90

عمر عبداللہ کی حراست جج کا سماعت سے انکار

Spread the love

نئی دہلی(صرف اردو ڈاٹ کام، عمر عبداللہ غیرقانونی حراست)مقبوضہ کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ کی غیر قانونی حراست کی درخواست پر سماعت کرنے والے تین رکنی بنچ میں سے ایک جج نے معذرت کرتے ہوئے خود کو سماعت سے علیحدہ کرلیا ہے۔میڈیا رپورٹ کے مطابق بھارتی سپریم کورٹ میں سابق وزیر اعلی عمر عبداللہ پر پبلک سیفٹی ایکٹ(پی ایس اے)کے نفاذ کے خلاف درخواست کی سماعت کرنے والے بنچ سے ایک جج کے علیحدہ ہوجانے کے بعد اب درخواست کی سماعت آج(جمعرات کو) ہوگی۔مقبوضہ کشمیر کے سابق وزیر اعلی عمر عبداللہ کی بہن نے اپنے بھائی پر لاگو کیے گئے پی ایس اے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا ہوا ہے، درخواست کے متن کے مطابق عمرعبداللہ کی پی ایس اے کے تحت گرفتاری غیر قانونی ہے۔واضح رہے کہ بھارتی حکومت نے 5 فروری کو عمر عبداللہ اور محبوبہ مفتی پر پبلک سیفٹی ایکٹ لاگو کیا تھا، دونوں کشمیری رہنما مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے کے بعد سے زیر حراست ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

بھارتی سپریم کورٹ کے تین رکنیبنچ سے ایک جج کے علیحدہ ہوجانے کے بعد اب درخواست کی سماعت آج ہوگی

سنگیتا اپنے کیریئر میں اداکاری، پروڈکشن اور ہدایت کاری بھی کرچکی ہیں

یاد رہے کہ بھارتی حکومت نے 5 اگست 2019 کو کشمیر پر قبضہ کرنے کی غرض سے اس کی خصوصی حیثیت کو ختم کر کے اس کو اپنا حصہ بنانے کے لیے خصوصی آرٹیکل ختم کرکے وہاں پر کرفیو نافذ کر رکھا ہے اورجنت نظیر وادی کشمیر میں انسانی حقوق کی سخت خلاف ورزیاں جاری ہیں۔ اس وقت کشمیر میں 8 لاکھ سے زائد فوج تعینات ہے اور مقبوضہ کشمیر پر عرصہ حیات تنگ کر دیا گیا ہے۔ وادی میں انٹرنیٹ موبائل اور فون سمیت دیگر رابطہ کے تمام ذرائع بند کر دیے گئے ہیں یاد رہے کہ اس وقت وادی کشمیر دنیا کی سب سے بڑی جیل میں تبدیل ہو چکی ہے۔ اور ساری کشمیری قیادت کو گرفتار کیا جا چکا ہے عمر عبداللہ کمشیر میں وزیر اعلی رہ چکے ہیں

عمر عبداللہ غیرقانونی حراست

عمر عبداللہ غیرقانونی حراست

اپنا تبصرہ بھیجیں

Captcha loading...