117

رونالڈو کو بچپن میں فری برگرکھلانے والی 3لڑکیوں کی تلاش

Spread the love

اسلام آباد(سپورٹس رپورٹر)فٹ بالر کرسٹیانو رونالڈو کا کہنا ہے کہ جب وہ 11سال کے تھے تو انہوں نے اور ان کے ساتھیوں نے میک ڈونلڈ سے مفت برگر مانگا تھا۔گزشتہ دِنوں فٹ بالر کرسٹیانو رونالڈو نے اپنے انٹرویو میں ایک انکشاف کیا، جس میں انہوں نے کہا کہ جب میں 11 سال کا تھا تو میں نے اور میرے ساتھیوں نے میک ڈونلڈ جا کر مفت برگر کی بھیک مانگی تھی،

وہ میرا انتہائی مشکل وقت تھا کیونکہ میں ہر تین ماہ کے بعد اپنے اہلِ خانہ سے ملاقات کرتا تھا، انہوں نے کہا کہ اتنی کم عمر میں ماں باپ سے دور رہنا آسان نہیں ہوتا۔انہوں نے مفت برگر دینے والی لڑکی کے بارے میں بتایا کہ ایک بار رات کے 10:30یا 11بجے کے قریب مجھے اور میرے ساتھیوں کو شدید بھوک لگ رہی تھی، ہمارے پاس کھانے کو کچھ نہیں اور نہ ہی ہمارے پاس پیسے تھے کہ ہم باہر جا کر کچھ کھائیں۔

انہوں نے بتایا کہ جس اسٹیڈیم میں ہم مقیم تھے اس کے برابر میں ایک میک ڈونلڈ تھا، شدید بھوک نے ہمیں اسٹیڈیم سے باہر جانے پر مجبور کیا اور میں اپنے ساتھیوں کے ہمراہ باہر نِکلا، جس کے بعد ہم میک ڈونلڈ کے پیچھے والے دروازے کے باہر جا کر کھڑے ہوگئے اور ہم نے آواز لگائی کہ کیا کوئی ہمیں مفت میں برگردے گا؟

ان کے مطابق جب انہوں نے یہ آواز لگائی تو میک ڈونلڈ کے اندر سے ایڈنا نامی لڑکی اور اس کے علاوہ دیگر دو لڑکیاں آئیں اور انہوں نے ہمیں فری میں برگر دیے، اِس کے بعد ہمیں جب بھی بھوک لگتی تھی ہم دروازے کے باہر سے آواز لگاتے تھے او ر وہ لڑکیاں ہمیں مفت کے برگر دے دیتی تھیں۔

رونالڈو نے کہا کہ لزبن کا وہ میک ڈونلڈ اب ختم ہوگیا ہے اور میں نے ان لڑکیوں کو تلاش کرنے کی بہت کوشش کی، وہاں کے رہائشیوں سے بھی پوچھا لیکن مجھے ان کے بارے میں کچھ بھی معلوم نہیں ہوسکا۔رونالڈو نے کہا کہ اگر وہ تینوں لڑکیاں میرا یہ انٹرویو دیکھ رہی ہیں یا ان کا کوئی رشتے دار یہ انٹرویو دیکھ رہا ہے تو مجھ سے رابطہ کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

Captcha loading...