8 جون کے واقعات ایک نظر

Spread the love

واقعات

68ء – رومن سینٹ نے گالبا کے رومن شہنشاہ ہونے کا اعلان کیا ۔

632ء رسول اکرم حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم 63 سال کی عمر میں مدینۃ المنورہ میں وفات پاگئے۔ اِسی روز حضرت ابوبکر الصدیق کو خلیفۃ الرسول منتخب کر لیا گیا۔

1042ء – ایڈورڈ معترف انگلینڈ کا بادشاہ بن گیا۔ وہ انگلینڈ پر حکومت کرنے والے اینگلو سیکسن خاندان کا آخری بادشاہ تھا۔

1191ء – رچرڈ شیر دل صلیبی جنگ کی خاطر عکہ پہنچ گیا۔

1962ء – پاکستان میں مارشل لا کی جگہ ملک کا دوسرا آئین نافذ کر دیا گیا۔ یہ آئین فوج کی نگرانی میں تیار ہوا تھا اور صدارتی طرز کا تھا۔

1920ء مولانا محمود الحسن طویل عرصے کی جلاء وطنی اور اسیری کے بعد مالٹا سے ہندوستان واپس لوٹے

1965ء امریکی فوجوں کو ویتنام میں لڑائی کا حکم دیا گیا

1941ء جنگ عظیم دوم:اتحادی فوجوں نے شام اور لبنان پر حملہ کیا

1946ء آل انڈیا مسلم لیگ نے کیبنٹ مشن پلان منظور کر لیا

1962ء فیلڈ مارشل محمد ایوب خان نے نئے دستور کے تحت صدر کا عہدہ سنبھالا اس طرح چارسالہ مارشل لا اختتام پزیر ہوا

2008ء چیف جسٹس آف پاکستان افتخار محمد چوہدری کو معزول کیے جانے پر ملک بھر کے وکلا نے لانگ مارچ کا آغاز کیا

ولادت

968ء ایتھلریڈ غیر مستعد ایڈگر پرامن کا بیٹا اور 978ء سے 1013ء اور 1014ء سے 1016ء تک شاہ انگلستان تھا۔ اپنے سوتیلے بھائی ایڈورڈ شہید کے قتل ہونے کے وقت اس کی عمر تقویباً بارہ سال تھی۔ اس کا انتقال 23 اپریل 1016 کو ہوا۔

1921 سہارتو انڈونیشیا کے فوجی راہنما اور دوسرے صدر تھے۔ وہ 1967ء سے 1998ء تک انڈونیشیا کے صدر رہے۔ یہ انڈونیشیا کے جیونیز نسل سے تعلق رکھتے ہیں۔ جیونیز نسل کے لوگوں کی روایت کے مطابق ان کا صرف ایک ہی نام ہوتا ہے مثلا سہارتو۔ بعض اوقات انھیں انڈونیشیا میں اسلامی منظر کے مطابق حاجی سہارتو بھی کہا جاتا ہے۔ سہارتو کا شمار دنیا کے کرپٹ ترین حکمرانوں میں ہوتا ہے۔ اس کی حکومت ختم ہونے کے بعد اس پر کرپشن کے مقدمات درج ہوئے۔ اور اپنے انتقال تک جیل میں رہا اس کے بیٹے نے دوسرے پر گولی چلائی۔ اس کی بیوی اس کی کرپشن میں پوری طرح حصے دار رہی۔ پاکستانی حکمرانوں نے اسی کی طرز پر اپنے دور حکومت میں مختلف کمپنیاں بنائیں اور اس سے خوب پیسہ بنایا۔ سہارتو نے مقدمات سے بچنے کے لیے عدالت میں یہ ظاہر کیا کہ اس کا ذہنی توازن ٹھیک نہیں ہے اور وہ عدالت کے سوالوں کے جوابات نہیں دے سکتا جس کے بعد عدالت کی کارروائی موقوف کر دی گئی۔ 1998 میں شدید عوامی احتجاج کے نتیجے میں سہارتو نے مجبوراً استعفیٰ دیا اور 27 جنوری 2000 کو انتقال کر گیا۔

1930ء رابرٹ اومن ناروے کے ماہر اقتصادیات ہیں اقتصا دیات میں ان کی کام کی اہمیت کو دیکھ کر 2005 میں انھیں اور تھامس شلنگ کو نوبل میموریل انعام برائے معاشیات مشترکہ طور پر دیا گیا۔

1941ء بشیر مرزا المعروف بی ایم پاکستان سے تعلق رکھنے والے نامور مصور تھے۔ بشیر مرزا 8 جون، 1941ء کوامرتسر، برطانوی ہندوستان میں پیدا ہوئے۔ تقسیم ہند کے بعد وہ کراچی میں سکونت پزیر ہوئے۔ 1958ء میں انہوں نے نیشنل کالج آف آرٹس لاہور میں داخلہ لیا اور 1962ء میں اپنی تعلیم مکمل کی۔ 1965ء میں انہوں نے کراچی میں نائجیریا کے سفیر کی اقامت پر اپنی پہلی سولو نمائش کی۔ اسی برس انہوں نے کراچی میں دی گیلری کے نام سے ایک آرٹ گیلری کا آغاز کیا جو نہ صرف کراچی بلکہ پاکستان کی بھی پہلی پرائیویٹ آرٹ گیلری تسلیم کی جاتی ہے۔ 1967ء میں ان کی مشہور ڈرائنگ سیریز پورٹریٹ آف پاکستان کا پورٹ فولیو منظر عام پر آیا۔ 1971ء میں انہوں نے کراچی میں Lonley Girl کے نام سے اپنی پینٹنگز کی نمائش کی۔ اس کے بعد انہوں نے اسی نوعیت کی کئی اور نمائشیں بھی کیں۔ حکومت پاکستان نے بشیر مرزا کی خدمات کے اعتراف کے طور پر انہیں23 مارچ، 1994ء کو صدارتی تمغا برائے حسن کارکردگی عطا کیا۔ اس کے علاوہ 14 اگست، 2006ء کو پاکستان پوسٹ نے پاکستان کے دس عظیم مصوروں پر مبنی 40 روپے مالیت کے پینٹرز آف پاکستان کی ڈاک ٹکٹ شیٹ کا اجرا کیا، اس شیٹ میں بشیر مرزا بھی شامل تھے۔ بشیر مرزا 19 جنوری، 2000ء کو کراچی، پاکستان میں وفات پا گئے[1] اور ڈیفنس سوسائٹی کے قبرستان میں سپردِ خاک ہوئے۔

1947 ارک ایف. وسچاوسایک امریکی ڈیویلوپمنٹل بائیولاجسٹ ہیں جنھوں نے 1995ء کا نوبل انعام حاصل کیا تھا۔

1955ء سر ٹِموتھی جان “ٹِم” برنرز-لی ایک انگریز کمپیوٹر سائنس دان، میساچوسٹس انسٹیٹیوٹ آف ٹیکنالوجی کے پروفیسر اور ورلڈ وائڈ ویب کے موجد ہیں۔

وفات

53 ق م مارکس لیسینیس کراسس، رومی جمہوریہ کا ایک جنرل اور سیاست دان تھا۔ رومی جمہوریہ کو رومی سلطنت میں تبدیل کرنے میں اس کا کلیدی کردار تھا۔ اسے روم کا امیر ترین شخص بھی کہا جاتا ہے۔

1845ء امریکہ کا ساتواں صدر۔ شمالی کیرولائنا میں پیدا ہوا۔ پہلے سالسبری اور ٹینیسی میں وکالت کی۔ 1787ء میں امریکی سینٹ کا رکن منتخب ہوا۔ 1802ء میں ٹینسی کی فوج میں میجر جنرل مقرر ہوا۔ اور رینو اور لینز کے دفاع پر مامور کیا گیا۔ انھی دنوں ایک ریڈ انڈین قبیلے کی بغاوت فرو کرنے سے اس کی مقبولیت میں اضافہ ہوا۔ 1821ء میں فلوریڈا کا گورنر بنا۔ 1823ء میں ایک بار پھر سینٹ کا کارکن منتخب ہوا۔ 1824ء کے صدارتی انتخابات میں ڈیموکریٹک پارٹی کے نمائندے کی حیثیت سے حصہ لیا لیکن ناکام رہا۔ 1828ء کے انتخابات میں کامیاب ہوا۔ اور 1832ء میں دوبارہ صدر منتخب ہوا۔ وہ 15 مارچ 1767 کو پیدا ہوئے۔

1997ء کیرن واٹرہاہن کیمسٹری کی ایک پروفیسر تھی جنہوں نے کیمیاء میں زہریلی دھاتوں کے علوم میں مہارت حاصل کی تھی، کہا جاتا ہے کہ ان کی موت پارہ (مرکری) کی ایک کمپاؤنڈ جسے ڈائی ایتھائیل مرکری (Hg(CH3)2) کی وجہ سے ہوئی تھی۔ ان کی حادثاتی موت 48 سال کی عمر میں ہوئی جب لیبارٹری میں کام کے دوران ڈائی ایتھائیل مرکری (CH3HgCH3) کے چند چھینٹیں دستانوں سے بچ کر ان کے ہاتھوں پر لگے جو وہاں سے جذب ہو کر خون میں شامل ہوئے اور وہاں سے دماغ تک جاپہنچے جہاں تعامل کی وجہ سے نقصان پیدا کرتے رہیں۔ بالآخر ایک طویل علالت کے بعد کیرن کا انتقال ہو گیا۔ وہ 16 اکتوبر 1948 کو پیدا ہوئیں۔

2015ء محمد شریف بٹ ایک پاکستانی ایتھلیٹ(دوڑ لگانے والا کھلاڑی) تھا، جس نے 1948ء، 1952ء اور 1956ء کے گرمائی اولمپکس میں حصہ لیا۔ جبکہ ایشیائی کھیل 1954 میں 200 میٹر کی دوڑ میں طلائی تمغا جیتا۔ وہ 15 جنوری 1926 کو پیدا ہوا۔

تعطیلات و تہوار

1992ء پہلی با ر سمندر کا عالمی دن منایاگیا

Please follow and like us:

Leave a Reply