امریکی پابندیاں حسن روحانی 159

ایرانی صدر حسن روحانی کا جوہری معاہدے کی شرائط سے مزید دستبرداری کا انتباہ

Spread the love

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک)ایرانی صدر حسن روحانی نے اپنے یورپی اتحادیوں کو ایک بارپھر خبردار کیا ہے کہ امریکی پابندیوں میں سختی کے نتیجے میں تہران جوہری معاہدے کی شرائط سے مزید دست بردار ہوگا۔ عرب ٹی وی کے مطابق ایرانی صدر کی طرف سے اپنے یورپی اتحادیوں کے لیے یہ دھمکی آمیز بیان امریکا کی طرف سے عاید کردہ پابندیوں کے اثرات کا نتیجہ ہے۔

ایرانی صدر نے اپنے فرانسیسی ہم منصب عمانوایل میکرون کے ساتھ ٹیلیفون پر بات چیت کے دوران جوہری معاہدے سے دست برداری کا عندیہ دیا۔ انہوں نے کہا کہ خبردار کیا کہ اگر یورپ نے ایران جو امریکی پابندیوں کے اثرات سے نکالنے کے لیے اپنے وعدے پورے نہ کیے تو تہران جوہری معاہدے کی مزید شرائط پرعمل درآمد روک دے گا۔ خیال رہے کہ گذشتہ برس مئی میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے یک طرفہ طور پرایران کیساتھ طے پائے معاہدے سے علیحدگی اختیار کرلی تھی۔ اس کے بعد امریکا اور ایران کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہوا۔ امریکا نے ایران پر سابقہ پابندیاں بحال کردیں۔

امریکی اعلان کے بعد یورپ اور ایران کے درمیان بھی جوہری معاہدے کے حوالے سے تنازعات پیدا ہوئے اور دو طرفہ تعلقات متاثر ہوئے تھے۔ یورپی ممالک کی طرف سے ایران کے ساتھ طے پائے جوہری معاہدے کو برقرار رکھنے کے ساتھ تہران کو معاشی پابندیوں سے بچانے کے لیے عملی امداد فراہم کی یقین دہانی کرائی تھی مگر ایران یورپی اتحادیوں پر وعدہ خلافی کا الزام عاید کرتا ہے۔ اس وقت فرانسیسی صدر عمانوایل میکرون امریکا اور ایران کے درمیان جاری کشیدگی میں کمی کی کوشش کررہے ہیں۔

گذشتہ ہفتے انہوں نے پیرس میں منعقدہ گروپ 7 کے اجلاس کے موقع پرایرانی اور امریکی صدور کے درمیان ملاقات کی امید ظاہر کی تھی۔حسن روحانی نے امریکی صدر سے ملاقات کے امکان کو رد کردیا ہے۔ ان کا کہنا ہتھاکہ ایران پر پابندیوں کے خاتمے سے قبل امریکیوں سے بات چیت نہیں کی جاسکتی۔
روحانی انتباہ

اپنا تبصرہ بھیجیں