151

ایمنسٹی سکیم سے استفادہ نہ کرنے والوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑے گا، شبر زیدی

Spread the love

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)چیئرمین ایف بی آر نے اثاثے ظاہر کرنے کی سکیم

کیلئے آن لائن پروفائل سسٹم کا اجرا کرتے ہوئے کہا ہے کہ جو ایمنسٹی سکیم

لیں گے وہ خوش رہیں گے اورجونہیں لیں گے انہیں پریشانی ہوگی۔ وزیر مملکت

ریونیو حماد اظہر کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے چیئرمین ایف بی آر شبر

زیدی نے کہا کہ ڈیٹا کی رسائی عوام کودے دی گئی ہے، ہمارے پاس ٹریولنگ،

یوٹیلٹی بلز، بینک ٹرانزیکشن کا ڈیٹا موجود ہے، شہری شناختی کارڈ کی بنیاد پر

اپنے بارے میں آن لائن معلومات لے سکیں گے، دستیاب ڈیٹا کے علاوہ اضافی

معلومات کی بنیاد پر ٹیکس اسیسمنٹ ہوگی۔انہوں نے کہا کہ ایمنسٹی سکیم کیلئے

اپنے شناختی کارڈ اور موبائل فون نمبر کی بنیاد پر ویب سائٹ پر ڈیٹا انٹری ممکن

ہوگی، کوئی شخص کسی دوسرے کا پروفائل استعمال نہیں کرسکے گا۔شبر زیدی

نے بتایا کہ نادرا کی مدد سے تمام شہریوں کی معاشی سرگرمیوں کا ڈیٹا حاصل

کیا گیا ہے، بینک ٹرانزیکشن اور یوٹیلیٹی بلوں سمیت تمام معلومات ایف بی آر کے

پاس ہیں۔چیئرمین ایف بی آر کا کہنا تھا کہ کسی کی ذاتی معلومات کوئی دوسرا

شخص حاصل نہیں کر سکے گا، آن لائن پروفائل سسٹم میں سیکیورٹی فیچرز کا

بھی خیال رکھا گیا ہے، ایمنسٹی سکیم کے علاوہ بھی شہری ایف بی آر سے آن

لائن ڈیٹابیس کی معلومات لے سکیں گے۔اس موقع پر وزیر مملکت ریونیو حماد

اظہر نے کہا کہ ایف بی آر کے پاس 5 کروڑ 30 لاکھ افراد کا ڈیٹا موجود ہے،

اس ڈیٹا کی بنیاد پر نوٹس بھی جاری کیے جا سکیں گے۔انہوں نے کہا کہ پچھلے

10 سال 2 حکومتیں جھوٹ بولتی رہیں، انہوں نے کوئی ڈیٹا بیس تیارہی نہیں کیا

تھا لیکن موجودہ حکومت نے10ماہ میں ساڑھے پانچ لاکھ افراد کا ڈیٹا تیار کر لیا ۔

دوسری جانبٹیکس چوروں کے خلاف نادرا اور فیڈرل بورڈ آف ریونیو متحرک ہو

گئے، نادرا نے ایف بی آر کو 40 لاکھ افراد کا ڈیٹا فراہم کر دیا۔ ایف بی آر زرائع

کے مطابق نادرا کا ڈیٹا تھری ڈی ہے اور سب کچھ بتائے گا۔ نادرا کی جانب سے

مہیا کئے جانے والے ڈیٹا میں بیرون ملک سفرکرنے والوں اور پوش علاقوں میں

رہائش پذیر افراد کے نام شامل ہیں۔فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے خط کے ذریعے ڈیٹا

طلب کیا تھا جس میں بے نامی جائیدادوں، پلازے اور دکانوں کے مالکان کے نام

پوچھے گئے تھے جو نادرا کے بھجوائے ڈیٹا میں شامل ہیں۔



اپنا تبصرہ بھیجیں