93

پرفارمنس ملک کے نام کرتا ہوں، نسیم شاہ

Spread the love

کوشش تھی کہ پانچ وکٹیں حاصل کروں لیکن انجری کی وجہ سے ایسا کرنا ممکن نہیں ہوسکا، پیسر
راولپنڈی(سپورٹس رپورٹر) راولپنڈی ٹیسٹ کے ہیرو نسیم شاہ کا کہنا ہے کہ بنگلادیش کیخلاف اپنی شاندار پرفامنس کو پاکستان کے نام کرتا ہوں۔نسیم شاہ کا کہنا ہے کہ میرے والد کو کرکٹ کے بارے میں کچھ معلوم نہیں لیکن میں نے جب انھیں بتایا کہ میں نے 3 وکٹیں لی ہیں تو وہ بہت خوش ہوئے، اﷲ پاک کا شکر ہے کہ پاکستان میں کرکٹ بحال ہوئی۔انہوں نے کہا کہ بنگلادیش کیخلاف اپنی شاندار پرفامنس کو پاکستان کے نام کرتا ہوں، کوشش تھی کہ پانچ وکٹیں حاصل کروں لیکن انجری کی وجہ سے ایسا کرنا ممکن نہیں ہوسکا، وقار یونس سے کافی سیکھ رہا ہوں، آگے بھی سیکھتا رہوں گا، انہوں نے کہا کہ میں محنت پر یقین رکھتا ہوں۔

اس سال حج کتنے میں ہوگا حکومت نے بڑا فیصلہ کر لیا

یاد رہے کہ نسیم شاہ نے اپنے 8ویں اوور کی چوتھی گیند پر نجم الحسن شانتو کوآوٹ کیا پھر اگلی ہی گیند پر نائٹ واچ مین تیج الاسلام کو بھی ایل بی ڈبلیو کردیا۔ اپنے اوور کی آخری گیند پر محمد محمود اللہ کو سلپ میں آؤٹ کردیا، اور اس طرح انہوں نے ہیٹ ٹرک کرتے ہوئے ٹیسٹ کرکٹ میں دنیا کے کم عمر ترین فاسٹ باؤلر کا اعزاز حاصل کر لیا۔

یہ بھی ملاحظہ کریں

نسیم شاہ نے جب یہ اعزاز حاصل کیا تو ان کی عمر 16 سال 359 دن تھی، اس سے قبل کم عمری میں ہیٹ کرنے کا اعزاز بنگلہ دیش کے اسپن باؤلر الوک کپالی کے پاس تھا، جنہوں نے سال 2003 میں 19 برس کی عمر میں پاکستان کے خلاف پشاور میں ہیٹ ٹرک کی تھی۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ پاکستان میں ٹیلنٹ کی کمی نہیں ہے مگر اصل مسئلہ ہمارے کرکٹ بورڈ اور اس کے کرتا دھرتاوں کا ہے۔ تجزیہ نگاروں نے ہمیشہ اپنے تجزیات میں یہ قرار دیا ہے کہ جیسے ہی کوئی کھلاڑی تھوڑا سا اچھا کھیل پیش کرتا ہے تو اس کو سر پر اٹھا لیا جاتا ہے اور جب کسی میچ میں اس کی پرفارمنس خراب ہوتی ہے تو اُس کو فوری طور پر باہر نکال دیا جاتا ہے۔یہ

پرفارمنس ملک نسیم شاہ

پرفارمنس ملک نسیم شاہ

اپنا تبصرہ بھیجیں

Captcha loading...