2 جولائی کے واقعات ایک نظر میں

Spread the love

واقعات

1940ء ہندوستانی حریت پسند رہنما سبھاش چندر بوس کو گرفتار کر کے کلکتہ میں قید کیا گیا

1964ء امریکن صدر لینڈن جونسن نے یو ایس ”سول رائٹ“ کے تحت نسلی امتیاز سے ممانعت کے بل پر دستخط کر دیے

1966ء فرانس نے پہلا ایٹمی دھماکا کیا

1968ء حکومت نے پاکستان اسٹیل ملز کارپوریشن قائم کرنے کا فیصلہ کیا

1972ء پاکستان اور بھارت کے درمیان تاریخی شملہ معاہدہ طے پایا

1972ء پہلا وال مارٹ اسٹور امریکی ریاست آرکنساس میں کھلا

1972ء صدر پاکستان ذوالفقار علی بھٹو اور وزیر اعظم بھارت اندرا گاندھی نے شملہ معاہدوں پر دستخط کیے جن کے تحت 971ء کی پاک بھارت جنگ کا باقاعدہ خاتمہ ہو گیا۔

1976ء شمالی اور جنوبی ویتنام کے درمیان دوبارہ اتحادہوا

1979ء امریکا میں پہلی بارخاتون کے اعزاز میں سوزان بی انتھونی ڈالر(سکہ) کا اجراکیا گیا

1990ء حج کے دوران بھگدڑ سے ایک ہزار چار سو چھبیس حجاج کرام شہیدہوگئے

1997ء وفاقی کا بینہ نے ریلوے بورڈ ختم کر دیا

2002ء روسی مسافر طیارہ جرمنی کے جنوبی علاقے میں تباہ70مسافر ہلاک

2002ء اسٹیو فوسٹ دنیا کے گردغبار ے کے ذریعے چکر لگانے ولا پہلا شخص بنا

2004ء آسیان علاقائی تنظیم اے آر ایف نے پاکستان کو چوبیس ویں رکن کی حیثیت سے منتخب کیا

ولادت

1807ء آرتھر کنولی ایک برطانوئی انگریز جاسوس، مہم جو ،سیاح اور لکھاری تھے۔ وہ ایسٹ انڈیا کمپنی کے ایک 6 بنگال لائٹ کیولری کے کیپٹن بھی رہے۔ انھوں نے وسطی ایشیا میں کئی برطانوی مہمات میں حصہ لیا اوروسطی ایشیا پر قبضے کی روسی اور برطانوی کوششوں کو گریٹ گیم کا نام دیا۔

1877ء ہرمن ہیسے 1877 تا 1962 ) ایک جرمن نژاد سوئس ناول نگار تھے۔ انہوں نے 1946ء میں نوبل انعام برائے ادب جیتا تھا۔ ہرمن ہیسے 2 جولائی 1877ء کو جرمن کے علاقے ورٹمبرگ میں پیدا ہوئے، آپ ایک جرمن نژاد سوئس ناول، افسانہ نگار اور شاعر تھے۔ اور بنیادی طور پر اپنی تین شاہکار ناولوں گوتم بدھ کی زندگی پر لکھے ناول سدھارتھ، اسٹیفن وولف اور دی گلاس بیڈ گیم کے لیے جانے جاتے ہیں۔ 1904ء سے 1953ء تک کے دور میں انہوں نے کئی شاہکار تصانیف دیں۔ ہرمن ہیسے نے نظموں بھی لکھیں اور پینٹنگس بھی بنائیں ہے۔ ہرمن ہیسے 9 اگست 1962ء کو 85 سال کی عمر میں انتقال کر گئے ۔ وہ اپنی موت کے بعد یورپ میں نوجوان طبقہ کے درمیان میں انتہائی مقبول رہے۔ انہوں نے 1946ء میں نوبل انعام برائے ادب بھی جیتا تھا۔ ہرمن ہیسے کی تخلیق میں بدھ مت اور مشرقی تصوف کا وسیع تذکرہ ملتا ہے۔

1862ء ولیم ہنری براگ ایک برطانیہ کےکیمیاء دان ،طبیعیات دان اورنوبل انعامجیتنے والے سائنسدان تھے انھوں نے یہ انعام 1915ء میں ولیم لاورنس براگکے ساتھ مشترکہ جیتا جس کی وجہ قلمی ساخت کو ایکس رے کے ذریعے دیکھنے کی انکی مشترکہ کوششیں تھیں۔ ان کا انتقال 12 مارچ 1942 کو ہوا۔

1900ء یہودیت چھوڑ کو اسلام قبول کرنے والے محمد اسد (سابق نام: لیوپولڈ ویز) جولائی 1900ء میں موجودہ یوکرین کے شہر لیویو میں پیدا ہوئے جو اس وقت آسٹرو۔ ہنگرین سلطنت کا حصہ تھا۔ بیسویں صدی میں امت اسلامیہ کے علمی افق کو جن ستاروں نے تابناک کیا ان میں جرمن نو مسلم محمد اسد کو ایک منفرد مقام حاصل ہے۔ اسد کی پیدائش ایک یہودی گھرانے میں ہوئی۔ 23 سال کی عمر میں ایک نو عمر صحافی کی حیثیت سے عرب دنیا میں تین سال گزارے اور اس تاریخی علاقے کے بدلتے ہوئے حالات کی عکاسی کے ذریعے بڑا نام پایا لیکن اس سے بڑا انعام ایمان کی دولت کی بازیافت کی شکل میں اس کی زندگی کا حاصل بن گیا۔ ستمبر 1926ء میں جرمنی کے مشہور خیری برادران میں سے بڑے بھائی عبدالجبار خیری کے دست شفقت پر قبول اسلام کی بیعت کی اور پھر آخری سانس تک اللہ سے وفا کا رشتہ نبھاتے ہوئے اسلامی فکر کی تشکیل اور دعوت میں 66 سال صرف کرکے بالآخر 1992ء میں خالق حقیقی سے جا ملے۔

1929ء پروفیسر حشمت اللہ لودھی پاکستان سے تعلق رکھنے والے نامور ماہر تعلیم، نباتیات کے پروفیسر، مصنف اور معلومات عامہ کے شعبے کی جانی پہچانی شخصیت تھے۔ وہ گورنمنٹ اسلامیہ سائنس کالج، ایس ایم گورنمنٹ سائنس کالج کے پرنسپل اور محکمہ تعلیم سندھ میں ایڈیشنل سیکریٹری بھی رہ چکے ہیں۔ ان کے بیٹے پروفیسر ڈاکٹر سروش لودی این ای ڈی یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کراچی کے موجودہ وائس چانسلر ہیں۔ ان کا انتقال 17 مارچ، 2019ء کو ہوا۔

1940ء صدرالدین ہاشوانی 1960 میں قائم شدہ ہاشو گروپ کے سربراہ ہیں۔ آج ہاشو گروپ کے پاکستان بھر میں مختلف طرح کے کئی صنعتی گروپ ہیں جو سفر و سیاحت، جائیداد، دوا سازی، انفارمیشن ٹیکنالوجی اور تیل اور گیس سے متعلق سرگرمیوں میں مصروف ہیں۔ ہاشو گروپ پاکستان بھر میں میریٹ ہوٹل اور پرل کانٹی نینٹل ہوٹلز کے مالک ہیں۔

1946ء رچرڈ اکزل ایک امریکی سالماتی سائنس دان ہیں جنھوں نے 2004ء کا نوبل انعام حاصل کیا تھا۔

1986ء امریکی اداکارہ و گلوکارہ لنڈسے لوہان

1953ء احمد سہیل، (اردو کے شاعر، ادبی اور ثقافتی نقاد، ادبی ،محقّق اور عمرانیات نظریہ دان، مقالہ نگار، مترجم، ماہر عمرانیات اور ماہر جرمیات)

وفات

چیخوف کا افسانہ پڑھنے کے لیےیہاں کلک کریں

1904ء انتون پاؤلاو چ چیخوف روس کا افسانہ نویس اور ڈراما نگار۔ 1884ء میں انیس برس کی عمر میں چیخوف کے قلمی نام سے مختصر افسانے لکھنے شروع کیے۔ پہلے مجموعے کی کامیابی کے باعث ڈاکٹری ترک کرکے افسانے اور ڈرامے لکھنے شروع کیے۔ وہ 17 جنوری 1860 کو پیدا ہوئے۔

چیخوف کے بارے میں یہ بھی پڑھیں

1961ء ارنسٹ ہیمنگوئے ایک شہرہ آفاق ادیب، صحافی اور ناول نگار ہے۔ ہیمنگوئے 21 جولائی 1899 ء کو شکاگو کے ایک قصبے اوک پارک ایلیونس میں پیدا ہوا۔ اس کا باپ ایک ڈاکٹر تھا جسے بیٹے کی پیدائش کی اتنی خوشی ہوئی کہ اس نے گھر کے باہر بگل بجا کر اس بات کا اعلان کیا۔ ہمینگوئے کی ماں ایک اوپرا سے وابستہ تھی جہاں وہ میوزک کے بارے میں پڑھا کر پیسے کماتی۔ اس کا مذہب کی طرف رجحان زیادہ نہ تھا۔ ماں کا خیال تھا کہ ہمینگوئے بھی میوزک کی طرف راغب ہوگا لیکن ہمنگوئے گھر سے باہر، اپنے والد کے ساتھ شکار اور شمالی مشی گن کی جھلیوں اور جنگلوں میں کیمپ لگانے میں زیادہ دلچسپی رکھتا تھا۔ یوں وہ فطرت سے قریب رہنے کی کوشش کرتا۔ ہیمنگوے نے 2 جولائی 1961 کو خودکشی کی اور وہ 21 جولائی 1899 کو پیدا ہوا۔

ہیمنگوئے کے بارے میںیہ بھی پڑھیں

2007ء ہارون رند پاکستانی پروڈیوسر

تعطیلات و تہوار

UFO خلائی مخلوق کا عالمی دن

Leave a Reply