صالح بن طاہر بنتن 60

حج منسوخ نہیں کیا، وزیر حج صالح بن طاہر بنتن

Spread the love

فیصل آباد(بیورو رپورٹ)سعودی عرب کے وزیر حج و عمرہ ڈاکٹر صالح بن طاہر بنتن نے کہا ہے کہ سعودی حکومت نے اس سال حج منسوخ نہیں کیا بلکہ وقتی طور پر انتظامات کو موخر کیا ہے ۔ حج آرگنائزرز ایسوسی ایشن آف پاکستان کے سابق چیئر مین حافظ شفیق کاشف کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت کی ساری توجہ اس وقت کرونا وائرس بحران پر مرکوز ہے عالمی ادارہ صحت و دیگر مقامی و بین الاقوامی اداروں سے ملکر سعودی عرب کے عوا م اور غیر ملکی شہریوں کے تحفظ کے لیے تمام ذرائع و وسائل بروئے کار لانا مصروف عمل ہیں لہٰذا حج انتظامات کا فیصلہ موجودہ صورت حال ختم ہونے کے بعد کیا جائے گا انہوں نے کہا کہ اسلامی تعلیمات کے مطابق زائریں کی سلامتی اولین ترجیح ہے لہذا مسلمان افواہوں پر یقین نہ رکھیں ۔انہوں نے کہا کہ سعودی مملکت دنیا کا پہلا ملک ہے جوا پنے عطیات کے ذریعے ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے ساتھ ملکر پوری انسانیت کے لیے کرونا وائرس سے تحفظ کے لیے خدمات سر انجام دے رہا ہے ۔

پاکستان نے کرونا سے بچاؤ کا لباس تیار کر لیا

واضح رہے کہ کچھ دنوں سے سوشل میڈیا پر یہ پروپیگنڈہ کیا جا رہا ہے کہ سعودی حکومت سے اس سال حج منسوخ کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے اس سے قبل بھی سعودی حکومت نے وضاحت کی تھی کہ فی الحال انتظامات موخر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ پاکستان کے وزیر مذہبی امور پیر نورالحق قادری نے بھی گذشتہ دنوں اپنے بیان میں یہ بات واضح کی تھی کہ سعودی حکومت نے ابھی صرف حج آرگنائزرز کے ساتھ کسی بھی قسم کے معاہدے کرنے سے روکا ہے وہ اپنے بیان میں یہ بھی کہہ چکے ہیں کہ سعودی حکومت کی طرف سے انہیں باقاعدہ حج 2020 موخر کرنے کے لیے کوئی نوٹس نہیں دیا اور ساتھ ہی انہوں نے صالح بن طاہر کے پریس کانفرنس کا حوالہ بھی دیاتھا۔

تمام خبریں ہمارے فیس بک پیج پر بھی پڑھ سکتے ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں