140

جج ویڈیو سکینڈل: ناصر جنجوعہ اور شریک ملزم خرم یوسف عدالت سے گرفتار

Spread the love

ایف آئی اے کی رپورٹ کے مطابق ناصر بٹ نے ویڈیو ریکارڈ کرائی، میرے موکل کا ویڈیو سے کوئی تعلق نہیں،وکیل صفائی

رپورٹ میں کہیں بھی ناصر جنجوعہ کا نام لیا گیا،جج کا وکیل صفائی سے استفسار

اسلام آباد(کورٹ رپورٹر)جج ارشد ملک ویڈیو سکینڈل کیس کے مرکزی ملزم ناصر جنجوعہ اور شریک ملزم خرم یوسف کی ضمانت خارج کر دی گئی، ایف آئی اے نے دونوں کو احاطہ عدالت سے گرفتار کرلیا۔

پیر کو جج ویڈیو سکینڈل میں مرکزی ملزم ناصر جنجوعہ اور خرم یوسف عدالت کے روبرو پیش ہوئے۔ سپریم کورٹ میں جمع کرائی گئی تحقیقاتی رپورٹ عدالت میں پیش کی گئی۔ وکیل صفائی نے کہا کہ ایف آئی اے کی رپورٹ کے مطابق ناصر بٹ نے ویڈیو ریکارڈ کرائی، رپورٹ کے مطابق ناصر بٹ نے ہی ویڈیو ریکارڈنگ کا منصوبہ بنایا، میرے موکل کا ویڈیو سے کوئی تعلق نہیں۔

جج نے استفسار کیا کیا اس رپورٹ میں کہیں بھی ناصر جنجوعہ کا نام لیا گیا، جس پر وکیل صفائی نے کہا کہ رپورٹ میں کہیں ایسا نہیں لکھا جس سے میرے موکل پر کوئی الزام لگایا گیا ہو، میرے موکل کے خلاف کوئی ثبوت پیش نہیں کئے گئے سوائے اس کے کہ درخواست گزار نے انہیں نامزد کیا ہے۔ عدالت نے مرکزی ملزم ناصر جنجوعہ اور شریک ملزم خرم یوسف کی درخواست ضمانت خارج کر دی ،ایف آئی اے نے دونوں کو احاطہ عدالت سے گرفتار کر لیا.

اپنا تبصرہ بھیجیں