224

ماری پٹرولیم نے مالی سال 2019 میں شاندارمالیاتی نتائج حاصل کر لئیے

Spread the love

اسلام آباد(مہتاب پیر زادہ)ماری پٹرولیم کمپنی لمیٹڈکے بورڈ آف

ڈائریکٹرزکااجلاس کمپنی ہیڈکوارٹرزمیں ہواجس میں مالی سال2018-19 کے

سالانہ حسابات کاجائزہ لیاگیا۔اس موقع پرلیفٹیننٹ جنرل (ریٹائرڈ)اشفاق ندیم احمد

،مینیجنگ ڈائریکٹروسی ای او ،ماری نے بورڈ کوبتایاکہ 30 جون،2019 کوختم

ہونے والے مالی سال کے دوران کمپنی نے شاندارکارکردگی کامظاہرہ کرتے

ہوئے بہترین مالیاتی نتائج حاصل کیے۔اس حوالے سے کمپنی کے مجموعی منافع

میں اضافے کے اعدادوشمارگزشتہ سال15.4 ارب روپے کے مقابلے میں24.3

ارب روپے کی تاریخی حد تک پہنچے ۔ مجموعی سیل،دیگرآمدنی اورمالیاتی فوائد

کی مد میںبہتری اوراضافے نے کمپنی کے منافع کو 58%تک بڑھایا۔ فی

شیئرآمدن 200 روپے سے تجاوز کرکے 200.59 روپے کی تاریخی سطح تک

پہنچ گئی ،جوکہ گزشتہ سال 126.77 روپے تھی۔بورڈ نے حتمی کیش

ڈیویڈنڈ20% (2 روپے فی شیئر) تجویزکیا،جو مالی سال 2018-19 میں کل

ڈیویڈنڈکو60% (6 روپے فی شیئر) تک لے جائے گا۔اس کے علاوہ،بورڈ نے

آئندہ سالانہ اجالاس عام میں شیئرہولڈزکی منظوری کیلئے 10 فیصد بونس

شیئرتجویزکیا۔مینیجنگ ڈائریکٹرنے کہاکہ ہم نے حال ہی میں ختم ہونے مالی سال

کے دوران بہترین نتائج کا مظاہرہ کیا۔اہم بات یہ ہے کہ،شعبہ ای اینڈ پی کودرپیش

عالمی اورمقامی چیلنجوں سے مقابلہ کرتے ہوئے ماری کی بہترکارکردگی کے

تسلسل کایہ پانچواں سال ہے۔یہ مستحکم ترقی ہماری بہترین حکمت عملی

اوروسائل کے بہتر استعمال کانتیجہ ہے تاکہ دستیاب مواقعوں سے زیادہ سے زیادہ

فائدہ اٹھایاجاسکے۔ ہمیں اپنے منصوبوں پرعملدرآمد کے حوالے سے اپنی

صلاحیتوں پر مکمل اعتماد ہے۔سال کے دوران ،ہم نے سب سے بڑے اوراہم ایچ

آرایل فیزX- ڈویلپمنٹ پراجیکٹ کاآغازکیا۔منصوبے میں 19 اضافی ڈویلپمنٹ

کنووٗں کی کھدائی شامل ہے جس نے ادارے کے اخراجات کوبڑھایا جبکہ

2023تک بہتری کی امید ہے۔ منصوبے کے تحت آئندہ پانچ سالوں میں کمپنی

کواربوں روپے کی بچت کا امکان ہے۔سب سے اہم بات یہ ہے کہ اس کے نتیجے

میں کھاد کے شعبے کو گیس کی متواترفراہمی میں مدد ملے گی تاکہ ملک میں فوڈ

سکیورٹی کے حوالے سے بہتری لائی جاسکے ۔انہوں نے کہا کہ ہم غیرضروری

اخراجات میں کمی لانے اوروسائل کے بہتراستعمال کیلئے کوششیں کررہے ہیں

تاکہ آپریٹنگ اخراجات کو کل فروخت سے 10% کم سطح پر رکھتے ہوئے ملک

میں سب سے کم لاگت پیدواری صلاحیت کے حامل ادارہ امتیازحاصل کیاجاسکتے

۔ سال کے دوران،کمپنی نے 4 ایکسپلوریٹری اور20 اپریزل/ ڈویلپمنٹ کنویں

کھودے جبکہ دوایکسپلویٹری کنویں دیگربلاکس میں میں موجود ہیں جو جوائنٹ

وینچرکی صورت میں ہیں۔ان کاوشوں کے نتیجے میں چارنئے ہائیڈروکاربن وسائل

دریافت ہوئے جبکہ پیداواری صلاحیت میں اضافہ بھی ہوا۔سال کے دوران کمپنی

کی سب سے بڑی کامیابی انتہائی اہم مقامات پر ایکسپلوریشن ہے۔ہائیڈروکاربن

صلاحیت میں اضافے کے علاوہ یہ وہ بلاک ہیں جہاں پر سیکورٹی مسائل کے

باعث آپریٹراپنی سرگرمیاں دہائیوں سے روکے ہوئے تھے۔تاہم، جیسے ہی ہم نے

ان بلاک پر کام کاآغازکیاتوہم نے سکیورٹی ایجنسیز کے تعاون سے ان بلاک پر

تیز ترکام کی حکمت عمل کواپنایا۔تمام ترمسائل اورخطرات کے باوجود ادارے

کاایم ایس یوالفاکریو بنوں میں کام کررہاہے جوزرغون میں کام مکمل کرنے کے

بعد بہت جلد بلاک 28 پرکا م کے لیے جائے گا۔انہوں نے بتایاکہ ان انتہائی اہم

بلاکس پر ایکسپلوریشن کی کامیابی ناصرف ان علاقوں کی ترقی اوربہتری کاسبب

بنے گی بلکہ ملک کے مستقبل کوروشن کرنے میں بھی اہم کرداراداکرے گی۔

سیفٹی پرفارمنس کے حوالے سے بھی ایم پی سی ایل نے نمایاں کارکردگی

کامظاہرہ کیااورسال کے دوران سب سے کم ہیلتھ اینڈ سیفٹی سے متعلق حادثات

ریکارڈ کیے گئے۔اس شعبہ میں یہ کارکردگی بہت بڑے اعزازکی بات ہے،باوجود

اس کے کمپنی میں کام کرنے والوں کی بڑی تعداد موجودہے بہت سے مقامات پر

سرگرمیاں جاری ہیں۔انہوں نے بتایاکہ ایم پی سی ایل کی کارکردگی کو بہت سے

اداروں نے سراہاہے جس کے تحت کمپنی نے مختلف شعبوں میں 14 ایوارڈ ایک

سال میں حاصل کیے ۔انہوں نے کہاکہ انتہائی پیچیدہ ماحولیاتی پس منظراورمسائل

کے باوجود ہم کمپنی کی سطح پر طویل المدتی کامیابیوں کیلئے پرامید ہیں۔ہم

گروتھ کے ان منصوبوں کواپنے آئل اینڈ گیس کے مرکزی کاروبارمیں نافذ کرنے

کیلئے پرعز م ہیںجس میں 9مزید کنووٗں کی کھدائی لوبی ٹی یوگیس پروڈکشن بھی

شامل ہے۔ ہم کمپنی کی مالیاتی ساکھ کومزید بہتراورمستحکم بنانے کے لیے بیرون

ملک عمل پر بھی غورکررہے ہیں تاکہ ماری کوشیئر ہولڈرزکے لیے ایک

مضبوط ادارہ بنایاجاسکے۔منیجنگ ڈائریکٹرنے کمپنی کے تمام ملازمین کے تعاون

اورکاوشوں پر شکریہ اداکیاجن کے باعث یہ کامیابی ممکن ہوتی،انہوں نے ان

کاوشوں کو مزید بہتربنانے پر زوردیا۔لیفٹیننٹ جنرل سیدطارق ندیم گیلانی

(ریٹائرڈ) ،مینجنگ ڈائریکٹرفوجی فائونڈیشن نے بورڈ اجلاس کی صدارت کی جس

میں فوجی فائونڈیشن ، اوجی ڈی سی ای ل کے ممبران کے علاوہ حکومتی

وعوامی نمائندوں نے شرکت کی جنہوںنے ایم پی سی ایل کی کارکردگی کے

حوالے سے مینجنگ ڈائریکٹرکی قابلیتوں پر بھرپوراعتماد کا اظہارکیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں