ہیپاٹائٹس پروگرام، ادویات خریدنے کی بجائے فنڈ واپس، انکوائری شروع

Spread the love

پروفیسر جی این طیب سے ہیپاٹائٹس کنٹرول پروگرام کے پراجیکٹ کی ذمہ داریاں واپس، نوٹیفکیشن جاری

جناح ہسپتال میں ہیپاٹائٹس کے مریضوں کو ادویات دینے کی بجائے زائد المیعاد ہو گئیں، ذمہ داروں کے خلاف ایکشن ہو گا- محکمہ صحت

لاہور (ہیلتھ رپورٹر) حکومت پنجاب نے ہیپاٹائٹس کے مریضوں کے لئے مختص اڑھائی ارب کی ادویات خریدنے کی بجائے 60 کروڑ روپے واپس کرنے کا سخت نوٹس لیتے ہوئے پراجیکٹ ڈائریکٹر پروفیسر جی این طیب اور ڈائریکٹر فنانس ریاضت علی شاہ سمیت دیگر ذمہ دار افسران کے خلاف انکوائری کا حکم دے دیا- جبکہ وزیر اعلی پنجاب کی ہدایت کی روشنی میں پروفیسر جی این طیب سے ہیپاٹائٹس کنٹرول پروگرام کے پراجیکٹ ڈائریکٹر کی ذمہ داریاں واپس لے لی گئی ہیں اس ضمن میں محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن نے باقاعدہ نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے

تفصیلات کے مطابق صوبائی حکومت نے صوبہ بھر کے سرکاری ہسپتالوں میں ہیپاٹائٹس کلینک قائم کئے اور اس مرض میں مبتلا افراد کو مفت ادویات دینے کے لئے گذشتہ مالی سال میں اڑھائی ارب روپے مختص کئے تھے مگر پراجیکٹ ڈائریکٹر اور دیگر افسران کی بد انتظامی اور نااہلی سے بروقت ادویات نہ خریدی جا سکیں اور 60 کروڑ روپے حکومت کو واپس کر دیئے دوسری مریض مہنگی ادویات خرید کر استعمال کرتے رہے۔

چند روز قبل اینٹی کرپشن حکام نے جناح ہسپتال لاہور میں ہیپاٹائٹس کی ادویات زائد المیعاد ہونے پر قبضے میں لیکر تحقیقات شروع کر دی ہیں۔ یہ ادویات مریضوں کو کیوں نہیں دی گئیں جبکہ ٹیچنگ ہسپتالوں سمیت دیگر ہسپتالوں میں ہزاروں مریض ہیپاٹائٹس سی کے رجسٹرڈ ہیں

وزیر اعلی پنجاب نے ان شکایات کا نوٹس لیتے ہوئے ہیپاٹائٹس پروگرام کے پراجیکٹ ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر جی این طیب سے اضافی ذمہ داریاں واپس لینے کا حکم دیاجس پر محکمہ صحت نے احکامات جاری کر دیئے ہیں۔ محکمہ صحت کے حکام کا کہنا تھا کہ اس ضمن میں انکوائری جاری ہے جو بھی ذمہ دار ہوا اس کے خلاف محکمانہ کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

Please follow and like us:

Leave a Reply