نعیم الحق آہوں سسکیوں میں سپرد خاک

Spread the love
نعیم الحق کی نماز جنازہ مسجد عائشہ ڈیفنس میں بعد نماز عصر ادا کی گئی

کراچی(نامہ نگار)وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی سیاسی امور نعیم الحق کو نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد سپرد خاک کردیا گیا۔ہفتہ کے روز نجی اسپتال میں دوران علاج وفات پانے والے نعیم الحق وزیراعظم کے دیرینہ ساتھی، سیاسی اور فکری ہمراہی تھے۔ان کی نماز جنازہ مسجد عائشہ ڈیفنس میں بعد نماز عصر ادا کی گئی، جس میں وفاقی وزراء ، وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار، گورنر سندھ عمران اسماعیل، گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور سمیت دیگر سیاسی رہنماوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ نعیم الحق کی نماز جنازہ معروف عالم دین مولانا تنویر الحق تھانوی نے پڑھائی اور انہیں گزری قبرستان میں سپرد خاک کیا گیا۔

وفاقی وزراء ، وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار، گورنر سندھ عمران اسماعیل سمیت دیگر سیاسی رہنماؤں کی بڑی تعداد میں شرکت

ہمارا فیس بک پیج ملاحظہ پسند کرنے کے لیے یہاں کلک کریں

وزیراعظم عمران خان، صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی اور دیگر سیاسی جماعتوں کے رہنماوں نے نعیم الحق کی وفات پر گہرے افسوس، دکھ اور غم کا اظہار کیا۔نعیم الحق کو 2018ئ میں بلڈ کینسر کی تشخیص ہوا تھا، جس کے بعد سے ان کا علاج جاری تھا اور وہ ساتھ ہی سیاسی سرگرمیوں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہے تھے۔جولائی 2018ئ میں پی ٹی آئی کی انتخابی کامیابی اور بعد ازاں حکومت سازی میں نعیم الحق کی مشاورت نے اہم کردار ادا کیا، اس لیے وزیراعظم عمران خان نے انہیں سیاسی امور کا معاون خصوصی مقرر کر رکھا تھا۔

جنوبی افریقہ 12سال بعد دورہ پاکستان کیلئے تیار

نماز جنازہ معروف عالم دین مولانا تنویر الحق تھانوی نے پڑھائی ، گزری قبرستان میں سپرد خاک کیا گیا

قریبی دوست کے انتقال پر وزیراعظم نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ انہیں اپنے دیرینہ دوست نعیم الحق کے انتقال پر دھچکا لگا ہے، وہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی ) کے 10 بانی ارکان میں سے ایک اور سب سے وفادار تھے، پی ٹی آئی کی 23 سالہ جدو جہد کی ہر مشکل میں میرے ساتھ کھڑے رہے اور ہر طرح پارٹی کی مدد کی۔

نعیم الحق 11جولائی 1949ئ کو کراچی میں پیدا ہوئے، انہوں نے جامعہ کراچی سے انگلش لٹریچر میں ماسٹرز، ایس ایم لا کالج سے ایل ایل بی کیا تھا۔نعیم الحق پیشے کے اعتبار سے بینکر اور کاروباری شخصیت تھے اور وہ نیویارک کے یو این پلازہ میں نیشنل بینک کی شاخ قائم کرنے والی ٹیم کا حصہ رہے

انہوں نے 1980 میں بطور مرچنٹ بینکر لندن میں رہائش اختیار کی۔نعیم الحق نے 1984 میں ائیرمارشل اصغرخان کی تحریک استقلال جوائن کی اور کراچی آگئے، انہوں نے 1988 میں تحریک استقلال کے ٹکٹ پر اورنگی ٹاون سے الیکشن بھی لڑا تاہم بعدازاں 1996 میں عمران خان کے ساتھ پاکستان تحریک انصاف کی بنیاد رکھی۔2012 میں نعیم الحق تحریک انصاف چیئرمین کے چیف ا?ف اسٹاف بن کر اسلام آباد منتقل ہوگئے، نعیم الحق پارٹی کی کور کمیٹی کا حصہ اور انفارمیشن سیکریٹری بھی رہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں