12 جولائی کے واقعات ایک نظر میں

Spread the love

واقعات

2004ء اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کوفی عنان نے اشرف جہانگیر قاضی کو عراق میں خصوصی نمائندہ نامزد کیا

1993ء جاپان کے جزیرے ہوکائیڈو میں سمندری زلزلے سے 202افراد ہلاک

1990ء بورس یلسن نے سوویت کمیونسٹ پارٹی سے استعفیٰ دے دیا

ولادت

1904ء پیبلو نیرودا ہسپانوئی زبان کے معروف شاعر تھے انکا تعلق چلی سے تھا ان کی ادبی خدمات کے اعتراف کے طور پر انھیں 1971ء میں نوبل ادب انعام سے نوازا گیا۔

1908ء – محمد حنیف ندوی، پاکستانی عالم دین، مفسر قران و فلسفی

1913ء ولس لیمب ایک امریکی طبیعیات دان اورنوبل انعام برائے طبیعیات نوبل انعام جیتنے والے سائنس دان تھے۔ انھوں نے یہ انعام 1955ء میں پولی کارپ کوشچ کے ساتھ مشترکہ طور پر جیتا تھا۔ اہم دریافت یہاں پر ہائیڈروجن ایٹم کے سپیکٹرم تھے۔ ان کا انتقال 15 مئی 2008 کو ہوا۔

1922ء – سیف الدین سیف، پاکستان سے تعلق رکھنے والے اردو کے ممتاز شاعر، نغمہ نگار، مکالمہ و کہانی نگار اور فلمساز تھے۔

1927ء – محمد اکبر خان بگٹی، پاکستانی سیاست دان، سابق سربراہ جمہوری وطن پارٹی

1928ء – الیاس جیمز کورے، امریکی نوبل انعام یاقتہ

1935ء ساتوشی اومورا ایک جاپانی حیاتیاتی کیمیادان ہیں جنھوں نے خوردبینی جانوروں میں موجود کئی فارمکیوٹیکل کی دریافت اوراسکی بڑھوتری کے لیے کام کیا۔ انھیں 2015ء میں نوبل انعام برائے فزیالوجی اور طب ولیم سی . کیمپ بل اورچینی سائنس دان تویویو کے ہمراہ دیا گیا۔

1950ء – محمد الیاس قادری ایک پاکستانی میمن مسلمان عالم دین ہیں جنہوں نے تحریک دعوت اسلامی کی بنیاد رکھی۔ محمد الیاس قادری 26 رمضان 1369ھ بمطابق 1950ء کو پاکستان کے شہر کراچی میں پیدا ہوئے۔آپ کی کنیت “ابوبلال”اور تخلص “عطار” ہے۔ محمد الیاس قادری کو کئی سلاسل طریقت میں بیعت کی اجازت ہے، لیکن صرف سلسلۂ قادریہ میں بیعت کرتے ہیں۔ آپ کے مریدین کی تعداد لاکھوں میں ہے۔ جو اپنے نام کے ساتھ عطاری لکھتے ہیں۔ الیاس قادری کی قائم کردہ تنظیم دعوت اسلامی اس وقت تک 200 سے زائد ممالک میں اپنے قافلے روانہ کر چکی ہے۔ دعوت اسلامی سو سے زائد شعبوں میں تقسیم ہے، اس کے تحت دنیاوی تعلیم کے ادارے دارالمدینہ کی پاکستان و بیرون پاکستان میں قائم شاخوں کی تعداد 40 سے زیادہ ہو چکی ہے۔ اور دینی تعلیم کے ادارے مدرسۃ المدینہ کی 500 سے زیادہ۔ الیاس قادری نے اپنی تحریک کے لیے فیضان سنت کے نام سے ایک ضخیم کتاب مرتب کی ہے، جس کی نئی اشاعت دو جلدوں پر مشتمل ہے اس کتاب کے کئی زبانوں میں ترجمے کیے گئے ہیں۔ اس کے علاوہ بچوں، عورتوں اور نوجوان نسل کے لیے سو سے زیادہ چھوٹے بڑے رسائل لکھ چکے ہیں۔ جن کو دعوت اسلامی کا ادارہ مکتبۃ المدینہ 35 زبانوں میں شائع کر رہا ہے۔ الیاس قادری اپنے سبز عمامہ کی وجہ سے بھی مشہور ہیں۔ جو دعوت اسلامی کی علامت بن چکا ہے۔ الیاس قادری کا دیا ہوا نعرہ مجھے اپنی اور ساری دنیا کے لوگوں کی اصلاح کی کوشش کرنی ہے، ان شاء اللہ عزوجل مدنی مقصد کہلاتا ہے۔ الیاس قادری جدید ذرائع ابلاغ سے تبلیغ اسلام میں یقین رکھتے ہیں، اردو میں اولین اسلامی ویب سائٹ 1996ء میں جاری کی اور اپنے پریس لگائے جہاں سے قرآن مقدس سمیت تنظیمی و اسلامی کتابوں کو شائع کرنا شروع کیا، 2008ء میں اپنا ٹی وی مدنی چینل کے نام سے شروع کیا۔ حال ہی میں فیضان مدینہ کے نام سے اردو و ہندی زبان میں ماہ وار رسالہ شائع کرنا شروع کیا ہے۔ الیاس قادری احتجاج، ہڑتال اور سیاست سے دور رہتے ہیں۔

1972ء – سندر پچائی، بھارتی نژاد امریکی کمپیوٹر سائنس دان اس وقت گوگل کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر ہیں۔ اس سے پہلے وہ گوگل کے پروڈکٹ چیف کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہے تھے۔ لیکن 2015 میں ایلفابیٹ کے قیام کے باعث سندر پچائی کو ترقی دے کر گوگل کی تمام ذمہ داری تفویض کر دی گئی، وہ گوگل کے چیف کی حیثیت سے 2 اکتوبر 2015 سے موجود ہیں۔

1997ء – ملالہ یوسفزئی، پاکستانی نوبل امن انعام یافتہ فعالیت پسند

وفات

1489ء — بہلول لودھی، پشتون لودھی قبیلہ کے سربراہ اور لودھی سلطنت کے بانی

1975ء سید ذوالفقار علی بخاری ادیب، شاعر، صدا کار، ماہر نشریات اور معروف ادیب پطرس بخاری کے چھوٹے بھائی تھے۔ پشاور میں پیدا ہوئے۔ گورنمنٹ کالج پشاور سے میٹرک اور اورینٹل کالج لاہور سے منشی فاضل کیا۔ 1929ء میں ملٹری بورڈ آف اگزامزز(شملہ) میں بطور مترجم ملازم ہوئے۔ 1935ء میں آل انڈیا ریڈیو کے دہلی اسٹیشن سے وابستہ ہو گئے۔ 1938ء میں براڈ کاسٹنگ کی تربیت حاصل کرنے لندن گئے۔ 1940ء میں جوائنٹ براڈ کاسٹنگ کونسل لندن میں کام کیا۔ اسی زمانے میں بی بی سی سے اردو سروس شروع کی۔ لندن سے واپس آکر بمبئی اور بعد ازاں کلکتہ ریڈیو سٹیشن کے ڈائریکٹر مقرر ہوئے۔ ریڈیو پاکستان کے پہلے ڈائریکٹر جنرل تھے۔ پاکستان میں ٹیلی ویژن کا اجراہوا تو تین ماہ اس کے جنرل منیجر رہے۔ شعر و ادب اورسٹیج سے بچپن سے ہی دل چسپی تھی۔ اعلیٰ درجے کے براڈ کاسٹر تھے۔ آواز نہایت پرسوز اور سحرانگیز تھی۔ مرثیہ خوانی شعر خوانی میں یکتا تھے۔ موسیقی سے بھی گہرا شغف تھا۔ ریڈیو اردو ڈرامے نے انہی کی بدولت قبول عام حاصل کی۔ فارسی، اردو، پنجابی اور انگریزی پر یکساں عبور حاصل تھا۔ بنگالی، برمی اور پشتو بھی جانتے تھے۔ دو تصانیف سرگزشت بخاری اور راگ ودیا یادگار چھوڑیں۔

1975ء — لطیفی اشاکی، مصطفٰی کمال اتاترک کی بیوی اور ترکی کی پہلی خاتون اول

2012ء — دارا سنگھ، بھارتی پہلوان، اداکار و سیاست دان

2013ء — پران، بھارتی پدم بھوشن یافتہ اداکار

2016ء — آغا ناصر، پاکستانی ٹی وی براڈ کاسٹر و ہدایت کار

تعطیلات و تہوار

کیریباتی کی برطانیہ سے 1979ء میں آزادی

1975ء ساؤٹوم کی پرتگال سے میں آزادی

1960ء کانگو، چاڈ اور سینٹرل افریقین جمہوریہ نے آزادی کا اعلان کیا

Leave a Reply