ڈالر 50پیسے سستا، سونے کی قیمت برقرار، سٹاک مارکیٹ میں قدرے بہتری

Spread the love

کراچی (اکامرس رپورٹر)ملکی کرنسی مارکیٹوں میں غیرملکی کرنسیوں کے

مقابلے میں پاکستانی روپے کی قدرمیں بہتری کاتسلسل جاری، پیرکو بھی اوپن

مارکیٹ میں روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالر کی قیمت خریدمیں50پیسے اور

قیمت فروخت میں1.00روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جبکہ انٹربینک مارکیٹ

تعطیل کے باعث بندرہی۔فاریکس ایسوسی ایشن پاکستان کے جاری کردہ

اعدادوشمار کے مطابق پیرکواوپن کرنسی مارکیٹ میں پاکستانی روپے کے مقابلے

میںامریکی ڈالرکی قیمت خریدمیں50پیسے اور قیمت فروخت میں1.00روپے کی

کمی ریکارڈ کی گئی،جس کے نتیجے میں امریکی ڈالر کی قیمت

خرید159.50روپے سے گھٹ کر159.00روپے اورقیمت

فروخت161.00روپے سے گھٹ کر160.00روپے ہوگئی۔دوسری طرف عالمی

گولڈمارکیٹ میں فی اونس سونے کی قیمت میں18ڈالرکی نمایاں کمی ریکارڈ کی

گئی تاہم مقامی صرافہ مارکیٹوں میںسونے کی قیمتوں میں استحکام رہا۔آل کراچی

صراف اینڈجیولرزایسوسی ایشن کے مطابق پیرکوبین الاقوامی گولڈ مارکیٹ میں

فی اونس سونے کی قیمت میں18ڈالرکی نمایاں کمی ریکارڈ کی گئی،جس کے

پاکستان کو کرنٹ اکاؤنٹ،بجٹ اورتجارتی خسارے کا سامنا ہے،عبدالرزاق داؤد

نتیجے میں فی اونس سونے کی قیمت1410ڈالرسے گھٹ کر1392ڈالرہوگئی۔آل

کراچی صراف اینڈجیولرزایسوسی ایشن کے مطابق کراچی،حیدرآباد، سکھر،

ملتان، فیصل آباد، لاہور، اسلام آباد، راولپنڈی، پشاور اور کوئٹہ کی صرافہ

مارکیٹوں میںفی تولہ اور10گرام سونے کی قیمتوں میں استحکام رہا،جس کے

نتیجے میںفی تولہ سونے کی قیمت78600روپے اور دس گرام سونے کی

قیمت67387روپے پرمستحکم۔پیرکو چاندی کی فی تولہ قیمت اوردس گرام قیمت

میںاستحکام رہا،جس کے نتیجے میںچاندی کی فی تولہ قیمت910.00روپے اوردس

گرام چاندی کی قیمت780.17روپے پرمستحکم رہی۔کستان سٹاک ایکسچینج میں

کاروباری ہفتے کے پہلے روز اتارچڑھائو کے بعد تیزی رہی تاہم کے ایس ای

100 انڈیکس 33900 کی نفسیاتی حدپرمستحکم رہا،تیزی کے نتیجے میںسرمایہ

کاری مالیت میں1ارب66کروڑ روپے سے زائدکااضافہ ،کاروباری حجم گزشتہ

روزکی نسبت77.53فیصدکم جبکہ49.36فیصد حصص کی قیمتوں میںاضافہ

ریکارڈ کیاگیا۔فروخت کے دبائو اور پرافٹ ٹیکنگ کے سبب کاروبار کا آغاز منفی

زون میں ہواٹریڈنگ کے دوران ایک موقع پر کے ایس

ای100انڈیکس33825پوائنٹس کی نچلی سطح پر بھی دیکھا گیاتاہم بعد ازاں

حکومتی مالیاتی اداروں، مقامی بروکریج ہائوسزسمیت دیگرانسٹیٹیوشنز کی جانب

سے فوڈز ، توانائی ، بینک ، سیمنٹ اور دیگرمنافع بخش سیکٹرکی نچلی سطح پر

آئی ہوئی قیمتوں پرخریداری کی گئی ، جس کے نتیجے میں مارکیٹ میں ریکوری

آئی اور مندی کے اثرات زائل ہوگئے،ٹریڈنگ کے دوران ایک موقع پر کے ایس

ای100انڈیکس34068پوائنٹس کی سطح پر بھی دیکھا گیاتاہم سیاسی افق پر

چھائی بے یقینی سبب کے ایس ای100انڈیکس مذکورہ سطح پر برقرارنہ رہ

سکاتاہم اتارچڑھائوکاسلسلہ سارادن جاری رہا۔مارکیٹ کے اختتام کے ایس

ای100انڈیکس94.75پوائنٹس اضافے سے 33996.33پوائنٹس پر بندہوا۔پیرکو

مجموعی طور پر314کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا،جن میں

سے155کمپنیوں کے حصص کے بھاؤمیں اضافہ،140کمپنیوں کے حصص کے

بھاؤ میں کمی جبکہ19کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں استحکام رہا۔سرمایہ

کاری مالیت میں1ارب66کروڑ65لاکھ48ہزار837روپے کااضافہ ریکارڈ کیا

گیا،جس کے نتیجے میں سرمایہ کاری کی مجموعی مالیت بڑھ

کر68کھرب88ارب96کروڑ73لاکھ31ہزار556روپے ہوگئی۔



Leave a Reply