73

بھارت، سڑک پر رفع حاجت کرنے پر نچلی ذات سے تعلق رکھنے والے 2 بچے قتل

Spread the love

عالمی دہشت گرد مودی کو بل گیٹس کی طرف سے رفع حاجت کی سہولیات پر ایوارڈ دیا گیا ہے مگر ہندوستان کے 75 فیصد عوام کو ابھی تک رفع حاجت جیسی بنیادی سہولت دستیاب نہیں ہے

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)بھارت میں سڑک پر رفع حاجت کرنے پر 2 بچوں کو تشدد کرکے ہلاک کردیا گیا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق یہ واقعہ بھارتی ریاست مدھیہ پردیش کے ضلع شیوپوری کے ایک گائوں میں پیش آیا جہاں پر نچلی ذات سے تعلق رکھنے والے دو بچوں کو سڑک پر رفع حاجت کرنے کے جرم میں تشدد کرکے ہلاک کردیا گیا۔مقامی پولیس افسر کے مطابق مرنے والے دونوں بچے بھائی تھے اور ان کی عمریں 10 اور 12 سال تھیں جب کہ بچوں کے قتل کے الزام میں دو بھائیوں کو گرفتار کرلیا ہے اور واقعے سے متعلق مزید تحقیقات جاری ہیں۔

انتظامیہ کی جانب سے بھارتی قانون کے مطابق متاثرہ خاندان کو بچوں کی آخری رسومات کی ادائیگی کے لیے40 ہزار روپے دیئے گئے ہیں جب کہ معاوضے کے طور پر گھر والوں کو 4 لاکھ روپے بھی دیئے جائیں گے۔اطلاعات کے مطابق دونوں بچوں کا تعلق ہندوں کی نچلی ذات سمجھی جانے والی ‘دلت قوم’ سے تھا، بھارت کی حالیہ مردم شماری کے مطابق دلت کل آبادی کا 16 فیصد ہیں اور ان کا شمار ملک کے پسماندہ ترین گروہ میں ہوتا ہے۔

واقعے پر ردعمل دیتے ہوئے اتر پردیش کی سابقہ دلت وزیراعلی مایاوتی نے مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ دلتوں کو ہمیشہ ظلم و جبر کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔ان کا کہنا ہے کہ حکومت بتائے کہ دلتوں اور دیگر نچلی ذات کی آبادی والے گاں میں اب تک بیت الخلاکی سہولت کیوں دستیاب نہیں۔ واضح رہے کہ انسانی حقوق کے کارکنوں کی طرف سے شدید احتجاج کے باوجود بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو نیویارک میں بل اینڈ میلنڈا گیٹس فائونڈیشن کی جانب سے ایوارڈ سے نوازا گیا تھا، انہیں یہ ایوارڈ بھارت میں حفظان صحت کی صورتحال بہتر بنانے اور ملک میں لاکھوں بیت الخلا تعمیر کرنے پر دیا گیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں