کشمیریوں پر ظلم میں مودی سرکار ملوث ،ہیومن رائٹس واچ

Spread the love

نیویارک/سرینگر/جموں(مانیٹرنگ ڈیسک)کشمیر ہیومن رائٹس واچ

ہیومن رائٹس واچ کی سالانہ رپورٹ میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کی مذمت کرتے ہوئے کہاگیا ہے کہ سابق وزرائے اعلیٰ، سیاسی رہنماؤں ، کارکنوں ، وکلا اور صحافیوں کو بغیر الزام کے نظربند کیا گیا جبکہ مقبوضہ کشمیر میں انٹرنیٹ ،موبائل فون سروس معطل کردی گئی۔ فوجی محاصرے کے باعث کشمیری بدستور مشکلات کا شکار ہیں، کشمیریوں نے انٹرنیٹ کی جزوی بحالی کے بھارتی دعوے کو سختی سے مستردکردیا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ہیومن رائٹس واچ کی رپورٹ میں کہا گیا کہ بھارتی حکومت نے کشمیر میں مکمل شٹ ڈاؤن کے ذریعے تباہی کو چھپانے کی کوشش کی، بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں سخت محاصرہ کرتے ہوئے اضافی فوجی تعینات کیے۔ہیومن رائٹس واچ کی سالانہ رپورٹ میں کہا گیا کہ اگست 2019 میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی حکومت کے یک طرفہ اقدامات کی وجہ سے کشمیریوں کو بے حد تکلیف پہنچی اور ان کے حقوق پامال ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں:مقبوضہ کشمیر,لاک ڈاون, کمیونی کمیشن بلیک آوٹ پر ہیومن رائٹس واچ بھی پھٹ پڑا

دوسری جانبمقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجی محاصرہ مسلسل166 ویں روز بھی جاری ہے،دفعہ144 کے تحت شہریوں کی نقل وحرکت پر پابندی برقرار ، جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ کے اونتی پورہ سے ایک نوجوان کو گرفتار کرلیا گیا۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق پولیس نے بتایاہے کہ گرفتار نوجوان جہانگیر احمد پرے کا تعلق حزب المجاہدین سے ہے۔ نوجوان ضلع ترال کے علاقے گلشن پورہ کا رہائشی ہے۔ ادھر مقبوضہ جموں و کشمیر انتظامیہ نے معطل پولیس افسر دیویندر سنگھ سے شیر کشمیر میڈل واپس لے لیا ہے۔

انتظامیہ نے اس بارے میں احکامات جاری کر دیے ہیں۔مقبوضہ کشمیر میں برف باری کے نتیجے میں سری نگر جموں شاہراہ گزشتہ روزبھی بند رہی،خراب موسمی حالات سے وادی کا بیرون دنیا سے زمینی رابطہ معطل ہے ۔مقبوضہ کشمیرمیں جموں خطے کے ضلع ڈوڈ ہ میں بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں شہید ہونیوالے نوجوان ہارون عباس وانی کی نماز جنازہ میں قابض انتظامیہ کی پابندیوں کے باوجود ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ لوگوں نے اس موقع پر آزاد ی اور پاکستان کے حق میں اور بھارت کے خلاف فلک شگاف نعرے لگائے ۔ مقررین نے جنازے کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے شہید کے اہلخانہ کے بھر پور اظہار یکجہتی کیا۔

انہوں نے تحریک آزادی کو تمام تر رکاوٹوں کے باوجود جاری رکھنے کے کشمیریوں کے عزم کو دہراتے ہوئے بھارت پر زور دیا کہ وہ ہٹ دھرمی ترک کر کے تنازعہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قرار دادوں اور کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق حل کرے۔ علاوہ ازیںبھارتی وزارت داخلہ نے جموں و کشمیر کے معطل ڈی ایس پی دیویندر سنگھ کو این آئی اے کے حوالے کردیا۔ساوتھ ایشین وائر کے مطابق دیویندر سنگھ پر مختلف طرح کے سنگین الزامات عائد کیے گئے ہیں۔

ذرائع کے مطابق حزب المجاہدین کے عسکریت پسند نوید بابو اور الطاف بابو 2 دنوں تک سرینگر کے بادامی باغ میں دیویندر سنگھ کے گھر میں ٹھہرے تھے۔ذرائع کے مطابق پولیس افسر کی کار میں دو سرگرم شدت پسند موجود تھے اور ان کے پاس پانچ گرینیڈ بھی تھے جبکہ آفیسر کے گھر پر چھاپے کے دوران دو اے کے 47رائفلز بھی برآمد ہوئی۔

کشمیر ہیومن رائٹس واچ


Notice: Undefined variable: aria_req in /backup/wwwsirfu/public_html/wp-content/themes/upress/comments.php on line 83

Notice: Undefined variable: aria_req in /backup/wwwsirfu/public_html/wp-content/themes/upress/comments.php on line 89

اپنا تبصرہ بھیجیں