نائٹ کرفیو کی خلاف ورزی نہیں ہوئی،پی سی بی

Spread the love

مانچسٹر(سپورٹس رپورٹر)پاکستان کرکٹ بورڈ نے نائٹ کرفیو کی خلاف ورزی

پر کرکٹرز کے خلاف ایکشن لینے سے انکار کردیا ہے۔پی سی بی نے کھلاڑیوں

کے لیے گیارہ بجے کرفیو ٹائم مقرر کررکھاہے جس کا مطلب یہ ہے کہ تمام

کھلاڑی اس وقت سے پہلے لازمی ہوٹل پہنچ جائیں لیکن وائرل ہونے والی تصویر

اور ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ شعیب ملک کے ساتھ امام الحق، وہاب ریاض

اور ثانیہ مرزا رات گئے شیشہ بار میں موجود ہیں۔بھارت کے خلاف پاکستانی ٹیم

اگر یہ میچ جیت جاتی تو پھر شاید اس ویڈیو پر کوئی بات نہ کرتا لیکن اب اس

ویڈیو پر کھل کر تنقید ہورہی ہے۔ ثانیہ مرزا کاموقف ہے کہ وہ بیٹے کے ساتھ ڈنر

کرنے گئے تھے۔ جس نے بھی یہ ویڈیو بنائی، اس نے بہت غلط کیا۔ ماہرین کے

مطابق ثانیہ مرزا کا یہ ٹوئٹ خود ان کے لیے مشکل پیدا کرسکتا ہے، شیشہ بار

میں بچوں کو لے جانا جرم ہے اور اس پر سزا بھی ہوسکتی ہے۔دوسری جانب پی

سی بی نے کرکٹرز کے خلاف ایکشن لینے سے انکار کرتے ہوئے موقف اختیار

کیا ہے کہ یہ ویڈیو میچ سے 48گھنٹے پہلے کی ہے، بھارت کے خلاف میچ سے

ایک رات پہلے تمام کھلاڑی ہوٹل میں موجود تھے۔ میچ ہارنے پر اس قسم کے

ایشوز کا سامنا آنا کوئی نئی بات نہیں۔ سکینڈل بنانے کے لیے لوگ موقع کی تلاش

میں رہتے ہیں اور پرانی چیزوں اور واقعات کو کرکٹرز کے ساتھ جوڑنے کے

ماہر ہیں۔دوسری جانب ثانیہ مرزا نے اس حوالے سے اپنے ٹوئٹر پر بیان میں

غصے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ویڈیو بلا اجازت بنائی گئی اور اس میں ہماری

نجی زندگی کی بھی پرواہ نہیں کی گئی جب کہ اس موقع پر ہمارا بچہ بھی ساتھ

تھا۔شعیب ملک کی اہلیہ نے دلچسپ تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ میچ ہار جانے کے

بعد بھی کھانا کھانے کی اجازت ہوتی ہے۔انہوں نے ویڈیو بنانے والے کو آئندہ بہتر

مواد تلاش کرنے کا بھی مشورہ دیا۔اس حوالے سے برطانوی ماہرین کا کہنا ہے

کہ برطانیہ میں بچوں کو شیشہ کیفے لے جانا جرم ہے جس پر والدین کو سزا بھی

ہوسکتی ہے۔ماہرین نے کہا کہ شیشہ کلب عوامی جگہ ہے اور عوامی جگہ پر

کسی کی بھی ویڈیو بنائی جاسکتی ہے۔وائرل ویڈیو میں ثانیہ مرزا کے ساتھ ان کے

شوہر شعیب ملک،وہاب ریاض، امام الحق اور دیگر پاکستانی کھلاڑیوںکو دیکھا

گیا۔پاکستان کرکٹ بورڈ نے نائٹ کرفیو کی خلاف ورزی پر کرکٹرز کے خلاف

ایکشن لینے سے انکار کردیا ہے۔میڈیا رپورٹ کے مطابق پی سی بی نے

کھلاڑیوں کیلئے گیارہ بجے کرفیو ٹائم مقرر کررکھاہے جس کا مطلب یہ ہے کہ

تمام کھلاڑی اس وقت سے پہلے لازمی ہوٹل پہنچ جائیں۔پی سی بی نے موقف

اختیار کیا کہ یہ ویڈیو میچ سے 48 گھنٹے پہلے کی ہے، بھارت کے خلاف میچ

سے ایک رات پہلے تمام کھلاڑی ہوٹل میں موجود تھے۔ میچ ہارنے پر اس قسم

کے ایشوز کا سامنا آنا کوئی نئی بات نہیں۔ سکینڈل بنانے کے لیے لوگ موقع کی

تلاش میں رہتے ہیں اور پرانی چیزوں اور واقعات کو کرکٹرز کے ساتھ جوڑنے

کے ماہر ہیں۔



Please follow and like us:

Leave a Reply