152

پاکستان میں کورونا وائرس کے 4 ہزار سے زائد مشتبہ کیسز سامنے آ گئے

Spread the love

اسلام آباد، کراچی ، لاہو (سٹاف ، جنرل رپورٹر ز ) ملک بھر میں کرونا وائرس سے مزید195نئے متاثرہ افراد سامنے آنے سے مجموعی تعد اد 690 ہوگئی، سندھ میں 357، پنجاب میں 104، بلوچستان میں مزید105، خیبر پختونخوا میں 27، گلگت بلتستان میں 30، اسلام آباد میں 10 اور آزاد کشمیر میں ایک کیس سا منے آگئے جبکہ 5 افراد صحت یاب ہو ئے ہیں ،اللہ تعالی کے فضل وکرم سے ہفتہ کے روز کرونا سے متاثرہ کسی بھی شہری کے موت کے منہ میں جانے کی اطلاع نہیں ملی، جبکہ وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا ہے کہ پاکستان میں اب تک کورونا وائرس کے 4 ہزار سے زائد مشتبہ کیسز سامنے آ چکے ہیں ۔

گرفتاری سے ڈرنے والانہیں, شہبازشریف

کرونا وائرس کے پیش نظرحکومت نے آج سے دو ہفتوں کیلئے دنیا بھر کیساتھ فضائی آپریشن مکمل بند کرنے جبکہ صوبہ سندھ اور بلوچستان کے بعد پنجاب حکومت نے صوبے بھر میں آج سے شاپنگ مالز اور سیاحتی مقامات دو روز کیلئے بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق پنجا ب کے 104 مریضوں میں 71 زائرین، 15 لاہور، 2 ملتان، 3 مظفر گڑھ، 3 گجرات، 1 جہلم اور ایک راولپنڈی کا شہری شامل ہے جبکہ لاہور کے میو ہسپتال میں 10 تصدیق شد ہ مریض زیر علاج ہیں۔ بتایا گیا ہے راولپنڈی میں سا منے آنیوالا پہلا مریض چند روز قبل دبئی سے واپس لوٹا تھا۔محکمہ صحت سندھ کے مطابق سندھ میں 105 مزید زائرین میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوئی، ابتک تفتان سے سکھر آنے والے 559 زائرین کے ٹیسٹ کئے گئے جن میں سے 166 زائرین میں کرونا کی تصد یق اور 242 کے ٹیسٹ منفی آئے۔ محکمہ صحت سندھ کے مطابق سندھ میں کرونا وائرس سے 357 افراد متاثر ہوئے، 3 صحتیاب جبکہ ایک شخص نے دم توڑا، کرونا وائرس کے 353 مریض زیر علاج ہیں، کراچی میں اب تک 101 کرونا وائرس کے کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں۔

بلوچستان ہیلتھ ڈائریکٹوریٹ کے مطابق صوبے میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد بڑھ کر 104 ہوگئی ہے، مزید 11 کیسز سامنے آئے ہیں۔ادھر وزیراعظم کے مشیربرائے قومی سلامتی معید یوسف نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے پا کستا ن میں ہرقسم کا فضائی آپریشن 2 ہفتے کیلئے بند ،صرف کارگو کے جہازوں کو پاکستان آنے کی اجازت ہونے کا اعلان کرتے ہوئے کہا فلائٹ آپریشن آج سے 4 اپریل تک بند رہے گا ۔ فیصلہ وزیراعظم عمران خان کی مشاورت کے بعد لیا گیا ہے۔ سول ایوی ایشن نے تمام ایئرلائنز کو مراسلہ جاری کردیا ہے۔ترجمان ایوی ایشن ڈویژن کا کہنا ہے وی وی آئی پی فلائٹس پابندی سے استثنیٰ ہوگا،

غیرملکی ایئرلائن چارٹرز پربھی پابندی عائد ہوگی جبکہ اسپیشل طیارے پرفضائی آپریشن معطلی کا اطلاق نہیں ہوگا، اسپیشل طیارے پر آنیوالے مسافروں کی سکریننگ کی جائیگی۔ مشیر صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا تھا گزشتہ روز نیشنل کو آرڈینیشن کمیٹی تشکیل دی گئی جس کا مقصد تمام صوبوں کے درمیان معلومات کے تبادلے کا نظام ہے، کمیٹی کرونا وائرس کی صورتحال پر نظر رکھے گی۔ کرونا وائرس سے متعلق اعداد وشمار کو ایک جگہ جمع ، وفاق اور صوبوں میں روابط کو مضبوط بنایا جا رہا ہے۔انکا کہنا تھا گزشتہ 24 گھنٹوں میں انٹری پوائنٹس پر 13ہزار سے زائد لوگوں کی اسکریننگ کی گئی جبکہ ایران سے آنیوالے 3 ہزار 378 افراد مختلف قرنطینہ سینٹرز میں موجود ہیں۔ پاکستان میں کرونا وائرس کے 4 ہزار 46 مشتبہ کیسز سامنے آئے، اور اب تک پاکستان میں داخل ہونیوالے 14 لاکھ افراد کی اسکریننگ کی جا چکی ہے۔

دوسری طرف وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد اور صوبائی وزیر خزانہ مخدوم ہاشم بخت جواں، صوبائی وزیر میاں اسلم اقبال کیساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے اعلان کیا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بز د ار کے حکم پر آج رات 9 بجے تا منگل صبح 9 بجے تک شاپنگ مالز بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اس کولاک ڈاؤن نہیں کہا جا سکتا، سماجی میل جول میں فاصلے ہی وبا سے بچاؤ کا بہترین طریقہ ہے۔ شہری آئندہ 2 روز اپنے گھروں میں رہیں، میڈ یکل سٹورز، سبزی منڈی، کریانہ سٹورز کھلیں رہیں گے۔ پبلک ٹرانسپورٹ پر کوئی پابند ی نہیں کی جا رہی۔ بیکریز،دودھ کی دکانیں، پولٹری کی دکانیں کھلی رہیں گی ۔ اقتصادی پیکیج کے صوبائی وزیر خزانہ مخدوم ہاشم بخت جواں کی سربراہی میں کمیٹی کام کر رہی ہے۔صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا تھا پنجاب میں کرونا مریضوں میں کسی کی حالت تشویشناک نہیں ، قرنطینہ سینٹرز میں مکمل سہولتیں فراہم کی جا رہی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں