ذاتی طور پرسنجیدہ اداکاری اچھی لگتی ہے, بشریٰ انصاری

Spread the love

ذاتی طور پرسنجیدہ

لاہور ( فلم رپورٹر) پاکستان کی سینئر اداکارہ بشریٰ انصاری نے کہاکہ میں چند ایک ڈرامہ سیریلز میں سنجیدہ نوعیت کے کردار بھی ادا کئے ہیں اور ذاتی طور پر مجھے سنجیدہ اداکاری اچھی لگتی ہے کیونکہ اس میں اداکاری کرنے کا مارجن ہوتا ہے اور میں سمجھتی ہوں کہ فنکاروہی ہوتا ہے جو ہر قسم کے کردار ادا کرنے میں ماہر ہو کہاکہ ہمارے ہاں ایک روایت ہے کہ جس پر جس کردار کی چھاپ لگ جاتی ہے اور پھر اس کو اسی کردار میں کام ملنا شروع ہوجاتا ہے ۔انہوںنے کہاکہ آپ کسی بھی ڈرامہ سیریل کی ہیروئن کو دیکھ لیں تو اس کو کبھی منفی کردار میں ڈرامہ سیریل میں نہیں لیا جائے ۔

یہ بھی پڑھیں:ماحولیاتی تبدیلی پر بنی انتہائی مختصر دورانیے کی فلم جاری کردی گئی


اور نہ ہی کسی ہیر و کو منفی کردارمیں لیا جاتا ہے۔بشریٰ انصاری نے کہا ہے کہ مجھے شہرت میرے مزاحیہ کرداروںکی وجہ سے ملی مگر حقیقت یہ ہے کہ مجھے جتنا جنون سنجیدہ کام کرنے میں وہ میں بیان نہیں کرسکتی ہوں ، میری شوخ اورچنچل طبیعت کے باعث ڈرامہ ڈائریکٹرز نے مجھے صرف انہی کرداروں میں کاسٹ کرنا شروع کردیا جس میں وہ مجھے فٹ سمجھتے تھے اور پھر آہستہ آہستہ مجھے ہنسی مزاح اور مزاحیہ کرداروںکا حصہ بننا پڑگیا اور یہ سلسلہ طویل ہوتا چلا گیا ۔ ایک ،دو ہیرو ایسے ہیں جنہوں نے منفی کردار ادا کئے اورخاص طور پر شہود علوی اور احسن خان نے اپنی ہیر و شپ دائو پر لگا کر منفی کردار ادا کئے وہ قابل تحسین ہیں کیونکہ یہ کسی بھی فنکار کا اپنا کریئر دائو پر لگانے والی بات ہوتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ احسن خان اور شہود علوی کے منفی کرداروں کو عوامی سطح پر بہت پسند کیا گیالیکن یہ دونوں حقیقی معنوں میں ہیرو ہیں ۔ ذاتی طور پر مجھے سنجیدہ اداکاری اچھی لگتی ہے

ذاتی طور پرسنجیدہ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں