مقبوضہ کشمیر میں 59 ویں روز بھی کرفیو اور سخت پابندیاں

Spread the love

تعلیمی ادارے سنسان ہیں لوگ گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے

زندگی بچانے والی ادویات اور دیگر اشیائے ضروریہ کی شدید قلت

سری نگر(کے پی آئی)آرٹیکل 370 اے ختم کرنے کے بعد مقبوضہ کشمیر میں بدھ کے روز 59ویں روز بھی کرفیو جاری ہے، موبائل فون، انٹرنیٹ سروس بند اور ٹی وی نشریات معطل ہیں۔دکانیں، کاروبار، تعلیمی ادارے سنسان ہیں اور لوگ گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے ہیں اور مقبوضہ وادی کا رابطہ دنیا سے تاحال منقطع ہے۔جنت نظیر وادی انسانی بحران کامنظر پیش کر نے لگی ہے اور وادی میں خوراک اور ادویات کی شدید قلت ہے۔ دوسری جانب کشمیریوں کی تحریک آزادی زور پکڑنے لگی جبکہ برطانوی میڈیا بھارتی فورسز کے خلاف کشمیری نوجوانوں کے پہرہ دینے کی ویڈیو بھی منظر عام پر لے آیا، مواصلاتی نظام کی معطلی، مسلسل کرفیو اور سخت پابندیوں کے باعث لوگوں کو بچوں کے لیے دودھ، زندگی بچانے والی ادویات اور دیگر اشیائے ضروریہ کی شدید قلت کا سامنا ہے۔

Leave a Reply