قوم مشکل عمران خان 198

شہباز شریف سن لیں،میں موت بھی برداشت کر سکتا ہوں،عمران خان

Spread the love

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) وزیراعظم عمران خان نے کہاہے کہ شہبازشریف کہتے

ہیں اتنی سزا دینا جتنی برداشت کرسکو، تو شہباز شریف سن لیں میں توموت بھی

برداشت کرسکتاہوں،پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار غربت کے خاتمے کا پروگرام

لارہے ہیں،اس میں ہر وزارت کا کوئی نہ کوئی کردار ہوگا،کمزور طبقے کو اوپر

آنے کاموقع دیا جائے گا، 60 فیصد پاکستانی 30 برس کی عمر سے کم

ہیں،نوجوانوں کو ہنر سکھادیں تو نوجوان ہماری طاقت بنیں گے،سرکاری ہسپتالوں

میں صحت و صفائی کا کوئی انتظام نہیں ۔ جمعہ کو یہاں غربت مٹاؤ پروگرام کے

افتتاح کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ

میں پہلی بار غربت کے خاتمے کا پروگرام لارہے ہیں،اس میں ہر وزارت کا کوئی

نہ کوئی کردار ہوگا۔انہو ں نے کہا کہ کمزور طبقے کو اوپر آنے کاموقع دیا جائے

گا، 60 فیصد پاکستانی 30 برس کی عمر سے کم ہیں،نوجوانوں کو ہنر سکھادیں

تو یہ نوجوان ہماری طاقت بنیں گے۔انہوں نے کہا کہ میں 18 برس کا تھا جب

برطانیہ گیا اگر میں وہاں نہ جاتا تو مجھے یہ پتہ ہی نہ چلتا کہ فلاحی ریاست کیا

ہوتی ہے،انسانیت کیا ہوتی ہے۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان واحد

ملک ہے جو اسلام کے نام پر بنا تھا اور اس ملک میں مجھے انسانیت نظر نہیں

آئی۔عمران خان نے کہا کہ جب میں نے اپنی تاریخ پڑھی تو مجھے احساس ہوا کہ

یہ ریاست مدینہ کی خوبیاں تھیں، جو دنیا کی پہلی فلاحی ریاست تھی، ہمیں کہیں

یہ نہیں پڑھایا گیا کہ ریاست مدینہ ماڈل سٹیٹ تھی۔وزیراعظم نے کا کہا کہ ریاست

مدینہ میں غریبوں کا احساس تھا، وسائل نہیں تھے لیکن کمزور طبقے کا احساس

تھا، کچھ لوگ دین کو اپنی سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کرتے ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں