216

15 جون کے واقعات ایک نظر میں

Spread the love

واقعات

15 جون کے واقعات

1896ء جاپان میں سونامی سے ستائیس ہزار افراد ہلاک ،نو ہزار زخمی اور تیرہ ہزار گھر تباہ ہوئے

1944ء جنگ عظیم دوم:امریکہ نے اسپین پر حملہ کیا

1966ء جنوبی افریقہ نے ہالینڈ کی مصنوعات کا بائیکاٹ شروع کیا

1977ء اسپین میں اکتالیس سال بعد عام انتخابات ہوئے

1988ء صدر پاکستان جنرل ضیاء الحق نے شریعت آرڈینینس جاری کیا۔

2006ء پاکستان سٹیل ملز کی نجکاری کے عمل کو پاکستان سپریم کورٹ کے نو رکنی بنچ نے کالعدم قرار دے دیا۔

ولادت

1915 تھامس ہکلر ویلر ایک امریکی وائرولوجسٹ تھے جنھوں نے 1954 کا نوبل انعام وصول کیا تھا۔ ان کا انتقال 23 اگست 2008 کو ہوا۔

1916ء – ابو اللیث صدیقی، (پاکستان سے تعلق رکھنے والے ماہرِ لسانیات، محقق، ماہرِ تعلیم، نقاد، جامعہ کراچی کے شعبہ اردو کے سربراہ اور کولمبیا یونیورسٹی کے وزٹنگ پروفیسر تھے۔)

1916ء ہربرٹ اے۔ سائمن امریکا کے ماہر اقتصادیات تھے اقتصا دیات میں انکی کام کی اہمیت کو دیکھ کر 1978میں انھیں نوبل میموریل انعام برائے معاشیات مشترکہ طور پر دیا گیا۔

1917ء جان فین ایک امریکی تجزیاتی کیمیاء دان تھے جو 2002 کے نوبل اانعام برائے کیمیاء وصول کرنے والوں میں شامل تھے۔ انکا کام ماس سپیکٹرمیٹری کے حوالے سے تھا۔ ان کا انتقال 10 دسمبر 2010 کو ہوا۔

1927ء – ابن انشا پاکستانی شاعر و سفرنامہ نگار اور مزاح نگار

انشا جی کے بارے میں یہ بھی پڑھیے

1929ء بالی وڈ کی معروف اداکارہ۔ انیس سو اکتالیس میں ثریا شیخ جمال بارہ برس کی عمر میں فلم ’ تاج محل‘ میں چائلڈ اسٹار کی حیثیت سے پہلی بار فلموں میں آئیں۔ اس کے فوراً بعد انہوں نے فلموں میں گانا بھی شروع کر دیا۔’سوچا تھا کیا، کیا ہو گیا‘۔۔۔’دلِ ناداں تجھے ہوا کیا ہے‘ اور ’یہ عجیب داستاں‘ جیسے گانوں نے انہیں گلوکارہ کی حیثیت سے ملک بھر میں شہرت دی۔ بطور اداکارہ ان کی کامیاب فلموں میں ’انمول گھڑی‘ ۔۔۔’ مرزا غالب‘ اور ’ رستم و سہراب‘ خاص تھیں۔ ثریا کئی برس تک بالی وڈ میں سب سے زیادہ پیسہ کمانے والی اداکارہ رہیں۔ انیس سو تریسٹھ میں رستم و سہراب کے بعد انہوں نے چونتیس سال کی عمر میں ریٹائرمنٹ اختیار کرلی تھی۔ وہ ممبئی میں اپنے بڑے سے فلیٹ میں تنہا رہتی تھی کیونکہ وہ اپنے والدین کی اکلوتی اولاد تھیں انہوں نے شادی نہیں کی اور ان کے تمام رشتہ دار پاکستان چلے گئے تھے۔ آخری ایام میں ان کی دیکھ بھال ان کے پڑوسی کر رہے تھے۔ اسی فلیٹ میں 31 جنوری 2004ء کو ان کا 75 سال کی عمر میں انتقال ہوا۔

1937ء كشن بابو راؤ هزارے المعروف انا ہزارے بھارت کے ایک مشہور انقلابی خیالات کے سماجی کارکن ہیں۔ زیادہ تر لوگ انہیں انا هزارے کے نام سے ہی جانتے ہیں1990ء میں ان کو پدم شری اور 1992ء میں انہیں پدم بھوشن ایوارڈ سے نوازا گیا تھا۔ حق اطلاعات اور بنیادی حقوق کے لیے کام کرنے والوں میں وہ ممتاز مقام رکھتے ہیں۔ انا ہزارے، بدعنوانی کے خلاف جدوجہد کرنے کے لیے مشہور ہیں عوامی لوک پال بل کو منظور کرانے کے لیے انا نے 16 اگست 2011ء سے بھوک ہڑتال شروع کی، جسے عوام سے بے پناہ حمایت ملی اور اس کے نتیجے میں حکومت بھی ان کی مطالبات پر غور کرنے کو راضی ہو گئی۔

1953 شی جن پنگ چین کی کمیونسٹ پارٹی کے جنرل سکریٹری، صدر عوامی جمہوریہ چین اور مرکزی فوجی کمیشن کے چیئرمین ہیں۔ صدر بنتے ہی پہلا بڑا کام ملک بھر میں کرپشن کے خلاف مہم چلا کر کیا چھوٹے بڑے ہزاروں سرکاری افسران کو فارغ کیا گیا۔ شی جنپنگ نے قانون کی حکمرانی پر زور دیا اور ساتھ ہی چینی آئین کے ساتھ جڑے رہنے اور عدلیہ میں زیادہ پیشہ ورانہ مہارت کے فروغ کو ضروری قرار دیا تاکہ چینی خصوصیات کے ساتھ سوشلزم کو پروان چڑھایا جاسکے۔ چین نے بین الاقوامی معاملات میں اپنا جارحانہ کردار ادا کرنا شروع کیا جس میں جنوبی چینی سمندر پر اپنی مکمل حاکمیت قرار دینا جبکہ ہیگ میں ثالثی کی مستقل عدالت میں اس کے خلاف فیصلہ آ چکا ہے۔

1969ء جان شیر خان ایک عالمی نمبر 1 پروفیشنل پاکستانی اسکواش کے کھلاڑی ہیں۔ اپنے کیریئر کے دوران انہوں نے ورلڈ اوپن ریکارڈ آٹھ مرتبہ اور برٹش اوپن چھ مرتبہ جیتا۔ جان شیر خان کی ریٹائرمنٹ کے ساتھ اسکواش کے کھیل میں پاکستان کے تقریباً 50 سالہ تسلط کاخاتمہ ہو گیا۔ جان شیر خان پشاور میں پیدا ہوئے تھے۔ ان کے والد بہادر خان پاکستان ایئر فورس سے وابستہ تھے اور ان کے دو بھائی محب اللہ خان جونیئر اور اطلس خان اسکواش کے کھیل سے وابستہ تھے۔ 1986ء میں جان شیر خان نے پہلی مرتبہ ورلڈ جونیئر اسکواش چیمپئن شپ جیتنے کا اعزاز حاصل کیا۔ 1987ء میں انہوں نے پہلی مرتبہ ورلڈ اوپن اسکواش ٹورنامنٹ اور 1992ء میں پہلی مرتبہ برٹش اوپن اسکواش ٹورنامنٹ جیتنے میں کامیابی حاصل کی۔ جان شیر خان 99 پروفیشنل ٹائٹلز جیتنے کا اعزاز رکھتے ہیں۔ آج کل وہ پارکنسن نامی ایک اعصابی بیماری میں مبتلا ہیں۔

وفات

1971ء ونڈل میریڈتھ سٹینلی ایک امریکی کیمیادان تھا جنھوں نے انزائم، وائرس اور پروٹین کے قلمیں تخلیق اور علیحد گی پر کام کیا اور انھیں 1946ء میں جیمز بی سمر اور جان ہورڈ نورتروپ کے ساتھ کیمسٹری کا نوبل انعام دیا گیا۔ وہ 16 اگست 1904ء کو پیدا ہوئے۔

1991ء ڈبلیو آرتھر لیوس برطانیہ کے ماہر اقتصادیات تھے اقتصا دیات میں انکی کام کی اہمیت کو دیکھ کر 1979 میں انھیں اور جیمز میڈےکو نوبل میموریل انعام برائے معاشیات مشترکہ طور پر دیا گیا۔ وہ 23 جنوری 1915ء کو پیدا ہوئے۔

2013ء کینتھ جیڈس ولسن امریکا کے کے ایک طبیعیات دان تھے، جنھیں کریٹیکل فینومینا جیسے مفروظے کو ایجاد کرنے پر جس کا تعلق مادے کی حالت بدلنے سے تھا پر 1982ء میں انھیں نوبل انعام برائے طبیعیات دیا گیا۔ وہ 8 جون 1939 کو پیدا ہوئے۔

2016ء اسلم فرخی، نامور اردو نقاد، محقق، شاعر، سابق پروفیسر و چیئرمین شعبۂ اردو اور سابق رجسٹرار کراچی یونیورسٹی تھے۔

15 جون کے واقعات

ڈاکٹر وحید قریشی بطور محقق

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں