132

اقوام متحدہ اور یورپی یونین کا فلسطینیوں کے قتل عام کی تحقیقات کا مطالبہ

Spread the love

غزہ کی پٹی میں السوارکہ خاندان کو اجتماعی طورپر شہید کیے جانے کا واقعہ ناقابل قبول ہے،یواین سیکرٹری جنرل

نیویارک (مانیٹرنگ ڈیسک)اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انٹونیو گوٹیرس اور یورپی یونین نے غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج کی وحشیانہ بمباری میں ایک نہتے فلسطینی خاندان کے اجتماع قتل عام کی شدید مذمت کرتے ہوئے اس واقعہ کی فوری تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوٹیرس اور یورپی یونین کی طر ف سے جاری بیان میں کہا گیا کہ ہے غزہ کی پٹی میں السوارکہ خاندان کو اجتماعی طورپر شہید کیے جانے کا واقعہ ناقابل قبول ہے۔بیانات میں کہا گیا کہ غزہ کی پٹی میں عام شہریوں پر اسرائیلی فوج کے جنگی طیاروں کی وحشیانہ بمباری قابل مذمت اقدامات ہیں۔

یورپی یونین کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ غزہ میں السوارکہ خاندان کو اجتماعی طور پر شہید کرنے کا واقعہ ناقابل قبول ہے۔ یورپی یونین اور اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے غزہ میں السوارکہ خاندان کو شہید کرنے کے واقعے کی فوری اور شفاف تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

خیال رہے کہ 13 نومبر 2019 کو غزہ کی پٹی پر اسرائیلی فوج نے رات کی تاریکی میں بمباری کرکے ایک ہی خاندان کے 8 افراد کو شہید اور 12 کو زخمی کردیا تھا۔ شہدا میں دو بچے اور خواتین بھی شامل تھیں۔ اس وحشیانہ بمباری کے نتیجے میں مکان کا نام و نشان مٹ گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں