مکی آرتھر نے آسٹریلیا کے بعد پاکستان کرکٹ کو بھی تباہ کردیا، شعیب اختر

Spread the love

مکی آرتھر کی کوچنگ میں بہتری کے بجائے مسائل پیدا ہوئے

حفیظ ریٹائر ہو جائیں، مستقبل کیلئے نوجوان کرکٹرز کو تیار کرنا چاہیے، وقار یونس

لاہور(سپورٹس رپورٹر)سابق ٹیسٹ کرکٹر شعیب اختر نے کہا ہے کہ مکی آرتھر نے آسٹریلیا کے بعد پاکستان کرکٹ کو بھی تباہ کردیا لہٰذا جدید کرکٹ کو سمجھنے والے لوگ سامنے لائے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو ورلڈکپ میں چھوٹی غلطیوں کا بڑا خمیازہ بھگتنا پڑا، ہم 3 سیریز میں شکستوں کے بعد میگا ایونٹ میں شریک ہوئے تھے، اگرچہ انگلینڈ، نیوزی لینڈ اور جنوبی افریقہ جیسی ٹیموں کو ہرایا لیکن مہم کا اختتام مایوس کن رہا،ویسٹ انڈیز کیخلاف بھاری شکست کا بڑا نقصان ہوا۔

انھوں نے کہا کہ ہیڈ کوچ مکی آرتھر جنوبی افریقہ کے بعد آسٹریلوی کرکٹ میں مسائل کا سبب بنے، انھوں نے پاکستان کرکٹ کو بھی تباہ کردیا، بہتری کے بجائے مسائل پیدا ہوئے۔ شعیب اختر نے کہا کہ اگلے ورلڈکپ کی باتیں کرنے کے بجائے ایک ایک سیریز کی تیاری کریں، بیٹنگ میں دلیری اور اسٹرائیک ریٹ بہتر بنانے کی ضرورت ہے، 50 اوورز کی اننگز میں بھی کئی مرحلے ہوتے ہیں، ان کے مطابق کھیلنے کا ہنر سیکھنا پڑتا ہے، معاملات میں درستگی کیلئے جدید کرکٹ کو سمجھنے والے لوگ آگے لائے جائیں۔

قومی کرکٹ ٹیم کے سابق ہیڈ کوچ وقا ریونس نے کہاکہ ہر کرکٹر کو اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے کا حق حاصل ہے لیکن میرے خیال میں محمد حفیظ کو اب ریٹائر ہوجانا چاہیے۔ سابق کھلاڑیوں نے کہا کہ شعیب ملک کی پاکستان کرکٹ کیلئے بڑی خدمات رہی ہیں، انھوں نے طویل کیریئر کے دوران کئی بار یادگار کارکردگی پیش کی۔

بہرحال ہر کرکٹر کو ایک نہ ایک دن کھیل کو خیرباد کہنا پڑتا ہے، آل رائونڈر نے اچھا فیصلہ کیا، وہ ٹی ٹوئنٹی کرکٹ میں مزید 1،2 سال پرفارم کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ محمد حفیظ کی عمر بھی اب 39سال کے قریب ہوچکی، پاکستان کو ورلڈ ٹی ٹوئنٹی 2020 اور آئندہ چیمپئنز ٹرافی کے لیے نوجوان کھلاڑیوں کو تیار کرنا چاہیے، بابر اعظم، امام الحق، حارث سہیل اور شاہین شاہ آفریدی تیزی سے انٹرنیشنل کرکٹ کے تقاضوں کو سمجھتے جا رہے ہیں جو ملکی کرکٹ کیلئے بڑی خوش آئند بات ہے۔

Please follow and like us:

مکی آرتھر نے آسٹریلیا کے بعد پاکستان کرکٹ کو بھی تباہ کردیا، شعیب اختر” ایک تبصرہ

Leave a Reply