بھوک بیماری عمران خان 142

گندم بحران: ذمہ داروں کو سامنے لانے کا فیصلہ

Spread the love

وزیر اعظم گندم بحران

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)وزیراعظم عمران خان نے ملک میں گندم کے بحران پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ذمہ داروں کو منظر عام پر لانے کا فیصلہ کیا ہے۔وزیراعظم عمران خان کے نوٹس اور فاقی وزراء کی یقین دہانیوں کے باوجود ملک میں گزشتہ کئی روز سے جاری گندم کا بحران حل نہ ہوسکا ۔ اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے آٹے کے بحران پر قابو پانے کے لیے 3 لاکھ ٹن گندم درآمد کرنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ وفاقی وزیر برائے بحری امور علی زیدی نے کہاتھا کہ پابندی کے باوجود اکتوبر 2019 میں گندم کی برآمد پر کسی نہ کسی کو تو اس کا ذمے دار ٹھہرانا ہوگا۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے آٹے کے بحران پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے غفلت برتنے والوں کو منظر عام پر لانے کا فیصلہ کیا ہے۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے آٹے کے بحران کی وجوہات کا پتہ لگانے کے لیے تحقیقاتی کمیٹی قائم کر دی ہے اور وزراء کو بحران کی وجوہات جاننے کا ٹاسک سونپ دیا ہے۔ذرائع کے مطابق وفاقی وزراء تحقیقات کریں گے کہ گندم بحران کیسے پیدا ہوا؟ ملک میں کتنی گندم کی ضرورت تھی؟ اسٹاک میں کتنی گندم تھی؟وزیراعظم کو تحقیقاتی رپورٹ سوئٹزرلینڈ سے واپسی پر رپورٹ دی جائے گی۔

واضح رہے کہ ملک میں مصنوعی طور پر گندم بحران کا بحران پیدا کیا گیا ہے جس کے باعث لوگوں کو آٹا نہیں مل رہا اس ساری صورتحال کو الیکٹرانک میڈیا اور سوشل میڈیا پر شور مچنے کے بعد حکومت نے دیکھنا شروع کیا جس پر پنجاب کے وزیر اعلی سردار عثمان بزدار نے نوٹس لیتے ہوئے کارروائی کا حکم دیا اس کے بعد بھی کوئی فرق نہ پڑا جس پر گندم بحران کے آوازے وزری اعظم ہاوس میں سنائی دینے لگے جس پر وزیر اعظم نے بھی نوٹس لیا اور تمام اداروں کو اپنا فعال کردار ادا کرنے کی ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا کہ اس سلسلہ میں کسی قسم کی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی انہوں نے یہ بھی کہا کہ گندم بحران کے ذمہ داروں کو فوری طور پر منظر عام پر لایا جائے۔ جس کے بعد ادارے حرکت میں آ چکے ہیں۔

وزیر اعظم گندم بحران

اپنا تبصرہ بھیجیں