں آئی تو میری بہت خواہش تھی تاریخ کے شائقین اور محققین کے لئے یہ کتاب مقامی زبان میں بھی ہو۔ تاکہ اس کو پڑھ کر مزید تاریخ کے بارے میں معلومات حاصل کر سکیں۔ اس غرض سے شعیب رضاصاحب سے رابطہ کیا اور اس خواہش کا اظہار کیاکہ اس کتاب کا ترجمہ کر دیں انہوں نے فورا لبیک کہہ کر حامی بھر لی۔ لیکن ان کی شدید مصروفیات کے باعث کئی بار یقین دہانی کے باوجود یہ کام کافی متاثر ہوا۔ لیکن آخر کار اکتوبر 2019 ءمیں یہ کام پایہ تکمیل کو پہنچا اور اس کے مقامات اور تاریخ سے متعلق نظر ثانی کی سعادت بھی بندہ نا چیز کو حاصل ہوئی۔ امید کرتا ہوں قارئین اس سے ضرور لطف اٹھانے کے ساتھ بطور ریفرنس بک کے ا س سے استفادہ کر یں گے اور آخر میں پروفیسر شعیب رضا صاحب کا انتہائی مشکور ہوں جنہوں نے میری خواہش کی تکمیل کرنے میں اپنا قیمتی وقت صرف کر کے تاریخ دوستوں کو ایک اچھی کتاب کا تحفہ دیا ۔ اگر کہیں غلطی نظر آئے تو نشاندہی کر کے شکریہ کا موقع دیں۔

فیس بک پر ہمیں فالواور لائیک کرنے کے لیے یہاں کلک کریں

پرانا لاہور شعیب رضا پرانا لاہور شعیب رضا پرانا لاہور شعیب رضا

اپنا تبصرہ بھیجیں