11 اگست کے واقعات ایک نظر میں

Spread the love

واقعات

1950ء پاکستان آئی ایم ایف اورعالمی بینک کا رکن بنا

1952ء – حسین بن طلال اردن کے بادشاہ بن گئے۔

1955ء – چودھری محمد علی پاکستان کے وزیر اعظم بنے۔

1973ء برازیل کا بوئنگ 707پیرس کے نزدیک گرکر تباہ ہو گیا 123افراد ہلاک ہوئے

1987ء اقوام متحدہ نے عالمی یوم آبادی منانے کا آغاز کیا

1995ء سرب فوجوں نے بوسنیا اور ہرزیگویناکے آٹھ ہزار سے زائد مسلمان شہریوں کو قتل کر دیا

1995ء امریکا اور ویت نام کے مابین مکمل سفارتی تعلقات بحال ہو گئے

2003ء اٹھارہ ماہ کے تعطل کے بعد لاہور دہلی بس سروس کادوبارہ آغاز ہوا

2004ء کے ٹوکی تسخیرکے پچاس سال مکمل ہونے پر تقریبات کا آغاز

ولادت

1550ء میر محمد المعروف میاں میر پیر لاہوری ایک مسلم صوفی جو لاہور (موجودہ پاکستان) کے علاقے دھرم پورہ میں مقیم رہے۔ شیخ میر محمدالمعروف میاں میر صاحب کی 1550ء بمطابق 957ھ سندھ کے شہر سیوستان میں پیدائش ہوئی آپ کے والد محترم قاضی سائیں دتہ فاروقی تمام سندھ میں نہایت معزز و ممتاز بزرگ شمار کیے جاتے تھے۔ قاضی سائیں دتہ حضرت عمر فاروق کی اولاد سے تھے۔ آپ کی والدہ ایک صاحب علم و عمل خاتون تھیں۔ آپ نے انہیں سلسلہ قادریہ کے سلوک سے روشناس کرایا اور تعلیم دی اس کے بعد آپ قادری سلسلے کے ایک نامور بزرگ جناب شیخ سیوستانی کے مرید ہو گئے۔ آپ ایک طویل عرصے تک جناب شیخ کی خدمت میں حاضر رہے۔ جب آپ کی عمر پچیس برس کی ہوئی تو آپ جناب شیخ کی اجازت سے لاہور آ گئے۔

1858ء – کرسچیناجک مین ایک ہالینڈی اماہر فعلیات جنھوں نے طب و فعلیات کا نوبل انعام 1929 میں جیتا تھا۔

1926ء ارون کلگ لیتھوینیا میں پیدا ہونے والے ایک برطانوئی کیمیاءدان اور طبیعیاتی کیمیاءدان تھے۔ انھیں 1982 کا نوبل انعام بھی دیا گیا۔

1943ء – جنرل (ر) پرویز مشرف پاکستان کے دسویں صدر تھے۔ مشرف نے 12 اکتوبر 1999ء کو بطور رئیس عسکریہ ملک میں فوجی قانون نافذ کرنے کے بعد وزیر اعظم نواز شریف کو جبراً معزول کر دیا اور پھر 20 جون 2001ء کو ایک صدارتی استصوابِ رائے کے ذریعے صدر کے عہدے پر فائز ہو گئے۔ جس سے قبل وہ ملک کا چیف ایگزیکٹو (chief executive) کہلاتا تھا۔ مشرف نے 18 اگست 2008ء کو قوم سے اپنے خطاب کے دوران میں اپنے استعفا کا اعلان کیا۔ انہوں نے متواتر آئین کی کئی خلاف ورزیاں کیں اور علی الاعلان اس کو تسلیم بھی کیا۔ پرویز مشرف نے کنٹرول لائن پر باڑ لگوائی جس کے نتیجے میں 5 اگست 2019 کو مقبوضہ کشمیر کو ہندوستان میں ضم کر لیا۔ بات بات پر مکا لہرانے اور ’’میں کسی سے ڈرتا ورتا نہیں‘‘ کمانڈو ہوں وغیرہ کی گردان کرتے نہ تھکنے والے ’’محب وطن‘‘ پر جب آئین توڑنے اور دیگر غیر قانونی اقدامات پر مقدمات درج ہوئے تو عدالتی کارروائی کے دوران علاج کے بہانے دبئی گئے اور دوبارہ واپس نہیں آئے جب ان کی عدالت میں پیشی کا وقت آتا ہے تو وہ ہسپتال داخل ہونے کا ڈرامہ کرتا ہے۔ یہ بات بھی دلچسپی سے خالی نہیں کہ مشرف کی بیرونِ ملک روانگی کو عدالت اور حکومت ایک دوسرے پر ڈالتی رہی، عدالت نے کہا کہ اگر حکومت چاہے تو اس کو سفری دستاویز ضبط کر کے روک لے اسی طرح حکومت کا موقف تھا کہ عدالت مناسب سمجھے تو باہر نہ جانے دے۔ وہ عدالت کو واپسی کی یقین دہانی کروا کر گئے اور ایک دلیر کمانڈو پھر وطن نہیں لوٹا۔

1955ء عالمگیر کا شمار پاکستان میں پاپ موسیقی کے بانیوں میں ہوتا ہے۔ اگرچہ ان کا انداز مشہور پاکستانی فلمی گلوکار احمد رشدی سے مشابہ قرار دیا جاتا تھا لیکن انہوں نے موسیقی کے میدان میں اپنی مخصوص پہچان بنائی۔ عالمگیر نے 1970ء کی دہائی کے آغاز میں پاکستان ٹیلی ویژن کے پروگرام ہم ہی ہم سے بطور گٹاریسٹ آغاز کیا۔

1965ء – وائلا ڈیوس، امریکی اداکارہ

1974ء – حدیقہ کیانی ایک پاکستانی گلوکار، گیت نگار اور انسانیت پسند ہے۔ جو کئی ملکی و عالمی اعزازات حاصل کر چکی ہے، کیانی نے دنیا بھر میں گلوکاری ہے، کیانی رائل البرٹ ہال اور کینیڈی سینٹر میں بھی گا چکی ہے۔

1980ء تہمینہ افضل امریکی میں مقیم ایک پاکستانی نژاد ماڈل، اداکارہ اور گلوکارہ ہے۔ وہ کھیل کے میدان میں بھی شہرت رکھتی ہیں۔ حالانکہ تہمینہ کی رشتے داریاں غیرواضح ہیں، مگر وہ بچوں کی ماں ہے۔ وہ پاکستان کے بارے میں دنیا کے تاثرکومثبت انداز میں بدلنا چاہتی ہیں۔

1992ء انعم امین پاکستان کی خاتون کرکٹ کھلاڑی ہے۔ وہ ایک روزہ اور ٹوئنٹی20 بین الاقوامی کے میچوں میں پاکستان خواتین کرکٹ ٹیم کی نمائندگی کرتی ہیں۔

وفات

480 قبل مسیح – لیونائداس اول، اسپارٹا کا اجیڈ بادشاہ

1002ء محمد بن ابی عامرکے آباواجداد کا تعلق یمن سے تھا اور اس کا جدا مجد عبدالمالک المعافری طارق بن زیاد کی فوج میں سپاہی تھا جو یہاں اندلس میں جزیرہ الخضرہ کے قریب ایک قصبہ ”طرش“ میں آکر آباد ہو گیا۔محمد بن ابی عامر اسی کی آٹھویں نسل میں یہاں طرش ہی میں938ءمیں پیدا ہوا۔ابتدائی تعلیم اس نے طرش ہی میں حاصل کی مگر مزید تعلیم حاصل کرنے کے لیے وہ قرطبہ آگیا۔ دوران میں تعلیم ہی اسے بڑا آدمی بننے کا شوق پیدا ہوا اور خود کو حاجب السلطنت ( یعنی وزیر اعظم) سمجھنے لگا، ہر وقت اسی منصوبہ بندی میں لگا رہتا وہ وزیر اعظم بن کر ملکی معاملات کو کیسے سدھارے گا۔ اس کے سب دوست اسے شیخ چلی سمجھ کرمذاق اڑاتے مگر وہ کسی کو خاطر میں نہ لاتا۔

1880ء ماسٹر رام چندر ہندوستان کے ریاضی دان، دہلی کالج میں سائنس کے استاد اور صحافی تھے۔1945ء میں ایک اخبار فوائد الناظرین اور 1847ء میں ایک علمی اور ادبی ماہنامہ محب ہند جاری کیا۔ ان کی دو کتابوں کی شہرت انگلستان تک پہنچی اور ایک کتاب کے لیے برطانوی ایسٹ انڈیا کمپنی کی کورٹ آف ڈائریکٹرز نے انہیں ایک خلعت پنج پارچہ اور دو ہزار روپیہ نقد عطا کیا۔ رام چندر تعلیمِ نسواں کے بڑے حامی تھے۔ وہ لڑکیوں کی تعلیم کو محدود رکھنا نہیں چاہتے تھے بلکہ ان کی دلی خواہش تھی کہ خانہ داری، علم الصحت اور دوسرے مضامین بھی پڑھیں اور ان کا نصاب لڑکوں سے مختلف ہونا چاہیے۔ وہ گونگوں اور بہروں کی تعلیم کے بھی موید تھے۔

1905ء رشید احمد گنگوہی دیوبندی مسلم عالم تھے۔

یہ بھی پڑھیں

1913ء سر آدم جی پیر بھائی ممبئی بھارت کے کپڑے کے تاجر، انسانیت پسند اور داؤدی بوہرہ جماعت سے تعلق رکھتے تھے۔ 13 اگست 1845ء کو گجرات میں کاٹھیا وار کے قصبے دھوراجی میں انتہائی غریب والدین قدیر یا قادر بھائی اور سکینہ بانو بھائی کے ہاں پیدا ہوئے۔ تیرہ سال کی عمر میں ممبئی کی سڑکوں پر ماچس کی ڈبیاں فروخت کرنی شروع کیں۔ لیکن جلد ہی سیٹھ لکشمن جی اور اور ایک انگریز لیفٹین نے ان کی مدد کی، جلد ہی یہ ہندوستان کی بہت بڑی کاٹن مل کے مالک اور امیر ترین افراد میں شمار ہونے لگے۔ ان کی کاٹن مل میں ایک وقت میں پندرہ ہزار لوگ کام کر رہے تھے۔ برطانوی فوجیوں کی وردیاں بھی تیار کر کے دیں۔ کئی کارخانے کھولے، مالدار ہونے پر فلاحی کام شروع کیے، کئی اسپتال قائم کیے، جامعہ علی گڑھ میں کثیر چندہ دیا۔ 11 اگست 1910ء کو وفات پائی۔

1972ء میکس تھیلر ایک جنوبی آفریقی نژاد امریکی معالج و سائنس دان تھے جنھوں نے 1951 کا نوبل انعام وصول کیا تھا۔ انھوں نے زرد بخار کے خلاف ایک ویکسین تیار کی۔ وہ آفریقا میں پیدا ہونے والے پہلے نوبل انعام یافتہ شخصیت تھے۔

1988ء – این ریمسی، امریکی اداکارہ

2014ء – رابن ولیمز، امریکی مزاحیہ اداکار

تعطیلات و تہوار

چاڈ کا یوم آزادی

پہاڑوں کا دن


Notice: Undefined variable: aria_req in /backup/wwwsirfu/public_html/wp-content/themes/upress/comments.php on line 83

Notice: Undefined variable: aria_req in /backup/wwwsirfu/public_html/wp-content/themes/upress/comments.php on line 89

Leave a Reply