وفاقی کابینہ کا سزا یافتہ افراد کے ٹی وی انٹریوز پر تشویش کا اظہار

Spread the love

کسی سزا یافتہ شخص کے انٹرویو کی اجازت نہیں ہونی چاہیئے، وزیراعظم

کابینہ اجلاس میں 12 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا

سابق وزیراعظم نوازشریف اور سابق صدر آصف زرداری کے دور میں اخراجات پر تفصیلی بریفنگ دی گئی

سابق ادوار میں اڑائی گئی دولت کے ایک ایک پیسے کا حساب لیا جائے گا۔عمرا ن خان

اسلام آباد(نمائندہ خصوصی) وزیراعظم عمران خان نے عدالتوں سے سزا یافتہ افراد کے ٹی وی انٹرویوز پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ کسی سزا یافتہ شخص کے انٹرویو کی اجازت نہیں ہونی چاہیئے۔

وفاقی کابینہ کا اجلاس وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ہوا جس میں 12 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا، اجلاس میں سابق وزیراعظم نوازشریف اور سابق صدر آصف زرداری کے دور میں اخراجات پر تفصیلی بریفنگ دی گئی جس میں وزیراعظم عمران خان کو بتایا گیا کہ نوازشریف کے دور میں غیر ملکی دوروں پر 1421.5 ملین جب کہ آصف زرداری کے دور میں 183.5 ملین روپے خرچ ہوئے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق  وفاقی کابینہ نے سزا یافتہ افراد کے ٹی وی انٹریوز پر تشویش کا اظہارکرتے ہوئے ان  انٹرویوز کو نشر کرنے کے خلاف پیمرا سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔وزیراعظم عمران خان  نے کہا کہ کسی سزا یافتہ شخص کے انٹرویو کی اجازت نہیں ہونی چاہیئے، سابق حکمران قومی خزانے سے پرتعیش دورے کرتے رہے، ملک اور قوم کو ان غیر ملکی دوروں سے کیا حاصل ہوا، سابق ادوار میں اڑائی گئی دولت کے ایک ایک پیسے کا حساب لیا جائے گا۔

اجلاس میں خواجہ آصف کے بطور وزیر دفاع دبئی میں ملازمت اور اقامہ کے معاملہ کا نوٹس لیا گیا۔  وفاقی کابینہ نے خواجہ آصف کے اقامہ رکھنے کی تحقیقات کا فیصلہ کرتے ہوئے سوال اٹھایا ہے کہ وہ وزیر دفاع ہو کر غیر ملکی کمپنی میں 10 لاکھ کی ملازمت کیوں کرتے رہے

Please follow and like us:

Leave a Reply