80

چیف جسٹس نے کرونا کے باعث قیدیوں کی رہائی کے تمام فیصلے معطل کر دئیے

Spread the love

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر ) سپریم کورٹ نے کرونا کے باعث ہائی کورٹس کی جانب سے قیدیوں کی ضمانتوں پر رہائی کے تمام فیصلے معطل کر دئیے۔ چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دئیے کہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے کس اختیار کے تحت قیدیوں کی رہائی کا حکم دیا، ہائی کورٹس سو موٹو کا اختیار کیسے استعمال کر سکتی ہیں۔، ایسا نہیں ہو سکتا کہ آفت میں لوگ اپنے اختیارات سے تجاوز کریں۔اٹارنی جنرل خالد جاوید خان نے عدالت کو بتایا کہ قیدیوں کی رہائی کے حوالے سے ہائی کورٹس مختلف فیصلے دے رہی ہیں، مدعی کے اعتراضات کوئی نہیں سن رہا، سپریم کورٹ کرونا وائرس کی وجہ سے قیدیوں کی رہائی کے حوالے سے گائیڈ لائن طے کرے۔چیف جسٹس نے کہا کہ ہائیکورٹ نے دہشتگردی کے ملزمان کے علاوہ سب کو رہا کردیا، ایسی صورت میں شکایت کنندہ کے جذبات کیا ہوں گے۔ عدالت نے وفاق، ایڈووکیٹ جنرلز، آئی جی اسلام آباد، انتظامیہ صوبائی سیکرٹری داخلہ، آئی جیز جیل خانہ جات، اے این ا یف، پراسیکیوٹر جنرل نیب اور ایڈووکیٹ جنرل گلگت بلتستان کونوٹسزجاری کرتے ہوئے سماعت یکم اپریل تک ملتوی کردی۔شیخ ضمیر حسین عدالتی معاون ہوں گے۔

کرونا کے وار جاری، ملک بھر میں 22 افراد جاں بحق

۔اٹارنی جنرل خالد جاوید خان نے عدالت کو بتایا کہ قیدیوں کی رہائی کے حوالے سے ہائی کورٹس مختلف فیصلے دے رہی ہیں، مدعی کے اعتراضات کوئی نہیں سن رہا، سپریم کورٹ کرونا وائرس کی وجہ سے قیدیوں کی رہائی کے حوالے سے گائیڈ لائن طے کرے۔چیف جسٹس نے کہا کہ ہائیکورٹ نے دہشتگردی کے ملزمان کے علاوہ سب کو رہا کردیا، ایسی صورت میں شکایت کنندہ کے جذبات کیا ہوں گے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ ہائیکورٹ نے دہشتگردی کے ملزمان کے علاوہ سب کو رہا کردیا، ایسی صورت میں شکایت کنندہ کے جذبات کیا ہوں گے۔ عدالت نے وفاق، ایڈووکیٹ جنرلز، آئی جی اسلام آباد، انتظامیہ صوبائی سیکرٹری داخلہ، آئی جیز جیل خانہ جات، اے این ا یف، پراسیکیوٹر جنرل نیب اور ایڈووکیٹ جنرل گلگت بلتستان کونوٹسزجاری کرتے ہوئے سماعت یکم اپریل تک ملتوی کردی۔شیخ ضمیر حسین عدالتی معاون ہوں گے

چیف جسٹس نے کرونا

اپنا تبصرہ بھیجیں