16 جون کے واقعات ایک نظر میں

Spread the love

واقعات

1881ء آسٹریا ،ہنگری اور سربیا نے فوجی معاہدے پر دستخط کیے

1903ء مشروب ساز کمپنی پیپسی کولا کا قیام عمل میں آیا

1957ء فرانس نے الجزائر پر حملہ کیا

ولادت

1894ء محمود تيمور مصری ادیب اور افسانہ نگار، انہیں دور جدید کے عربی افسانے کا بابا آدم، مختصر عربی کہانیوں کا پیشوا، عرب کا موپاساں اور عرب کا شیکسپئیر بھی کہا جاتا ہے۔ ان کا انتقال 25 اگست 1973 کو ہوا۔

1897ء جا رج وگ ایک جرمن کیمیاء دان تھے۔ انھوں نے وٹگ ریایکشن میں پھوسفونیم یلائڈز استعمال کر کے الڈیہائڈ اور کیٹون سے الکین بنانے کو طریقہ دریافت کیا جس پر انھیں 1979ء میں نوبل انعام برائے کیمیاء دیا گیا۔ ان کا انتقال 26 اگست 1987 کو ہوا۔

1902ء باربرا مک کلنٹکایک امریکی خاتون سائٹو جینٹکس تھیں جنھوں نے 1983ء کا نوبل انعام حاصل کیا تھا۔ ان کا انتقال 22 نومبر 1990ء کو ہوا۔

1934 ولیم ایف۔ شارپامریکا کے ماہر اقتصادیات ہیں اقتصا دیات میں انکی کام کی اہمیت کو دیکھ کر 1990 میں انھیںمرٹن ملر اور ہیری مارکوٹز کو نوبل میموریل انعام برائے معاشیات مشترکہ طور پر دیا گیا۔

1950ء گورنگ چکربورتی جو اپنے اسٹیج نام متھن چکرورتی، بنگالی تلفظ متھن چکربورتی کے نام سے جانے جاتے ہیں ایک بھارتی فلم اداکار، گلوکار، پروڈیوسر، مصنف، سماجی کارکن، کاروباری، ٹیلی ویژن میزبان اور ایک سابق راجیہ سبھا رکن ہیں۔

1956ء راحیل شریف افواج پاکستان کے 15 ویں سربراہ تھے۔ 29 نومبر 2016ء پاک فوج کی کمان جنرل قمر جاوید باجوہ کو سونپ کر ریٹائرڈ ہوئے۔

1974ء اختر رضا سلیمی پاکستان سے تعلق رکھنے والے اردو اور ہندکو زبان کے شاعر، ناول نگار اور اکادمی ادبیات پاکستان کے جریدہ ادبیات کے مدیر ہیں۔

وفات

1877ء جون فیئرفیکس 19 جولائی 1969 کو اکیلے کشتی رانی کر کے سمندر عبور کرنے والے پہلے شخص بن گئے۔ وہ 1804 میں پیدا ہوئے۔

1901ء سلطان شاہ جہاں بیگم ریاست بھوپال کی دسویں حکمران اور تیسری بیگم بھوپال تھیں۔ مرکزی ہندوستان کی نوابی شاہی ریاست بھوپال کی تقریباً 57 سال تک حکمران رہیں جس میں 32 سال تک عنانِ حکومت اُن کے ہاتھوں میں رہی۔ شاہ جہاں بیگم کے عہدِ حکومت میں ریاست بھوپال ایسٹ انڈیا کمپنی کے دائرہ اقتدار میں تھی جبکہ ریاست کا مکمل انتظام سلطنت اُن کے پاس رہا۔ 1844ء میں اپنے والد نواب جہانگیر محمد خان بہادر کے انتقال کے بعد وہ کم عمری میں ہی ریاست بھوپال کی بیگم قرار پائیں مگر انتظامِ سلطنت اُن کی والدہ نواب سکندر بیگم کو تفویض کر دیا گیا۔ نومبر 1868ء میں نواب سکندر بیگم کے انتقال کے بعد وہ بیگم بھوپال بن گئیں اور تادمِ آخر بحیثیتِ حکمران ریاست بھوپال اِسی عہدے پر فائز رہیں۔وہ 30 جولائی 1838ء کو پیدا ہوئیں۔

2012 ء سعودی عرب کے شہزادہ نائف بن عبدالعزیز السعود

تعطیلات و تہوار

آج دنیا بھر میں والد کا عالمی دن منایا جا رہا ہے

Leave a Reply