140

زرداری گرفتاری،قومی اسمبلی میں بھی ہنگامہ آرائی

Spread the love

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)آصف علی زرداری کی گرفتاری کے خلاف پیپلز پارٹی

اور دوسری اپوزیشن جماعتوں کے ارکان نے قومی اسمبلی میں بھی شدید احتجاج

کیا ، اور سپیکر قومی اسمبلی سے سابق صدر کے پروڈیکشن آرڈر جاری کرنے

کا مطالبہ کیا۔ رکن اسمبلی شازیہ مری نے سابق صدر آصف علی زر داری کی

ممکنہ گرفتاری پر شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ آصف علی زرداری کے

خلاف نیب کی انتقامی کارروائیاں جاری ہیں، سپیکر صاحب آصف علی زر داری

کی ایوان میں حاضری یقینی بنائیں ۔۔اس پر سپیکر قومی اسمبلی نے کہاکہ میں آپ

کو موقع دوں گا ،آپ پوائنٹ آف آرڈر لے کر بات کر لیں تاہم شازیہ مری مسلسل

بات جاری رکھی اور ایوان میں شور شرابا کیاگیا ۔شازیہ مری نے کہاکہ سابق

صدر آصف علی زرداری کے گھر کے باہر نیب کے اہلکار موجود ہیں،آصف علی

زرداری کے خلاف نیب کی انتقامی کارروائیاں جاری ہیں۔ انہوںنے کہاکہ آصف

علی زرداری پہلے ہی کئی سال قید کاٹ چکے ہیں،سپیکر نے شازیہ مری کا

مائیک بند کردیا۔مائک بند کرنے پر ایوان میں شورشرابہ کیا گیا احتجاج شروع ہو

گیا ۔ بعد ازاں اجازت ملنے پر شازیہ مری نے کہاکہ جناب اسپیکر آپ اس چیز کو

یقینی بنائیں کہ آصف علی زرداری اس ایوان میں آسکیں۔ انہوںنے کہاکہ اپوزیشن

لیڈر کے بارے میں حکومتی ارکان کی قیاس آرائیاں ختم ہوگئیں،جو کہتے تھے کہ

شہبازشریف نہیں آئیں گے وہ اب دیکھ لیں ۔ شازیہ مری کے جواب میں وزیر

داخلہ بریگیڈیئر (ر )اعجاز شاہ نے کہاکہ نیب جنہوں نے بھی بنائی ،کم از کم ہم

نے نہیں بنائی ۔ انہوںنے کہاکہ نیب نے گرفتاری کیلئے وزارت داخلہ سے نہ مدد

مانگی نہ پوچھا ۔ انہوںنے کہاکہ عدالت نے ضمانت منسوخ کی نیب گرفتار کررہا

ہے اس میں حکومت کا کوئی کردار نہیں۔پیپلز پارٹی کے رکن اسمبلی راجہ پرویز

اشرف نے کہاکہ جناب سپیکر آپ ابھی آصف علی زرداری کے فی الفور

پروڈکشن آرڈر جاری کریں۔ انہوںنے کہاکہ آپ ابھی پروڈکشن آرڈر جاری کریں

اور میں آصف علی زرداری کو یہاں لے کر آؤں۔ انہوںنے کہاکہ جب تک

پروڈکشن آرڈر جاری نہیں ہوتے اس وقت تک اجلاس کی کارروائی روکی جائے۔

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے پیپلز پارٹی کے صدر آصف

علی زرداری اور خواجہ سعد رفیق کے پروڈکشن آرڈر جاری کرنے کا مطالبہ

کرتے ہوئے کہاہے کہ آصف علی زرداری مسلسل نیب کے سامنے پیش ہورہے

تھے ، گرفتاری کی کوئی وجہ نہیں تھی،نیب اور پی ٹی آئی کا چولی دامن کا ساتھ

ہے،چیئرمین نیب کو ایوان میں آنا چاہیے ،مجھ پر لگائے گئے الزامات کا جواب

دیں ،اگرمجھ پر الزامات ثابت ہوگئے تو سیاست سے ہمیشہ کیلئے دستبردار

ہوجائوں گا۔ شہباز شریف نے کہا کہ آصف زرداری نے نیب کے سامنے کوئی

تاخیری حربہ استعمال نہیں کیا، انہوں نے آصف زرداری نے نیب کے ہر سوال کا

جواب دیا۔شہباز شریف نے کہاکہ اس طرح کا قدم اٹھانے کا نیب کا کوئی جواز

نہیں تھا ۔شہباز شریف نے کہا کہ روایات کو برقرار رکھتے ہوئے آج ہی آصف

زرداری کے پرودکشن آرڈر جاری کیے جائیں، خواجہ سعد رفیق کے بھی

پروڈکشن آرڈر جاری کیے جائیں۔ شہباز شریف نے کہاکہ آپ نے میرے اور سعد

رفیق کے پروڈکشن جاری کرکے جمہوری روایات کا مظاہرہ کیا ۔ شہباز شریف

نے کہا کہ آپ آصف علی زرداری کے پروڈکشن آرڈرز جاری کرکے شکریہ کا

موقع دیں ۔قائد حزب اختلاف کے مطالبے پر اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے

کہا کہ مجھے اس معاملے پر قانونی پہلوؤں کا جائزہ لینے کے لیے کچھ وقت دیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں