289

ڈوانے اولیویئر دونوں ٹیموں کے درمیان سب سے بڑا فرق ثابت ہوئے ،پروٹیز ہیڈ کوچ

Spread the love

پروٹیز ہیڈ کوچ اوٹس گبسن نے پاکستان کیخلاف کلین سوئپ کامیابی کو جنوبی افریقی مشن کی تکمیل قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ سیریز میں 24 وکٹیں لینے والے ڈوانے اولیویئر دونوں ٹیموں میں سب سے بڑا فرق ثابت ہوئے حالانکہ ہوم بیٹسمینوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔پاکستان کیخلاف ٹیسٹ سیریز کے خاتمے پر اوٹس گبسن کا کہنا تھا کہ انہوں بالکل ویسا ہی کیا جس کی پلاننگ کی گئی تھی کیونکہ سازگار وکٹوں پر وہ چار فاسٹ بالرز کھلانے کی خواہش رکھتے تھے اور چاروں پروٹیز پیسرز نے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔انہوں نے اعتراف کیا کہ بیٹسمینوں کو جدوجہد کا سامنا کرنا پڑا لیکن انہوں نے بھی موقع ملنے پر رنز اسکور کئے اور دو سنچریوں کی مدد سے کامیابی کا مشن مکمل کرلیا گیا۔ اوٹس گبسن کے مطابق لوگوں کی نگاہ میں جنوبی افریقی وکٹیں کافی خراب تھیں لیکن ان پر بھی ہوم بیٹسمینوں نے دو معیاری سنچریاں بنائیں خاص کر ٹیمبا بفوما سنچری نہ کرنے کے باوجود بہترین بیٹسمین ثابت ہوئے اور ہاشم آملا نے بھی تیسرے ٹیسٹ میں عمدگی سے بیٹنگ کی جو اپنا فرض نہ نبھاتے تو شاید ہوم ٹیم دوسری اننگز میں جلد سمٹ جاتی اور کوئنٹن ڈی کوک کو زبردست سنچری اسکور کرنے کا موقع نہ ملتا۔پروٹیز ہیڈ کوچ کا کہنا تھا کہ انہوں نے اپنے بیٹسمینوں کو سمجھا دیا تھا کہ وہ ایسی وکٹوں پر 500 رنز نہیں بنا سکتے لہٰذا چار فاسٹ بالرز کی موجودگی میں ڈھائی سو سے تین سو کے درمیان اسکور بھی کافی ہوگا کیونکہ انہیں بخوبی علم تھا کہ پیسرز حریفوں کو جلد آؤٹ کر سکتے ہیں جو کہ انہوں نے کیا

اپنا تبصرہ بھیجیں